1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

منیر نیازی منیر نیازی

عرفان سرور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 3, 2011

  1. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اسلام و علیکم میں یہاں ایک نیا سلسلہ شروع کرنا چاہتا ہوں۔۔

    بازگشت
    ٭
    یہ صدا
    یہ صدائے بازگشت
    بیکراں وسعت کی آوارہ پری
    سُست رو جھیلوں کے پار
    نم زدہ پیڑوں کے پھیلے بازوؤں کے آس پاس
    ایک غم دیدہ پرند
    گیت گاتا ہے میری ویران شاموں کے لیے​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    عام آدمی
    خوشی ملے تو ہنس لیتے ہیں
    غم جو ملے تو رو لیتے ہیں
    جو کوئی جیسی راہ بتائے
    اسی راہ پر ہو لیتے ہیں
    دے دیتے ہیں اور کسی کو
    اس دنیا سے جو لیتے ہیں​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    کسی رہنما کی آنکھیں

    اس کی آنکھوں میں کوئی مقصد بڑا ہے
    اپنی عورت سے بڑا
    اپنے بچے سے بڑا۔۔۔
    منیر نیازی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    برسات

    آہ! یہ بارانی رات
    مینہ ہوا، طوفان، رقص صاعقات
    شش جہت پر تیرگی اُمڈی ہوئی
    ایک سناٹے میں گم ہے بزم گاہ حادثات
    آسماں پر بادلوں کے قافلے بڑھتے ہوئے
    اور میری کھڑکی کے نیچے کانپتے پیڑوں کے ہات
    چار سو آوارہ ہیں
    بھولے، بسرے واقعات
    جھکڑوں کے شور میں
    جانے کتنی دور سے
    سن رہا ہوں تیری بات
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. محمد امین

    محمد امین لائبریرین

    مراسلے:
    9,452
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Flirty
    بہت خوبصورت نظمیں ہیں عرفان بھائی۔ بہت شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    رات جو بارش ہوئی

    شہر میں اور ساتھ کے قصبوں میں جو بارش ہوئی
    اک اچانک بات تھی
    گھاس میں محصور تالابوں پہ بوندوں اور پتوں کا سماں
    گھات میں بیٹھی ہوں جیسے بن بیاہی ناریاں
    موت میں ہوں کچھ نہاں اور زندگی میں کچھ عیاں
    متصل ہونے کی خواہش میں زمین و آسماں
    چھپ کے سازش کرہے ہوں سازشوں کے درمیاں۔۔۔
    منیر نیازی۔
     
  7. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    کچھ باتیں بھی لکھ نہیں پاتا

    سردی کی ٹھٹھرتی شاموں کی
    برکھا میں برستی سوچوں کی
    گرمی میں چمکتی آنکھوں کی
    سرخی میں بھڑکتے ہونٹوں کی
    عمروں میں بھٹکتی آنکھوں کی۔۔۔
    منیر نیازی۔
     
  8. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    میں اپنے باپ کے گھر کی مدافعت کروں گا

    بھیڑیوں کے خلاف
    خشک سالی کے خلاف
    منافع خوروں کے خلاف
    عدالتوں کے خلاف
    میں اپنے مویشی، کھیت اور جنگل ہار جاؤں گا
    میں اپنے حصے کی یافت، آمدنی اور نفع ہار جاؤں گا
    مگرمیں اپنے باپ کے گھر کی مدافعت کروں گا
    وہ مجھ سے میرے ہتھیار چھن کر لے جائیں گے
    مگر میں صرف ہاتھوں سے اپنے باپ کے گھر کی مدافعت کروں گا
    بازؤوں کے بغیر
    چھاتیوں کے بغیر
    کندھوں کے بغیر
    وہ مجھے اپنے پیچھے چھوڑ جائیں گے
    مگر میں اپنی روح سے اپنے باپ کے گھر کی مدافعت کروں گا
    میں مر جاؤں گا
    میری روح گزر جائے گی
    میرے بچے گزر جائیں گے
    مگر میرے باپ کا گھر باقی رہے گا
    میرے باپ کا گھر کھڑا رہے گا
     
  9. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    زندگی میں حد بندیاں

    میری حدوں میں نہیں اس کی ذات کی دنیا
    میرے قیاس بس اس کے نواح غم تک ہیں
     
  10. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    شبِ ویراں
    یوکلپٹس کے پیڑ کے اُوپر
    ٹھٹھرے تاروں کے پھیلے جنگل میں
    چاند تنہا اُداس پھرتا ہے
    یوکلپٹس کی سرد شاخوں سے
    ٹھنڈے جھونکے لپٹ کے روتے ہیں
    یوکلپٹس کے پیڑ کے نیچے
    خشک پتے ہوا میں اُڑتے ہیں
    منیر نیازی​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    آخر اک دن

    شبھ دن آئے پریتما
    اپنی پتیاں کے آگے
    سب دکھ ہار گئے۔۔۔
    منیر نیازی۔
     
  12. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    مرد اور عورت
    یوں کبھی لگتا ہے ان میں دشمنی ہے دیر کی
    اس زمیں پر زیست کے آثار جتنی دیر کی
    ان کو جنت سے زمیں پر جس گھڑی پھینکا گیا
    اک سزا تھی ساتھ ان کے یہ سدا کی دشمنی
    منیر نیازی​
     
    • زبردست زبردست × 1
  13. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    جس زمانے میں اچھی باتیں بے معنی ہو جاتی ہیں
    دو طرح کے عیب ہیں اس شہر کی تعمیر میں
    جن سے آتی ہے خرابی شہر کی توقیر میں
    فخر انساں قید ہے اس خوشنما زنجیر میں
    مستقل شرمندگی کے مستقل اظہار میں
    بے ریا رشتوں میں مخفی ظلم کی دیوار میں
    رحم اور احسان دونوں روح کے آزار میں
    ان سے نفرت پھیلتی ہے عام بود و ہست میں
    ان سے بٹ جاتے ہیں دل ہجر بلند و پست میں
    منیر نیازی​
     
  14. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    آخری سچائی کے لیے نظم
    چاہتا ہوں دیکھنا اس کو اسی رنگ میں
    سب عقیدوں سے پرے کی زندگی کے رنگ میں
    سارے اندازوں سے آگے کی کمی کے رنگ میں
    منیر نیازی​
     
  15. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بساطِ زیست
    بساط زیست پر روحوں کی بار کتنی ہے
    خموش چہرے ہیں ان میں پکار کتنی ہے
    زوال عمر ہے یادیں پری رخوں کی ہیں
    خزاں کے بیچ میں فصل بہار کتنی ہے
    منیر نیازی​
     
  16. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    خوابوں کے مسکن
    رہتے ہیں اس طرح سے خوشی ہیں غموں کے خواب
    جیسے نئے گھروں میں پرانے گھروں کے خواب
    پہلی نظر میں اس کی کوئی ایسی بات تھی
    جس میں تھے کچھ شعبوں کے بہت سے دنوں کے خواب
    منیر نیازی​
     
  17. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    ایک منظر
    گھاٹ پر ہوا چلتی ہے
    کیکروں پر پھول مہکتے ہیں
    شام سجی سجی لگتی ہے
    منیر نیازی​
     
  18. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اک اور گھر بھی تھا میرا
    اک اور گھر بھی تھا میرا
    جس میں میں رہتا تھا کبھی
    اک اور کنبہ تھا میرا
    بچوں اور بڑوں کے درمیاں
    اک اور بستی تھی میری
    کچھ رنج تھے کچھ خواب تھے
    موجود ہیں جو آج بھی
    وہ گھر جو تھی بستی مری
    یہ گھر جو ہے بستی میری
    اس میں بھی تھی ہستی میری
    اس میں بھی ہے، ہستی میری
    اور میں ہوں جیسے کوئی شے
    دو بستیوں میں اجنبی۔۔۔
    منیر نیازی​
     
  19. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    مجھے کسی سے کچھ چھپانا ہے
    مجھے کسی سے کچھ چھپانا ہے
    اپنی بیوی سے جو مجھ پر یقین رکھتی ہے
    جیسے وہ اپنے خدا پر یقین رکھتی ہے
    اپنے بچوں سے جو ابھی پیدا نہیں ہوئے
    اپنے خدا سے جو سب کچھ دیکھ رہا ہے
    مجھے کسی سے کچھ چھپانا ہے
    میں ایسا کیوں کرتا ہوں
    میں کیوں کسی سے کچھ چھپانا ہے
    کیا عادت مجھے غیر محفوظ گزری نسلوں نے وراثت میں دی ہے
    کیا میں اپنے آس پاس بستے ہوئے لوگو ں کے رد عمل میں
    ایسا ہو گیا ہوں
    یا پھر کوئی اور وجہ ہو گی
    منیر نیازی​
     
    • زبردست زبردست × 1
  20. عرفان سرور

    عرفان سرور محفلین

    مراسلے:
    838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    میں شانت ہو کر تیری پریم کتھا لکھوں گا پاروتی
    مجھے میرے استھان سے کسی نے
    اشانت کر کے اٹھا دیا ہے
    میں اپنی جگہ سے کرودھ میں اٹھا ہوں
    پاروتی بول! اب میں اس کرودھ کا انت کیسے کروں
    اس جگ کا سروناش کر دوں
    کہ دھرتی اور آکاش لگیں، پیڑوں کی پتیاں ہیں
    دھنکی ہوئی روئی ہیں جو آندھی میں اڑتی پھر رہی ہے
    یا بہت دیر کے مرے ہوئے لوگوں کو جیون دے کر
    ایک بہت بڑی یُدھ کا سماں پیدا کر دوں
    میں شانت ہو کر تیری پریم کتھا لکھوں گا
    میں شانت ہو کر تیری پریم کتھا لکھنا چاہتا ہوں۔۔
    منیر نیازی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر