غزلیات برائے تبصرہ

عمران سرگانی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 4, 2019

  1. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    شہر یاراں کو سدا یونہی سجاتے رہیے
    پھول گلشن میں محبت کے کھلاتے رہیے

    کیا ضروری ہے کہ نفرت کریں دشمن سے یہاں
    امن اور پیار سے دنیا کو سجاتے رہیے

    چاہے جو کچھ ہو اندھیروں کو مٹانا ہے ضرور
    اپنے خوں سے بھی چراغوں کو جلاتے رہیے

    تجھ کو خالق نے عطا کی ہے جو طاقت اے دوست
    دکھ سے کمزوروں کو ہر طور بچاتے رہیے

    شہر یاراں کو سدا یونہی سجاتے رہیے
    پھول گلشن میں محبت کے کھلاتے رہیے

    کیا خبر کب کوئی اجائے صدا سن کے تری

    دل کی آواز سے آواز ملاتے رہیے

    روٹھے لوگوں کو منانا بھی ہے اعلی ظرفی
    جانے والوں کو بہر طور بلاتے رہیے

    دل کے ہر زخم کو چپ چاپ سہو سے فرخ
    اپنے یاروں کو سدا دکھ سے بچاتے رہیے

    سید فرخ رضا ترمذی
     
  2. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    شمع امید کی اب دل میں جلاتے رہیے
    صبحِ روشن کو سدا آپ بلاتے رہیے

    خواب پلکوں پہ یونہی روز سجاتے رہیے
    دل میں چاہت کا کوئی دیپ جلاتے رہیے

    گردشِ وقت کی الجھن میں الجھنا کیسا
    وقت کی چال پہ بس خود کو چلاتے رہیے

    ہجر کے خوف سے آزاد کرو خود کو ذرا
    پیار کے نغمے سدا ہونٹوں پر لاتے رہیے

    جو میرے درد سے غافل ہیں زمانے والے
    درد سہہ کر بھی انھیں آج ہنساتے رہیے

    نرگس قیصر
     
  3. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    قوم سوٸی ہے اسے آپ جگاتے رہیے
    اس کی بگڑی ہوٸی تقدیر بناتے رہیے

    اپنے محبوب کا یوں ناز اٹھاتے رہیے
    روٹھ جاٸے تو اسے خوب مناتے رہیے

    دل کہے جب بھی ذرا اور نیا کچھ کرلیں
    *”دل کی آواز سے آواز ملاتے رہیے“*

    اور رکھا ہے بھلا دنیا میں کیا اس کے سوا
    خود بھی ہنسیے اور زمانے کو ہنساتے رہیے

    کام جب کچھ نہ ملے آپ کو بے کاری میں
    لیجے بندر کو اسے خوب نچاتے رہیے

    آپ کا عیب چھپاٸے گا خدا محشر میں
    اس لٸے عیبِ بشر آپ چھپاتے رہیے

    راہ سے کانٹے ہٹانا بھی عبادت ہے جناب
    پھرتو ہر موذی کو ہر رہ سے ہٹاتے رہیے

    جب بھی حالات سے ہوجاٶں کبیدہ خاطر
    دل کا دکھ درد مرے آپ مٹاتے رہیے

    وقت کا جبری تقاضا ہے قرینِ حکمت
    دل ملے یا نہ ملے ہاتھ ملاتے رہیے

    دینی کاموں میں رکاوٹ ہو محامد جب بھی
    پڑھ کے لاحول شیاطیں کو بھگاتے رہیے

    محمدعبدالمجید محامدرضوی مصباحی
     
  4. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    خوشیاں سب پر ہی سدا آپ لٹاتے رہیے
    راہ چلتے جو ملے اس کو ہنساتے رہیے

    زندگی تیرا بھروسہ ہی نہیں ہے اب تو
    روٹھے ہیں جو سبھی کو آپ مناتے رہیے

    کر لیا رب کو اگر راضی ملے گی جنت
    نیکیاں آپ سدا بس یوں کماتے رہیے

    سوچ کے خرچ کرو رب نے دیا ہے جو کچھ
    بوجھ کچھ مل کے غریبوں کا اٹھاتے رہیے

    دل کی راحت ہے نمازوں کی کرو پابندی
    گر کے سجدے میں سدا آنسو بہاتے رہیے

    دین غالب رہے باطل کو ختم کرنا ہے
    سب کو توحید کا کلمہ ہی سناتے رہیے

    بے سہاروں کا سہارا کوئی تو بن جائے
    آس کی شمع ہمیشہ ہی جلاتے رہیے

    سیما غزل
     
  5. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کاوش
    .
    .

    دل میں طوفان سہی نغمے سناتے رہیے
    آ ہی بیٹھے ہیں تو محفل کو ہنساتے رہیے

    غم کی دیوار پہ ہنستے ہوئے خوشیاں لکھکر
    درد جتنے ہیں محبت سے مٹاتے رہیے

    سردیاں لائی ہیں یادوں کے کٹیلے موسم
    دھوپ لمحوں میں یونہی دل کو جلاتے رہیے

    بھیگتی شب میں ستاروں کی الجھتی کرنیں
    چاند مدھم ہو تو ارمان جگاتے رہیے

    رات کے پچھلے پہر سسکیاں لیتی ہے ہوا
    جانے والے نہیں آتے یہ بتاتے رہیے

    روکنے سے کہاں شہزاد کوئی رکتا ہے
    بوجھ یہ ہجر کے اب خود ہی اٹھاتے رہیے
    شهزاد گوهیر
     
  6. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کاوش

    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے
    آپ آئیں گے ہمیں یاد دلاتے رہیے

    تیری تصویر کے آگے بھی یہی کہتا ہوں
    دور بیٹھے ہوئے یوں ہاتھ ہلاتے رہیے

    دو گھڑی اور ٹھہر جائیے اے ساقیِ دل
    اپنے ہاتھوں سے ہمیں جام پلاتے رہیے

    خواب آنکھوں میں سمائے ہوئے بیدار رہیں
    رت جگا کرتے ہوئے رات جگاتے رہیے

    وہ خدا ہے نہیں معلوم کہ کب راضی ہو
    روز روتے رہیے ہاتھ اٹھاتے رہیے

    کب تلک سانس چلیں گے کوئی معلوم نہیں
    زندہ رہنا ہے تو پھر دیپ جلاتے رہیے

    اشتر ولی
     
  7. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    آپ بھی سب سے دیا ملتے ملاتے رہیے
    حال دل کا یونہی بس سنتے سناتے رہیے

    درد کے سر میں کوئی تال ملاتے رہیے
    سانس ٹوٹے نہیں ہر تان نبھاتے رہیے

    خواب کی ریت پہ کچھ نقش بناتے رہیے
    نیند کی گلیوں کو ہر شام جگاتے رہیے

    دیکھنا بن کے محبت کی صدا گونجے گی
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے

    چاند کی چاہ میں حسرت کو ہی بینا کر کے
    تارے پلکوں پہ اداسی کے گراتے رہیے

    نفرتیں خوشبو کو انجان کئے رکھتی ہیں
    پھول آنگن میں محبت کے اگاتے رہیے

    خامشی وقت کی دہلیز پہ آبیٹھی ہے
    ہاتھ باندھے رہیں اور سر کو جھکاتے رہیے

    ہجر کی دھوپ میں بوجھل ہے اداسی گر تو
    گدگدی کر کے ہی یادوں کو ہنساتے رہیے

    مل ہی جائے گا کوئی لمحہ گزرتا ہنستا
    آنکھ کو رکھ کے دریچے پہ گھماتے رہیے

    دلِ صد چاک پہ لکھی ہوئی حسرت کہیئے
    اپنے ماضی کا کوئی عہد دہراتے رہیے

    کوئی طبلہ کوئی ڈھولک نہ ہو رسوائی کا
    راگ چاہت کا یوں ملہار میں گاتے رہیے

    رقص کرتے ہیں جہاں گھنگھرو بھی تنہائی کے
    گیت آہوں کے وہاں تھاپ پہ گاتے رہیے

    دیا جیم
     
  8. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    آگ نفرت کی جہاں بڑ ھکے بجھاتے رہیے
    بزمِ، الفت کی شب و روز سجاتے رہئے

    دل یہ کہتا ہے کہ محبوب نے آنا ہے ضرور
    نا اُمیدی ہے شرک،راہ سجاتے رہئے

    آپ کو آتا ہے ہنس ہنس کے ستانے کا ہنر
    ہم تڑپتے ہیں، لطفِ، آپ اٹھاتے رہئے

    ہم تو نیزے پہ سر اپنا بلند رکھتے ہیں،
    آپ زر کے لیئے سر ،اپنا جھکاتے رہیئے

    اپنی بربادی کا احساس ہو کب رب جانے
    جشن غیروں کے اشاروں پہ مناتے رہئے

    مل گئیں ہیں تو نگاہیں ،،ہے ضروری یہ بھی
    دل۔ کی آواز میں آواز ملاتے۔ رہیے

    دال مہنگی ہے نہیں روٹی بھی سستی ممکن
    اب چنا لوہے کا روزانہ چباتے رہیے ۔۔

    اب ہمیں لڑنا ہے لہروں سے سہارے کے بغیر
    آپ کشتی کو کنارے سے لگاتے رہیے ۔۔۔۔
    مہدی شاہد سکردو
     
  9. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    اپنی آنکھوں میں مرا پیار سجاتے رہئے
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہئے

    دل کی تاریکی مٹی آپ کی یادوں سے مری
    آئینے عرض و سما میں بھی سجاتے رہئے

    نیند کو بانٹ دیا ھے حسیِن ٹکڑوں میں
    آپ خوابوں میں اسی طرح سے آتے رہئے

    آپ کی فکر میں اشعار ہیں شامل میرے
    اپنے گیتوں میں مرے راگ ملاتے رہئے

    منزلِ شوق پہ جب آ ہی گیا دل اپنا
    ناز شہناز کے اب آپ اٹھاتے رہئے
    شہناز حسن
     
  10. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    دام فرقت کی اداسی کا لگاتے رہیے
    بک نہ پائے تو ذرا مول گھٹاتے رہیے

    یونہی الزام نہ اوروں پہ لگاتے رہیے
    جالے قسمت پہ لگے خود بھی ہٹاتے رہیے

    وقت کی تیز روی نے کئی رشتے چھینے
    ساتھ چلنا ہے تو رفتار بڑھاتے رہیے

    شور کرتی ہوئی دھڑکن کے سکوں کی خاطر
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے

    ہائے مشکل سے چراغوں کو سکوں آیا ہے
    کرکے آندھی کواشارے نہ بلاتے رہیے

    کرب اندر کا اگرچین نہ لینے دے تو
    دولتِ درد نگاہوں سے لٹاتے رہیے

    فوزیہ عباس شاہ
     
  11. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    غزل 
    شہرِ خاموش میں آواز لگاتے رہئے
    خوابِ غفلت سے مکینوں کو جگاتے رہئے

    قافلہ تاکہ بھٹک جائے نہ جنگل میں کہیں
    ظلمتِ شب میں چراغوں کو جلاتے رہئے

    نور پاکیزہ خیالات سے حاصل کرکے
    اپنے افکار کو پُر نور بناتے رہئے

    دوستی رب کا عطا کردہ خزانہ ہے کوئی
    آپ یہ دولتِ نایاب لٹاتے رہئے

    آہی جائے گی نظر سامنے منزل اک دن
    سچی دھن لے کے قدم اپنے بڑھاتے رہئے

    اپنی آرائش و زیبائشِ ذاتی کے لیے
    آئینہ خود کو شب و روز دکھاتے رہئے

    ہو ہی جائے گی کبھی خفتہ منوّر بیدار
    آپ کا کام جگانا ہے جگاتے رہیے
    سیّدہ منوّر جہاں منوّر
     
  12. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کاوش 1
    اپنی اس زیست کو خود آپ سجاتے رہیے
    قبر سینے میں بھی اک آپ بناتے رہیے
    لشکرے مہدی ع کا بننا ہے سپاہی جس کو
    قصے حیدر ع کی شجاعت کے سناتے رہیے
    نام جب بھی لیں ادب سے نبی ص کا لینا ہے
    اپنے بچوں کو یہ تہذیب سکھاتے رہیے
    جان بھی جائے چلی جائے یہ جانا ہی ہے
    راہے حق سے نہ قدم پیچھے ہٹاتے رہیے
    کبھی اللہ کی باتیں کبھی اللہ سے ہوں
    ہاں نماز اور ہے قرآن پڑھاتے رہیے
    انکی آواز سنیں دل میں اتاریں اسکو
    دل سے آواز دیں مہدی ع کو بلاتے رہیے
    قرب ہم کو بھی میسر ہو ولائے حق سے
    دل لگایا ہے تو دل سے ہی لگاتے رہیے
    خوف ہو رب کے غضب سے تو یقیں رحمت پر
    اپنے احساس کو اس طور جگاتے رہیے
     
  13. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,758
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    اے حزیں اپنی ہی پہچان کوجو بھول گیا
    فاسق وفاجرہے وہ سب کو بتاتے رہئے
    .. دوسرا مصرع بحر سے خارج
    پیار جب حد سے زیادہ ہو تو مکاں ہوتا گھر
    بیچ رشتوں کی ہر دیوار گراتے رہیئے
    دوسرا. ایضاً

    پیار جب حد سے زیادہ ہو تو مکاں ہوتا گھر
    بیچ رشتوں کی ہر دیوار گراتے رہیئے
    .. بحر سے خارج
    باقی بعد میں
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  14. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    اوکے سر شکریہ۔۔۔
     
  15. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    سر جن شعراء کا کلام غلطیوں سے بالکل پاک ہے ان کی الگ سے نشاندہی کر دیجئے۔۔۔
     
  16. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,758
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    موبائل اور محض ان لائن یہ کام ممکن نہیں۔ اس کی فائل بنانی پڑے گی، اور اج کل مجھے فرصت نہیں۔ کلیات غالب میں لگا ہوں
     
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر