نیند کی کمی موٹا اور احمق بنا سکتی ہے

محمد عدنان اکبری نقیبی نے 'گھریلو تراکیب اور ٹوٹکے' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 1, 2018

  1. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    11,354
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    [​IMG]
    جرمن سائنس دانوں کا دعویٰ ہے کہ نیند کی کمی کسی بھی عام فرد کو موٹا، احمق اور بیمار کرسکتی ہے۔اس ریسرچ کے مطابق نیند کی کمی سے براہِ راست یادداشت پر مضر اثرات مرتّب ہوتے ہیں، جو مختلف حماقتوں کی وجہ بن جاتےہیں۔ نیز، اگر دیر تک جاگنا اور کم نیند عادت بن جائے، تو دِل، دورانِ خون، معدے، انتڑیوں کے افعال بھی آہستہ آہستہ متاثر ہونے لگتے ہیں۔
    یاد رہے، جب ہم گہری اور بَھرپور نیند لیتے ہیں، تو ہمارے جسم سے ایک مخصوص ہارمون کا اخراج ہوتا ہے، جو کھانے پینے کی طلب کم کر دیتا ہے۔ اگر اس ہارمون کے اخراج میں مداخلت یا رکاوٹ ہوجائے، تو ہم بہت جلد بھوک محسوس کرنے لگتے ہیں۔ سو، جب رات کی نیند پوری نہ ہو، تو بیش تر افراد بار بار کچھ نہ کچھ کھاتے پیتے رہتے ہیں، جس کا خمیازہ موٹاپے کی صورت بھی بھگتنا پڑتا ہے،لہٰذا خود کو توانا اور چست رکھنے کے لیے رات میں متواتر سات گھنٹے تک سویا جائے۔
    لنک
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    3,461
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Amused
    میں سونے جا رہا ہوں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 5

اس صفحے کی تشہیر