پاکستان میں کورونا کیسز کی تعداد

sobiaanum نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 16, 2020

  1. sobiaanum

    sobiaanum محفلین

    مراسلے:
    20
    [​IMG]
    پاکستان میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد 53 ہوگئی ہے۔

    معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک ہی دن میں انیس مریضوں میں وائرس کی تشخیص ہوئی جس سے تعداد میں اضافہ ہوگیا ہے۔

    کورونا کے سب سے زیادہ پینتیس کیسز سندھ میں سامنے آئے ہیں جب کہ لاہور میں بھی کورونا وائرس سے متاثرہ پہلا کیس سامنے آگیا ہے۔

    بلوچستان میں چھ ، اسلام آباد میں چار اور گلگت بلتستان کے بھی تین شہریوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔

    پاکستان میں متاثرہ کیسز میں سے دو مریضوں نے بیرون ملک سفر نہیں کیا جب کہ دو مریض صحتیاب ہو چکے ہیں۔

    سندھ میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب تفتان سے پہنچنے والے50مشتبہ مریضوں کے نتائج آگئے ہیں اور ان میں سے 26 افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔ 25مریض کراچی اورایک حیدرآباد میں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سندھ میں کوروناوائرس کے مریضوں کی تعداد76ہوگئی ہے۔

    ڈیرہ غازی کے قرنطینہ میں سات سو انہتر افراد کو رکھا گیا ہے۔ ڈی آئی خان پہنچنے والے اٹھارہ زائرین بھی قرنطینہ میں موجود ہیں جن کے نمونوں کے نتائج آنا باقی ہیں۔

    مشیراطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیر نے کہا کہ صوبے میں چھتیس افراد کے کورونا وائرس کے ٹیسٹ کئے۔ جن میں سے ستائیس کے نتائج نیگیٹو آئے جب کہ نو کا نتیجہ آنا باقی ہے۔

    کراچی میں پولیس اہلکاروں کی چھٹیاں منسوخ کردی گئی ہیں اور ایڈیشنل آئی جی نے پولیس افسران اور اہلکاروں کو بھی کورونا ٹیسٹ کرانے کا حکم دے دیا ہے۔

    پولیس اہلکاروں کو ہدایت دی گئی ہیں کہ ماسک، دستانے اور دیگر حفاظتی آلات استعمال کریں جب کہ شادی ہالز اور عارضی بازاروں پر پابندی یقینی بنائی جائے۔

    https://onlineindus.com/urdu/47524
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  2. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    922
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    53 یا 94 ؟؟؟؟
     
  3. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,922
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    6,400
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Mellow
  5. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    22,181
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    یہ سرکاری ذریعہ تو نہیں ہے غالباً؟
     
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    18,494
    پاکستان میں ۱۸ ویں ترمیم کے بعد صحت صوبائی حکومتوں کی ذمہ داری ہے اسلئے مختلف صوبوں سے آنے والی اطلاعات کو جمع کرکے ڈیٹا اکٹھا کیا جا رہا ہے


    ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 137 ہوگئی
    ویب ڈیسک پير 16 مارچ 2020

    [​IMG]
    کورونا سے متاثر ہونے والے 2 افراد اب تک صحتیاب ہوچکے ہیں، ترجمان حکومت سندھ


    کراچی: خیبر پختون خوااور سندھ میں 15، 15 نئے کیسز کی تصدیق کے بعد ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 137 ہوگئی ہے۔

    خیبر پختون خوا کے وزیر صحت تیمور خان جھگڑا نے اپنے ٹوئٹ میں تصدیق کی ہے کہ تفتان سے ڈیرہ اسماعیل خان آنے والے 19 زائرین میں سے 15 میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔ متاثرین کو ڈی آئی خان میں قرنطینہ کردیا گیا ہے۔

    دوسری جانب سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے صوبے میں مزید 15 کیسز کی تصدیق کردی ہے جس کے بعد سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 103ہوگئی ہے۔ سکھر میں قرنطینہ کیے گئے زائرین میں سے 76 کیس سامنے آئے ہیں۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • غمناک غمناک × 1
  7. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,286
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    :question:
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  8. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,286
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
     
    • زبردست زبردست × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,922
    یہ تو علم نہیں، لیکن نتائج قریب قریب درست ہی معلوم ہو رہے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • متفق متفق × 1
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    18,494
    اب مزید بڑھ گئے ہیں۔

    ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 150 ہوگئی
    ویب ڈیسک پير 16 مارچ 2020
    [​IMG]
    کورونا سے متاثر ہونے والے 2 افراد اب تک صحتیاب ہوچکے ہیں، ترجمان حکومت سندھ

    خیبر پختون خوا اور سندھ میں نئے کیسز کی تصدیق کے بعد ملک بھر میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 150 ہوگئی۔

    خیبر پختون خوا کے وزیر صحت تیمور خان جھگڑا نے اپنے ٹویٹ میں تصدیق کی ہے کہ تفتان سے ڈیرہ اسماعیل خان آنے والے 19 زائرین میں سے 15 میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔ متاثرین کو ڈی آئی خان میں قرنطینہ کردیا گیا ہے۔

    صوبہ سندھ میں کورونا کے مزید کیسز

    سندھ حکومت کے ترجمان مرتضیٰ وہاب نے صوبے میں نئے کیسز کی تصدیق کردی جس کے بعد سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 150 ہوگئی۔ سکھر میں قرنطینہ کیے گئے زائرین میں سے 76 کیس سامنے آئے ہیں۔

    ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ سکھر قرنطینہ میں موجود 76 زائرین میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، کراچی کی لیبارٹریز نےسکھر قرنطینہ میں موجود 24 زائرین کے ٹیسٹ رپورٹس جاری کردیں اور مزید 15 افراد میں کورونا وائرس رپورٹ ہوا ہے، اور مجموعی طور پر سندھ میں کورونا وائرس کے مصدقہ کیسز 103 ہیں، کراچی میں کوروناوائرس سےمتاثرہ 27مریض پہلے ہی رپورٹ ہوچکے ہیں۔

    کورونا سے متعلق وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس

    دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت کرونا کی روک تھام سے متعلق اقدامات کرنے کی غرض سے قائم نیشنل کوارڈینیشن کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں مشیر خزانہ حفیظ شیخ، فردوس عاشق اعوان، معید یوسف، نورالحق قادری اور وزیر داخلہ اعجاز شاہ شریک ہوئے۔

    اجلاس میں کورونا وائرس کی صورتحال اور اس وائرس کی روک تھام کے حوالے سے نیشنل سیکیورٹی کمیٹی کے اجلاس میں کیے گئے فیصلوں کاجائزہ لیا گیا اور فیصلوں کے نتیجے میں اب تک کیے جانے والے اقدامات اوردرپیش چیلنجز کو مدنظر رکھتے ہوئے آئندہ کے لائحہ عمل پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، وزرائے اعلیٰ نے صوبائی سطح پر کرونا وائرس کی صورتحال اور اس کی روک تھام کے حوالے سے تجاویز پیش کیں۔

    وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت کو کرونا وائرس کے مسئلے کی سنجیدگی کا مکمل ادراک ہے اور اس ضمن میں حکومتی سطح پر ہر ممکن اقدام کیا جائے گا، ضرورت اس امر کی ہے کہ عوام کو اس مسئلے کی سنجیدگی کے بارے میں آگاہی فراہم کی جائے۔

    وزیراعظم عمران خان کی ہدایات

    وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وائرس کے منفی اثرات سے ملکی معیشت کو ممکنہ حد تک محفوظ رکھنا ہے، معاشی سرگرمیوں کی بلا تعطل روانی کو یقینی بنانا اور خصوصاً عام آدمی کے لئے روزگار کے تحفظ کو یقینی بنانا اولین ترجیح ہے، وزیراعظم نے ہدایت دی کہ کسی بھی ممکنہ صورتحال کے پیش نظر عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے حوالے سے جامع حکمت عملی تیار کی جائے۔

    کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے تین کم خرچ نسخے

    مائع وائپس

    بے بی وائپس صرف نومولود بچوں کو ہی نہیں آپ کو بھی کئی جراثیم سے بچاسکتی ہیں۔ میڈیکل اسٹور سے ایسے وائپس خریدیں جن میں الکحل کی شرح 60 فیصد ہو اور اگر نہ مل سکے تو اسی نوعیت والے الکحل مائع کو ہاتھوں پر رگڑ کر بے بی وائپس سے صاف کردیں۔

    جب بھی عوامی اجتماع، بس، یا ریلوے سے گھر آئیں تو فوری طور پر بے بی وائپس سے ہاتھ اور بازوؤں کو اچھی طرح صاف کرلیں۔ اسی طرح اسمارٹ فون کو بھی وائپس سے صاف کرکے جراثیم اور وائرس سے پاک بنایا جاسکتا ہے۔

    ڈس انفیکشن اسپرے

    مارکیٹ میں ایسے جراثیم کش اسپرے موجود ہیں جنہیں کسی بھی سطح پر اسپرے کرکے اسے کورونا وائرس سے پاک کیا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ چھینکنے کی صورت میں بار بار ہاتھ دھوئیں اور چہرہ بھی اچھی طرح دھونے کی عادت بنائیں۔ اسی طرح ہینڈ سینیٹائزر بھی استعمال کیے جاسکتے ہیں۔

    الکحل والے پریپ پیڈز

    طبی مقاصد کے لیے چھوٹے چھوٹے پریپ پیڈز استعمال ہوتے ہیں جن میں الکحل شامل ہوتا ہے۔ ان میں کلوروکس کمپنی کے ڈس انفیکشن وائپس مشہور ہیں۔ ان کے استعمال سے کورونا وائرس سے خود کو پاک کیا جاسکتا ہے۔

    ساتھ میں ایک اوربات یاد رہے کہ مائع صابن کی چھوٹی بوتل ساتھ رکھیں اور اس کی مدد سے بار بار ہاتھ دھوتے رہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    18,494
    کورونا وائرس سے متعلق صوبوں کی صورتحال اور حکومتی اقدامات
    ویب ڈیسک ایک گھنٹہ پہلے
    [​IMG]
    چاروں صوبوں میں مذہبی، سیاسی اور سماجی اجتماعات سمیت تمام عوامی تفریحی مقامات بند کردیئے گئے ہیں۔ فوٹو:فائل


    اسلام آباد: کورونا وائرس پر وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں اہم فیصلے کیے گئے تھے جن پر عمل درآمد شروع ہوچکا ہے، بیشتر شہروں میں عوامی تفریحی مقامات، درگاہیں بند کردی گئی ہیں جب کہ پورے ملک میں مذہبی، سیاسی اور سماجی اجتماعات پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

    وزیراعظم کے معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا بیان اور حکومتی اقدامات

    ایکسپریس نیوز کے مطابق آج بھی وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سمیت چاروں صوبوں میں کورونا وائرس کے تدارک کے لیے اہم اقدامات کیے گئے۔ معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بتایا کہ قومی سلامتی کمیٹی کے فیصلوں کا فوری اطلاق ہوگیا، وزیراعظم صورتحال خود مانیٹر کر رہے ہیں، کورونا وائرس پر کمانڈ اینڈ کنٹرول سیل قائم کردیا ہے، صورتحال کی مکمل مانیٹرنگ کی جارہی ہے، روزانہ کی بنیاد پرعوام کو صورتحال سے آگاہ کیا جائے گا، اب تک کل 961 مشتبہ مریضوں کے ٹیسٹ کیے گئے، تفتان سے زائرین کو ان کے صوبوں میں بھیجا اور صوبوں نے ان افراد کو دوبارہ قرنطینہ میں رکھنے کا فیصلہ کیا۔

    ڈاکٹر ظفرمرزا نے کہا کہ ملک میں کورونا کیسز کی تعداد سے زیادہ پریشان نہیں ہونا چاہیے، صوبے پازیٹو کیسز کی مکمل نگہداشت کررہے ہیں، 14 لیبارٹریز کو وائرس کی تشخیص کے لیے کٹس فراہم کی جارہی ہیں، حکومت کی تشخیصی کٹس سے ٹیسٹ مفت کیے جاتے ہیں۔

    سندھ میں کورونا کی صورتحال اور حکومتی اقدامات

    ملک میں سب سے زیادہ کیسز جس صوبے میں رپورٹ ہوئے ان میں صوبہ سندھ سرفہرست ہے تاہم صوبائی حکومت کی جانب سے بہترین اقدامات کی وجہ سے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ تمام ٹی وی چینلز کی زینت بنے ہوئے ہیں۔ اس حوالے سے وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت اپنے عوام کا تحفظ کررہی ہے، شہریوں میڈیا اور سول سوسائٹی کے تعاون پر شکر گزار ہیں، کورونا وائرس کا معاملہ سنجیدہ ہے، ہم روزانہ ٹاسک فورس کے اجلاس کررہے ہیں۔

    مراد علی شاہ کا بیان

    وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ صوبے میں کورونا وائرس کے 103 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں اور ان میں مزید بھی اضافہ ہوگا، تاہم اس میں گھبرانے کی ضرورت نہیں اور اسپتال آنے کے بجائے اپنے علاقے میں علاج کراسکتے ہیں، سب کو اسپتال لانا ممکن نہیں، افواہیں گردش کررہی ہیں، جو بھی کیس آئے گا ہم بتائیں گے۔ مسئلہ یہ ہے کہ سماجی رابطے یا ملنا چلنا کم کرنا ہوگا، یہ وائرس ہوا میں سفر نہیں کرتا، میری درخواست یہ ہے کہ لوگ خود زیادہ سے زیادہ ہاتھ دھوئیں، کسی سے رابطہ میں نہ آئیں، ہینڈ سینی ٹائزر کا استعمال ضرور کریں۔

    مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ہم نے 9 آئیسو لیشن وارڈز قائم کیے ہیں اور ہم نے وہاں ہرسہولت دی ہے، ہم 5 اسٹار سہولیات نہیں دے سکتے، لیکن ہم نے بہترین سہولیات دیں، مزید آگے کیا کرنا ہے؟ کچھ تجاویز میں نے وفاقی حکومت کو دی ہیں، سینڑل جیل میں پہلی بار قیدیوں کی اسکریننگ شروع کردی گئی ہے، اسپتال میں موجود چار ہزار قیدی ہیں اور تمام قیدیوں سے ان کی میڈیکل ہسٹری بھی پوچھی جاری ہے۔

    صوبے میں ہونے والے اقدامات

    ترجمان وزیراعلیٰ ہاؤس کے مطابق سندھ حکومت نے ریستوران اور چائے خانے رات نو بجے بند کرنے پر غور شروع کردیا ہے، اور وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ عوام اگر دیر تک گھومتے رہیں گے تو میں ہوٹلز اور ریسٹورنٹس مکمل بند کردوں گا تاہم اشیائے خورونوش کی دکانیں کسی صورت بند نہیں ہوں گی۔ وزیر اعلی سندھ نے آئی جی سندھ کو چھاپے مارنے کی ہدایت کی اور کہا کہ مہنگی اشیاء فروخت کرنے والوں کو گرفتار کیا جائے۔

    متاثرہ افراد کے گھروں میں راشن پہنچانے کا حکم

    وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیربلدیات ناصر شاہ کو ہدایت جاری کیں کہ زائرین کے گھروں کا پتا لے کر بغیر میڈیا کوریج کے راشن پہنچائیں، وزیراعلیٰ سندھ نے سکھر آئسولیشن سینٹر میں رہنے والے افراد کو کہا ہے کہ میں جانتا ہوں آپ کے کمانے والے لوگ آئسولیشن میں ہیں، آپ کو گھر کی روزی روٹی کی فکر ہے ہیں، آپ یہ فکر چھوڑ کے اپنے صحت اور صحتیابی پر توجہ دیں، آپ کے گھروں کا چولہا آپ کی حکومت بجھنے نہیں دے گی۔

    کورونا پر پنجاب میں صورتحال

    پنجاب حکومت کی جانب سے کورونا وائرس وباء کے لیے ہیلپ لائن قائم کردی گئی ہے، اس حوالے سے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ صوبے میں کورونا وائرس کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے محکمہ صحت میں کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے اور کورونا وائرس پر اقدامات کی مانیٹرنگ کے لیے کابینہ کمیٹی قائم کی جس کے اجلاس تواتر سے جاری ہیں۔

    وزیراعلیٰ پنجاب نے بتایا کہ محکمہ صحت کو فی الفور ضروری ساز و سامان کے لیے 24 کروڑ روپے کے فنڈز جاری کیے، کورونا وائرس کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر محکمہ صحت کے لیے مزید ایک ارب روپے کے فنڈز مختص کیے گئے ہیں، ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتالوں میں قائم 41 ہائی ڈیپنڈنسی یونٹ میں 541 بیڈز کی گنجائش ہے۔

    صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ کورونا سے بچاؤ کے اقدامات کے تحت پولیس ملازمین کے لیے پولیس اسپتال میں کورونا وائرس ہائی ڈپنڈسی یونٹ کے قیام کا اعلان کیا ہے، اسپتال میں آئسولیشن وارڈ قائم اور 4 وینٹی لیٹرز بھی فراہم کیے جائیں گے۔

    لاہور میں جاری اقدامات

    لاہور ہائی کورٹ کے زیر اہتمام ایڈیشنل سیشن ججز کی خالی آسامیوں پر بھرتی کے لیے ہونے والے تحریری امتحانات ملتوی کر دیئے گئے ہیں، شہر میں جاری تمام کلب کرکٹ ٹورنامنٹس کے میچز تین ہفتے کے لیے ملتوی ہوگئے ہیں جب کہ لاہور چیلنج کپ کے دوسرے مرحلے کے آخری تین میچز ملتوی کردئیے گئے۔

    خیبرپختون خوا کی صورتحال

    صوبہ خیبرپختون خوا میں چیف سیکریٹری نے اعلان کیا کہ تمام بھرتیوں کے سلسلے میں انٹرویو اور ٹیسٹ ملتوی، صرف لازمی ٹیسٹ یا انٹرویو کا انعقاد ہو گا، جب کہ انہوں نے ہدایات جاری کی ہیں اور اراکین اسمبلی کو کہا ہے کہ وہ اپنے حجروں اور حلقوں میں سماجی اکٹھ سے گریز کریں۔

    چیف سیکریٹری کی جانب سے خیبر پختونخوا کے تمام محکموں میں غیرضروری عملہ کو 15 دن چھٹی دینے کی ہدایت کی گئی ہے، میڈیکل کالجز کا عملہ کورونا وائرس کی تشخیص کے لیے موجود رہے گا تاہم 50 سال سے زائد عمر، امراض قلب سمیت دیگر بیماریوں کے شکار سرکاری ملازمین بھی 15 دن چھٹی پر رہیں گے، تمام سرکاری مہمان معاملات ٹیلی فون کے ذریعے زیربحث لائیں، ناگزیر صورت میں سرکاری دفاتر جائیں۔

    صوبائی وزیرصحت تیمور جھگڑا کا کہنا ہے کہ حیات میڈیکل کمپلیکس میں ہنگو سے آیا ہوا متاثرہ مشتبہ مریض گزشتہ رات چل بسا تھا تاہم مشتبہ مریض کی موت کی وجہ کورونا نہیں نمونیا کے باعث ہوئی ، عوام افواہوں پر کان نہ دھریں خیبرپختونخوا ابھی تک کورونا وائرس سے محفوظ ہے۔

    صوبے میں کیے گئے اقدامات

    ایوبیہ چئیر لفٹ کی سروس عارضی معطل کر دی گئی، ترجمان جی ڈی اے احسن حمید کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت کے احکامات پر من و عن عمل کیا جائے گا، چیئرلفٹ بند کرنے کا فیصلہ کرونا وائرس کے پھیلاو اور روک تھام کےلیے اٹھایا گیا ہے اور فیصلے کا اطلاق تاحکم ثانی ہو گا۔

    کورونا وائرس خدشات پر وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے قیدیوں کی سزا میں کمی کا اعلان کیا ہے اور صوبہ بھر کی جیلوں میں قیدیوں کی سزا میں 2 ماہ کمی کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ سزائیں کم ہونے سے بیشتر قیدیوں کو رہائی مل جائے گی۔ کورونا وائرس خدشات کے سبب بجلی ترسیل کمپنیوں کو کھلی کچہری کے انعقاد کا سلسلہ روک دیا گیا ہے۔

    ضلعی انتظامیہ پشاور نے ڈی سی پشاور کا اسلحہ لائسنس برانچ 14 روز کے لیے بند کرادیا ہے اور اس حوالے سے ڈی سی پشاور نے آرڈر جاری کر دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے خدشات کے پیش نظر اور عوامی مفادات میں لائسنس برانچ 14 روز کے لیے بند رہے گا۔

    شہر میں باڈی بلڈنگ کے مسٹر پاکستان اور جونیئر پاکستان کے مقابلے ملتوی کردیے گئے، خیبر پختونخوا پولیس کے تمام تربیتی ٹریننگ سینٹرز بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، کوہاٹ ، سوات ، ہنگو کے پولیس ٹریننگ اسکول بھی 5 اپریل تک بند ہوں گے۔

    بلوچستان کی صورتحال

    کوئٹہ میں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیر صدارت کورونا وائرس کی روک تھام سے متعلق اعلیٰ سطح اجلاس ہوا، وزیراعلیٰ نے تفتان تا کوئٹہ روٹ اور کوئٹہ کے قرنطینہ میں امن وامان کے لیے خصوصی حفاظتی اقدامات کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس کسی ایک علاقے کا نہیں پورے صوبے کا مسئلہ ہے، 300 کٹس دستیاب ہیں جن میں سے 160 کٹس کو ٹیسٹ کے لئے استعمال کیا گیا، عوام سے رابطے میں رہیں اور انہیں احتیاطی تدابیر بتائیں۔
     
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    18,494
  13. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    18,494
  14. ایم اے

    ایم اے معطل

    مراسلے:
    173
    سندھ میں پہلے ہی سے صورتِ حال گھمبیر تھی لیکن کیسز چھپانا مزید آسان نہیں رہا تھا لہذا عالمی حالات کا فائدہ اٹھا کر سہولت مل گئی ہے۔ اسی وجہ سے ہی تعداد دھڑادھڑ بڑھ رہی ہے۔ پھیلنے کا فیکٹر کم ہے۔ ایران سے آئے لوگوں کا زیادہ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  15. زاہد لطیف

    زاہد لطیف محفلین

    مراسلے:
    320
    لڑی کا عنوان بھی نئے رپورٹ ہونے والے کیسز کے ساتھ ساتھ اپڈیٹ ہونا چاہیے۔ اگر انتظامیہ یا کوئی بھی صاحب اختیار یہ فریضہ انجام دے دے تو ہماری طرف سے پیشگی شکریہ۔
     
    • متفق متفق × 1
  16. سید ذیشان

    سید ذیشان محفلین

    مراسلے:
    7,070
    موڈ:
    Asleep
    تفتان پر لگتا ہے کوارنٹین کی سہولت کی بجائے، وائرس کی نرسری بنائی گئی ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 17, 2020
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • متفق متفق × 1
  17. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,286
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    گستاخی معاف شاہ جی! 'تافتان' تو ایک خاص قسم کی روٹی کا نام ہے، یہاں درست تلفظ اور املا 'تفتان' ہوگا۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  18. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    15,268
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ڈر کی مارکیٹینگ اور خوف کے سہولت کار۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  19. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    12,349
    جھنڈا:
    Pakistan
    ۱) روس میں یہ وائرس پہنچا یا نہیں؟؟؟
    ۲) افریقی ممالک کی کیا صورت حال ہے؟؟؟
    ۳) اسی طرح جنوبی امریکی ممالک اس کی زد میں آئے یا نہ؟؟؟
    ۴) شنید ہے کہ پاکستان میں تیزی سے بڑھتے ہوئے مریضوں کا راز عالمی اداروں سے فنڈ ہتھیانا ہے۔۔۔
    یہ بات صحیح ہے یا غلط؟؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • غمناک غمناک × 1
  20. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    15,268
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    سب سے اہم بات یہ ہے کہ ہم جان لیں کہ دیگر امراض کے مقابلے میں اس وائرس سے متاثرہ مریضوں کی اموات کی تعداد کتنی ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 17, 2020

اس صفحے کی تشہیر