نوجوان نسل میں کتب بینی کو کیسے فروغ دیا جائے ؟

زونی نے 'مطالعہ کتب' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 5, 2012

  1. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,852
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    قارئین میں
    ایک طبقہ طالبان کا ہے جو کتاب کو پڑھتا ہے اور پھر کتاب سے کتاب نکلتی ہے۔
    دوسرا شائقین کا ہے جو کتاب کو پڑھتا ضرور ہے
    اور
    تیسرا طبقہ اشرافیہ ہے جس کو اپنے ڈرائنگ روم کی شیلف کے لئے کتاب چاہئے۔
    ایسا لگتا ہے فی زمانہ کہ کتابیں چھپتی ہی اشرافیہ کے لئے ہیں۔​
    ۔۔۔

    محمد وارث
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
    • متفق متفق × 1
  2. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    دنیا کی سب سے ذہین قوم یعنی ساؤتھ کوریا نے تو کب کا کتابی زمانہ ختم کر دیا۔ وہاں اسکولوں تک میں ڈیجیٹل کُتب ہوتی ہیں۔ ہمیں معلومات چاہییں، اوراق میں ہوں یا اسکرین پر، کیا فرق پڑتا ہے؟
     
    • متفق متفق × 2
  3. فرحت کیانی

    فرحت کیانی لائبریرین

    مراسلے:
    10,998
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    درست لیکن جہاں ابھی کمپیوٹر اور بجلی دونوں اتنے عام نہیں ہیں وہاں ہارڈ بائنڈنگ ہی سب سے بہتر آپشن ہے۔
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. محمد اسلم

    محمد اسلم محفلین

    مراسلے:
    697
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Sleepy
    امید ہے اگر ایسی کتابیں آپ کو ملی تو ہم سے بھی شیئر کرینگے
     
    • متفق متفق × 1
  5. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,619
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    علوی صاحب ،آپ کے درج کردہ گڈریڈ کے ربط کی پیروی کرتے ہوئے جب میں اس ویب سائٹ پر گیا تو بلاشبہ وہاں پر انگریزی کتب تو بکثرت پائیں مگر ان کتابوں کوآن لائن پڑھنے یا ڈاؤنلوڈ کرنے کاکوئی آپشن ندارد ہے۔
     
  6. ناصر علی مرزا

    ناصر علی مرزا معطل

    مراسلے:
    1,234
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آپ کو نہ سہی، کچھ افراد، جن کو مسلسل اسکرین دیکھنے کی عادت نہ ہو، کو فرق پڑتا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,852
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    کتاب کی صورت بدل گئی ہے۔ اب کتاب کاغذ پر کم اور سکرین پر زیادہ پائی جاتی ہے۔ جس شخص کے اندر کچھ نہ کچھ جان لینے کا جذبہ ہے وہ پڑھ لیتا ہے چاہے کاغذ پر ہو، چاہئے پردہء سیمین پر۔ بلکہ ہماری اولادیں اور ان کی اولادیں پردہء سیمین سے ہماری نسبت زیادہ مانوس ہیں۔

    مسئلہ اصل میں یہ نہیں ہے کہ کتاب کی ہیئت کیا ہے، اصل مسئلہ، میں نے پہلے بھی عرض کیا تھا، انفارمیشن بلاسٹ کا ہے۔ میں ایک خاص موضوع یا کسی خاص کتاب بھی تلاش میں ہوں، وہ مجھے ملے نہ ملے اس سے ہٹ کر اتنا کچھ مل جاتا ہے کہ وہ کتاب ’’خاص‘‘ کا مقام کھو دیتی ہے۔ ہمیں اپنے لئے بھی اور اپنے بعد آنے والوں کے لئے بھی سمتیے متعین کرنے ہوں گے، اور یہ وہ جسے کہتے ہیں مسائل کا مرکب ہے۔

    اس پر گفتگو کیجئے ، یعنی سمتیوں کا تعین کیسے ہو۔
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  8. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    18,062
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    بقول وسیم بریلوی

    نئی نسلوں کی خود مختاریوں کو کون سمجھائے
    کہاں سے ہٹ کر چلنا ہے، کہاں جانا ضروری ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  9. ناصر علی مرزا

    ناصر علی مرزا معطل

    مراسلے:
    1,234
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    معذرت موضوع سے تھوڑا ہٹ کر بات کر رہاہوں، کم از کم میرے لیے کتاب کی ہیئت زیادہ اہم ہے، کہ کتاب کے اوراق اور حاشیہ پر لکھنے کی عادت ہے کہ ،اگر ایک کتاب پڑھوں اور وہ صاف رہ جائے اور دوسرا بندہ اس کو آسانی سے پڑھ لے ، یہ بہت مشکل ہے،
    پڑھتے وقت ساتھ ساتھ عنوانات، تبصرہ، خط کشیدہ کرنے سے یہ ہوتا ہے کہ کتاب کے پڑھنے کے بعد یہ سوچ میں اضافہ اور علم کا باعث ضرور بنتی ہے،
    یہ بات سافٹ کاپی میں اتنی اسان نہیں ہے کم از کم میرے لیے ابھی تک۔ یہ میرا ذاتی تجربہ ہے،
    ہاں یہ ضرور ہے کہ سافٹ کاپی کے اپنے فوائد ہیں، جگہ کی بچت، اسانی سے حصول ، وغیرہ،
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,852
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    کچھ عادات ہوا کرتی ہیں، اور ان کے پیچھے بندے کی اپنی ایک منطق بھی ہوتی ہے۔ میں کوئی کتاب پڑھ رہا ہوں تو کچی پنسل ساتھ رکھتا ہوں، کہ اس کا لکھا بعد میں آسانی سے مٹایا جا سکتا ہے۔ لکھنا بھی کیا ہوتا ہے؛ کہ کہیں کسی لفظ پر دائرہ لگا دیا، کہیں زیر خط کشیدہ کر دیا، کہیں سوالیہ نشان بنا دیا۔ کتاب کی دوسری تیسری خواندگی میں مجھے یاد آ جاتا ہے کہ ان علامات کا مقصد کیا رہا تھا۔
    سافٹ کاپی کے اپنے فوائد ہیں، بالکل ہیں! اور ہارڈ کاپی کے اپنے ہیں۔ کمپیوٹر تو ایک سہولت ہے ہم آپ اس کو صحت مند مقاصد کے لئے استعمال کریں یا اپنے ذہن کو بیمار کرنے کے لئے۔ بقول شخصے: چاقو کا کام تو کاٹنا ہے، کوئی کسی کا ناسور کاٹے یا گلا کاٹے۔
     
    • زبردست زبردست × 2
    • متفق متفق × 2
  11. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,749
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    ہائی لائٹ نوٹس وغیرہ تو ای بکس میں بہت آسان ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  12. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    میرا خیال ہے کہ ناصر علی مرزا نے پی ڈی ایف فارمیٹ کا ذکر کیا ہے اور آپ اصلی والی ای بکس (کنڈل یا اسی طرح کی فارمیٹ)
     
    • متفق متفق × 3
  13. سید ابو بکر عمار

    سید ابو بکر عمار محفلین

    مراسلے:
    192
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    آج کے تیز ترین دور میں کسی بھی کام کو کرنے کے لئے اس کا آپ کے لئے اہم ہونا ضروری ہے۔ مثلاً کتاب کی ہی مثال لیجئے: ہر مسلمان کے لئے قرآن نہایت اہمیت رکھتا ہے اسی طرح عیسائی کے لئے بائیبل وغٰیرہ وغیرہ۔ کون سا ایسا مسلمان ہوگا جس کے گھر قرآن نہیں ہوگاَ؟ یا اس نے زندگی میں کم از کم ایک بار اسے پڑھا نہ ہو۔
    کہنا یہ چاہتا ہوں کہ اگر بچپن سے یہ باور کرایا جائے کہ مطالعہ کی اہمیت کیا ہے، تو ضرور خاطرخواہ فائدہ ہوگا۔ اس کے لئے موضوعات دینا بھی ضروری ہے۔ اگر آپ صرف یہ کہہ دیں کہ کوئی سی بھی کتاب پڑھو تو بہت سے لوگ اسی تذبذب کا شکار رہیں گے کہ کون سی کتاب پڑھوں۔۔۔؟
    نصابی موضوعات، ملکی تاریخ اور اپنے اسلاف (ہر علاقہ اور مذہب کےلحاظ سے) جلد توجہ حاصل کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ اساتذہ بچوں کے رجحان کے مطابق انفرادی موضوعات بھی دے سکتے ہیں۔
    اس کا طریقہ یہ بھی ہو سکتا ہے کہ 50 نمبر کی ایک پریزنٹیشن رکھی جائے جس میں کسی ایک موضوع پر لکھی گئی کتابوں کا مختصر تعارف کروانا اور ایک کتاب کے متعلق سوالوں کے جواب دینا لازم ٹہرایا جائے۔
    اس جیسے کئی اقدام ہیں جو نظام تعلیم کی بہتری سے تعلق رکھتے ہیں۔
    اس بات کو واضح کرنا بھی ضروری ہے کہ نیٹ پہ بہت زیادہ غلط معلومات بغیر تحقیق کے ڈال دی جاتی ہیں جبکہ کتاب میں یہ بہت کم ہے۔ اس لئے نیٹ پہ انحصار کرنا چند غلط صحیح معلومات حاصل کرنے کا سبب تو ہے لیکن کسی بات کا حقیقی پس منظر اور تمام پہلو جاننے لے لئے کتاب پڑھنا ضروری ہے۔ چاہے ای بک یا ہارڈ پیپر۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. زبیر مرزا

    زبیر مرزا محفلین

    مراسلے:
    5,997
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    جامعہ کراچی کے بصری بعلوم وفنون کے شعبے میں کُتب بینی کے فروغ کی ایک کوشش کُتب تبادلہ منعقد کیا گیا تھا جس میں ہمارے حسان صاحب بھی شریک ہوئے تھے
    ایسے سلسلے تعلیمی اداروں میں ہوتے رہیں تو کُتب بینی کو فروغ مل سکتا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  15. زبیر مرزا

    زبیر مرزا محفلین

    مراسلے:
    5,997
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    اس کُتب تبادلے کو وٹہ سٹہ کے نام سے منعقد کیا گیا- حسان خان کو بھیجا تھا اور وہ وہاں سے کیا لائے ان سے پوچھتے ہیں:)
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  16. زبیر مرزا

    زبیر مرزا محفلین

    مراسلے:
    5,997
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  17. bilal260

    bilal260 محفلین

    مراسلے:
    1,907
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Chatty
    میں نے بہت سی کتابیں اردو میں پی ڈی ایف میں ڈائونلوڈ کیں ہیں اور میں انہیں روزانہ پڑھتا ہوں۔
    اپنے موبائل پر نوکیا این ایٹ پر
    اور اپنے کمپیوٹر میں بھی ۔
    ٹیکنالوجی آ گئی ہیں مطالعہ آسان ہو گیا ہے۔ کبھی بھی کہیں بھی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  18. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,852
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ۔۔۔۔
    کتاب کی صورت بدل گئی ہے! وہ پہلے والا رسمی کتب خانہ اب "ای۔لائبریری" بن چکا ہے۔
    اس کے مثبت پہلوؤں کو کام میں لایا جائے تو ماننا پڑے گا کہ ای۔لائبریری کہیں زیادہ سستی اور قابلِ رسائی ہے۔
    ۔۔۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  19. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,887
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    ای کتاب سستی اور قابلِ رسائی ضرور ہے لیکن اس کے مطالعے میں وہ لطف نہیں جو اصل کتاب کو ہاتھوں میں تھام کر پڑھنے میں ہے۔ ہمیں تو استادِ محترم ابھی تک ای کتا ب پڑھنے کی عادت ہی نہیں ہوپارہی۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  20. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,852
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    بجا ارشاد۔ اور طوطا بوڑھا ہو جائے تو ۔۔ آپ کے لئے ایک ہزل کا سامان کر دیتا ہے۔
    یار لوگ دل کی تسلی کے لئے ایکسٹرنل ہارڈ ڈسک کو کتاب کی جلد جیسا بنا لیں۔ کچھ تو افاقہ ہو گا ہی!!!

    کتاب کی روایتی صورت کی اپنی ایک (کیا کہنا چاہئے) چاشنی ہے یا رومان ہے، وہ تو ہے! اس سے انکار کون کرے گا، بھلا! جلد بند کتاب سے پہلے ایک زمانہ تھا جب چمڑے یا کپڑے کا ایک لمبا رول ہوا کرتا تھا، اس کی اپنی چاشنی تھی۔
     
    • زبردست زبردست × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر