محسن نقوی غزل: دن تو یوں بھی لگے عذاب عذاب

محمد تابش صدیقی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 18, 2019

  1. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,098
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    دن تو یوں بھی لگے عذاب عذاب
    خوفِ شب خوں سے شب کو خواب، عذاب

    اور کیا ہے متاعِ تشنہ لبی؟
    دھوپ، صحرا، تھکن، سراب، عذاب

    کس کو چاہیں، کسے بھلا ڈالیں؟
    دوستی میں ہے انتخاب، عذاب

    حسرتِ دید کی جزا، ہجرت!
    خواہشِ وصل کا ثواب، عذاب

    لمحہ بھر کی محبتوں کے لیے
    زندگی بھر کا اضطراب، عذاب

    شکریہ، اے خیالِ خلدِ بریں!
    ہم پہ ٹوٹے ہیں بے حساب، عذاب

    وہ نہیں ہے تو دیکھ بستی میں
    اے دلِ خانماں خراب، عذاب

    چپ رہے ہم تو دیکھنا محسنؔ
    اب کے لائے گا انقلاب، عذاب

    ٭٭٭
    محسنؔ نقوی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
  2. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    واہ کیا انتخاب ہے تابش بھائی

    ایک شعر، شاعر کو خراج تحسین کے طور پر پیش کرنے کی جسارت کروں گا۔

    کھول کر عشق نے کتابِ زیست
    ایک لفظ اس میں لکھ دیا ہے، عذاب
     
    آخری تدوین: ‏جنوری 18, 2019
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    13,252
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    بہت خوب!
    خوبصورت شراکت۔
     
  4. سفیر آفریدی

    سفیر آفریدی محفلین

    مراسلے:
    403
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    محبت کی بہت خوبصورت شجرہ محسن نقوی صاحب نے بیان کی ہے نیٹ کے علاوہ ایک کتاب نظر سے گزری ہے
    رخت شب
    احباب سے آپ لوگوں سے پوچھنا ہے انکی اس محنت اس لکهنے کی کاوش کے بدلے نمایاں بهر پور مقام نہیں ملا ہے مقام ملا ہے مگر اس کی محنت کے برابر نہیں

    کیا میں غلط ہوں
     

اس صفحے کی تشہیر