غزلیات برائے تبصرہ

عمران سرگانی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 4, 2019

  1. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    سر الف عین عظیم محمد خلیل الرحمٰن شاہد شاہنواز ظہیراحمدظہیر

    مجھے ایک فیس بکی گروپ کی طرف سے ہوئے مشاعرے میں پیش کی گئی غزلیات کی تزئین کے لئے کہا گیا ہے۔۔۔ آپ برائے مہربانی تبصرہ کرتے جائیے جو اشعار درست نہیں ہونگے سکپ کر دیئے جائیں گے۔۔۔
    یقیناً آپکا وقت بہت قیمتی ہے مگر اس سے ہم ایسے مبتدیوں کو سیکھنے کا موقع میسر آئے گا۔ میں نیچے غزلیات ایک ایک کر کے پیش کرتا ہوں۔
    شکریہ
     
  2. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    ان کو احساس محبت کا دلاتے رہیے
    دل ملے گر نہ ملے ہاتھ ملاتے رہیے

    وہ اگر ہوتے نہیں کچھ بھی نہیں تھا ممکن
    روٹھ جائیں جو کبھی ان کو مناتے رہیے

    ختم ہوگا ہی نہیں ایسا خزانہ ہے یہ
    دونوں ہاتھوں سے محبت کو لٹاتے رہیے

    گر پتہ ہے کہ نہیں اس کی ہے تعبیر کوئی
    اپنے خوابوں کو ہر اک رات سلاتے رہیے

    جاتے جاتے یہ خوشی مجھ سے بچھڑ کر بولی
    غم ملا ہے تو زمانے سے چھپاتے رہیے

    اس طرح سے ہی سہی دل کو تسلی ہوگی
    دل کی ہر بات کسی کو تو بتاتے رہیے

    زندگی کا نہیں کچھ بھی ہے بھروسا اصغر
    ساتھ ہر حال میں بس اس کا نبھاتے رہیے

    اصغر شمیم
     
  3. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یک جا کلام
    محمد نور آسی

    ان چراغوں کو ہواؤں سے لڑاتے رہیے
    رات تسخیر جو کرنی ہے ، جلاتے رہیے

    عین ممکن ہے کسی روز یہ سن لی جائے
    "دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے"

    بیج نفرت کا اسے بانجھ بنا دیتا ہے
    دل کی مٹی میں فقط پیار اگاتے رہیے

    میری مٹی ہے، ابھی اور ملائم ہوگی
    کوزہ گراور ابھی چاک گھماتے رہیے

    سبز رکھنا ہے جو آنگن کا شجر، آساں ہے
    کوئی موسم ہو پرندوں کو بلاتے رہیے

    غم اگر ختم نہیں ہوگا تو کم تو ہوگا
    دل کا احوال ہمیں آکے سناتے رہیے

    وقت لگتا ہے مگر وقت بدل جا تا ہے
    دل بھی مل جاتے ہیں گر ہاتھ ملاتے رہیے
     
  4. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    323 ویں مشاعرے میں یکجاکلام***

    جشن میلادنبی یونہی مناتے رہئے
    نعت خوانی کیلئے ہم کو بلاتے رہئے

    سوکھ جائے نہ گلا جون کی گرمی میں مرا
    روح افزاہی سہی کچھ تو پلاتے رہئے

    چیختے چیختے جب آنے لگے منھ سے جھاگ
    جوش میں نعرہءتکبیر لگاتے رہئے

    کچھ سمجھنے کی ضرورت نہیں تفسیر ومتن
    انکی آواز میں آواز ملاتے رہئے

    چاہتے ہیں جوسلامت رہے ایمان اپنا
    کچھ نہ کچھ ہفتے میں واعظ کو کھلاتے رہئے

    یونہی شرمندہ رہے حشرتک ابلیس لعیں
    عشق محبوب خدا دل میں جگاتے رہئے

    ہرمسلمان ہے اسلام میں بھائ بھائ
    دل ملے یا نہ ملے ہاتھ ملاتے رہئے

    ہونہیں سکتا کبھی تارک سنت مؤمن
    اہل ایمان کو یہ یاد دلاتے رہئے

    ( اے حزیں اپنی ہی پہچان کوجو بھول گیا
    فاسق وفاجرہے وہ سب کو بتاتے رہئے )

    #عبدالرحیم حزیں اعظمی#
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 5, 2019
  5. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    روٹھے ہیں آپ سے اب آپ مناتے رہیئے
    منتیں کیجے نہ اب ناز اٹھاتے رہیئے

    لوٹ آنے سے بہت پہلے ہمیں لیجے ساتھ
    درد دل سنیئے ہمارا نہ سناتے رہیئے

    کوئ پوچھے جو بھری بزم میں ساتھی ہیں کہاں
    آئیں گے بزم میں ہم بھی یہ بتاتے رہیئے

    اک دیا جلتا ہوا رکھا ہے دیوار پہ آج
    آپ نے ہی تو کہا گھر کو سجاتے رہیئے

    ( پیار جب حد سے زیادہ ہو تو مکاں ہوتا گھر
    بیچ رشتوں کی ہر دیوار گراتے رہیئے )

    لکھنی ہو حسن پہ جب کوئ غزل آ ملیئے
    یونہی دیوان پہ دیواں نہ لکھاتے رہیئے

    ساز بج اٹھتے ہیں خاور جو چھڑے تار کوئ
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیئے
    (خاور چشتی)
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 5, 2019
  6. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    ********** یکجا کلام *********
    ہر کسی کو یہی احساس دلاتے رہٸے
    آٸینہ سچ کا ہمیشہ ہی دکھاتے رہٸے

    آپ کو آتا ہو جو ہم کو ستانے میں مزا
    ہر گھڑی آپ میرے دل کو ستاتے رہٸے

    آپ ڈرٸیے نہیں حالات کے تھپیڑوں سے
    غم ملے پھر بھی تو یہ جشن مناتے رہٸے

    اُس کی یادوں سے سدا رکھٸے اس دل کو روشن
    اک دیا درد کا سینے میں جلاتے رہٸے

    کچھ عدو بھی تو بھَلے آپ کو مل جاٸینگے
    دوستو سے مگر ہر راز چھُپاتے رہٸے

    اُن کے آنے کی تو امید لگاٸے رکھٸے
    وہ نہیں آٸے مگر آپ تو جاتے رہٸے

    وہ اگر ٹوٹ بھی جاٸے تو کوٸی بات نہیں
    اپنی پلکوں پہ ہر اک خواب سجاتے رہٸے

    آندھیاں توڑ بھی دے آپ کے گھر کو پھر بھی
    آشیاں ریت پہ ہر روز بناتے رہٸے

    زندگی آپ کو جینے نہیں دے گی اے"قمر"
    موت سے ہر گھڑی یہ آنکھ ملاتے رہٸے
    ڈاکٹرقمرِعالم"قمر" ، دربھنگہ
     
  7. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا
    غزل

    نشہء عشق و جنوں یونہی بڑھاتے رہیے
    اپنی نظروں سے ہمیں آپ پلاتے رہیے

    وہ ہے پھل ایسا جو ڈالی سے نہیں ہوگا الگ
    صبح سے شام تلک پیڑ ہلاتے رہیے

    دل میں نفرت ہو مگر پھیلا ہو لب پر مسکان
    دوستی یوں بھی سہی ہم سے نبھاتے رہیے

    عہد ہے سائنس کا بازار سے گیزر لاکر
    سخت جاڑے کے مہینوں میں نہاتے رہیے

    اک اصول اچھا بنا رکھا ہے عادل اپنا
    رنج و آلام تسبم سے چھپاتے رہیے

    ✍️..... حافظ فیصل عادل
     
  8. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    خود کا احساس زمانے کو کراتے رہیے
    خواب آنکھوں میں ہمیشہ ہی سجاتے رہیے

    کچھ اگر کر کے دکھانا زمانے والوں
    بے خطر آنکھ مصائب کو دکھاتے رہیے

    وہ اگر اپنا سمجھتا ہے چلا آے گا
    پیار کا دیپ لگاتار جلاتے رہیے

    ہے اگر شوق محبت میں جلانا خود کو
    "دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے"

    یار مل جائیں اگر جان چھڑکنے والے
    ایسے احباب سے بےخوف نبھاتے رہیے

    پاس آنے پہ تمہیں خوف ہے تو دور سے ہی
    مست آنکھوں سے ہمیں جام پلاتے رہیے

    تم کو بے کار سمجھ لےنہ جہاں اے نادر
    اس لیے،درد،اداسی کو چھپاتے رہیے

    نادر بستوی
     
  9. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام کی پوسٹ
    نعتِ رسولؐ
    جشنِ میلادِ محمدؐ جو مناتے رہیے
    نعت سرکار ِ مدینہ ؐکی سناتے رہیے

    ان ؐکے آنے سے ہوئے دور اندھیرے یکسر
    نام ؐسے ان کے اندھیروں کو بھگاتے رہیے

    انؐ کی طاعت سے ہے وابستہ خدا کی طاعت
    انؐ کی الفت میں زمانے کو بھلاتے رہیے

    گھر جو ویران ہوں ویران نہیں رہ سکتے
    ذکرِ سرکارِ مدینہؐ سے سجاتے رہیے

    میں تو حاضر ہوں مری جان بھی ان پر قرباں
    محفلِ نعتؐ سجانے کو بلاتے رہیے

    موقعہ جب بھی ملے تم اسے قبول کرو
    ان ؐکے روضے کی زیارت کو بھی جاتے رہیے

    جن کے ہونے سے خدا راضی رہے خلقت سے
    انؐ کے دیوانوں کو سینے سے لگاتے رہیے

    انؐ کی چاہت میں چلو نقشِ قدم پر ان کے
    انؐ کی ناموس پہ گردن بھی کٹاتے رہیے
    شاعر
    ذوالفقار ہمدم اعوان
     
  10. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    کلام

    دل کو دیوانہ شہِ دیں کا بنا تے رہیے
    عشق کا پھول سدا اس میں کھلاتے رہیے

    بارشِ نور میں ہر وقت نہاتے رہیے
    محفلِ شاہِ زمن گھر پہ سجاتے رہیے

    ان کی یادوں کا دیا دل میں جلاتے رہیے
    تیرگی گلشنِ ہستی کی مٹاتے رہیے

    تاج والے بھی ترے در کے سوالی ہوں گے
    خود کو نوکر شہِ والا کا بتاتے رہیے

    اپنی قسمت کی ہو گر تم کو بلندی مقصود
    ان کے اوصاف سرِ بزم گناتے رہیے

    لاکھ چاہے یہ زمانہ نہ مٹا پائے گا
    دل کی آواز سے آواز ملاتے رہیے

    نام لے لے کے شہنشاہِ دو عالم کا مجیب
    ہجر کے زخم سبھی اپنے مٹاتے رہیے

    مجیب الرحمٰن اسمٰعیلی بارہ بنکوی
     
  11. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    غزل
    صحنِ جیون میں یونہی ہنستے ہنساتے رہیے
    "دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے"

    دف بجاتے ہوئے فردوس کو جاتے رہیے
    جشن سرکار عقیدت سے مناتے رہیے

    لوگ بہرے ہیں مرے شہر میں بسنے والے
    آپ جتنا بھی یہاں شور مچاتے رہیے

    رات اپنی بھی اسی طور سے کٹ جائے گی
    داستانِ شبِ فرقت ہی سناتے رہیے

    سوکھ ہی جائیں نہ بانہوں میں وفا کے گجرے
    پیار سے فصل گلایوں کی اگاتے رہیے

    سنگ بنیاد کسی شہر کا رکھنے کے لئے
    گھر کی دیوار سے دیوار ملاتے رہیے

    اپنے ہاتھوں سے مقدر کی کتابیں لکھیے
    ٹھوکریں وقت کی گلیوں میں نہ کھاتے رہیے

    نقش سارے ہی سمٹ آئیں گے دھیرےدھیرے
    دل کے قرطاس پہ تصویر بناتے رہیے

    رقص حالات کی دھن پر ہے سبھی نے کرنا
    پابجولاں ہی سہی نچتے نچاتے رہیے
    جمیل حیدرعقیل
     
  12. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    آپ یہ راگ محبت ہی سناتے رہیئے
    ساتھ میں وصل کا سنگیت بجاتے رہیئے

    رنگ آئے گا ابھر کر محبت کا حسیں
    ایک رنگ ان میں وفاوں کا ملاتے رہیئے

    نام محبوب کا گر مہکے ہتھیلی پر تو
    دل کے پنوں پہ یہی لفظ سجاتے رہیئے

    زندگی ایک ردھم پہ ہی اگر بجنے لگے
    ایک دھن اس میں جدائی کی بجاتے رہیئے

    شاعری ذوق و ادب آپ کا انداز بیاں
    اب تو یہ بزم سخن آپ سجاتے رہیئے

    فاخرہ چودھری
     
  13. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    مکمل کلام..... ذہینہ صدیقی........ نئی دہلی...... ہندوستان.
    ساز اُلفت تو محبّت میں بجاتے رہءے
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہءے

    دوسرے پر جو اُٹھاتے ہیں ہمیشہ اُنگلی
    آئینہ اُن کو سر عام دکھاتے رہءے

    میکدے کی مجھے حاجت نہیں ساقی میرے
    اپنی آنکھوں سے مجھے روز پلاتے رہءے

    فیصلہ چھوڑءے ہر بات کا رب پر صاحب
    آپ بگڑے ہوئے حالات بناتے رہءے

    عمر بھر ہونگے نہیں آپ سے ناراض کبھی
    ناز نخرے ان حسینوں کے اُٹھاتے رہءے

    روٹھ جانا تو حسینوں کی ادا ہوتی ہے
    آپ بیشک انہیں ہر روز مناتے رہءے

    آپ کا خون بھی پانی ہے نظر نہیں ان کی
    آپ رو رو کے لہو اپنا بہاتے رہءے

    سلسلہ منقطع ہو جاءیگا اک دن خود ہی
    اپنے دامن کو سلیقے سے چُھڑاتے رہءے

    بات کو راز جو رکھنا ہے تو ایسا کیجے
    اپنا ہمراز ذہینہ کو بناتے رہءے.
    ذہینہ صدیقی.... نئی دہلی...... ہندوستان.
     
  14. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    پیار کرتے ہیں ہمیں آپ بتاتے رہیے
    مدھ بھرا گیت ہمیں آ پ سناتے رہیے

    یہ بھی کیا بات ہے احسان جو کردیں ہم پر
    بعد میں بات پہ بے بات جتاتے رہیے

    آپ کو عشق کا دعوی ہے تو محبوب کا پھر
    عشو ہ و ناز مری جان اٹھاتے رہیے

    وقت جو چاہیں ا گر آپ گنواتے رہیے
    قلعے خوابوں کے ہواؤں میں بناتے رہیے

    یہ بھی کیا بات ہے خود خوش نہ ہمیں رہنے دیں
    خود بھی جلتے رہیں ا ور ہم کو جلاتے رہیے

    سیدھا رستہ جو دکھانا ہو نئی نسل کو پھر
    دیپ راہوں میں امیدوں کے جلاتے رہیے

    بڑا آساں ہے رُلانا، ذرا کر کے دیکھیں
    وہ جو روتے ہیں اگر اُن کو ہنساتے رہیے

    طاہرہ مسعود
     
  15. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام
    غزل
    لاکھ بونے سہی پر قد کو بڑھاتے رہیے
    تم بھی انسان ہو احساس کراتے رہیے

    اس کی مت رکھوغرض تم کو ملے گی تعبیر
    خواب آنکھوں میں مگر پھر بھی سجاتے رہیے

    راہ میں لاکھ حوادث ہوں مگر ڈٹ جائیں
    مشکلیں کتنی پڑیں ان کو بھگاتے رہیے

    اپنے دشمن کو سکھا دینا محبت کا سبق
    راہ پر آئے گا بس اس کو سکھاتے رہیے

    عاشقی جان بھی لے لیتی ہے، ہوتا آیا
    عشق سے خود کو ذرا دوربھگاتے رہیے

    منزلِ عشق مقدر بھی کسی دن ہوگی
    راہ میں دیپ محبت کے جلاتے رہیے

    کچے دھاگے سے بندھا آئے گا اک دن محبوب
    شرط لیکن ہے یہی اس کو بلاتے رہیے

    روپ میں دوست کے دشمن بھی ملا کرتے ہیں
    سوچے سمجھے بنا مت ہاتھ ملاتے رہیے

    بند آنکھوں سے کہاں ہوتے ہیں عہد و پیماں
    اور اگر ہو ہی گئے ان کو نبھاتے رہیے

    دل تمہارا ہے کسی اور کو مت دینا کبھی
    دل کو قابو میں رکھیں اس کو مناتے رہیے

    دنیا شہزاد کسی دن تو تمہیں مانے گی
    تم میں جادو ہے بڑا جادو جگاتے رہیے
    ضیاء شہزاد
     
  16. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    ذکر سرکار کی محفل کو سجاتے رہیئے
    اپنے خوابیدہ مقدر کو جگاتے رہیئے

    نغمۂ نعت نبی خوب سناتے رہیئے
    "دل کی آواز سے آواز ملاتے رہیئے "

    ہے تقاضہ یہ محبت کا نبھاتے رہیئے
    جشن آقا کی ولادت کا مناتے رہیئے

    نام آجائے زباں پر جو نبی کا پھر تو
    گوہر صل علیٰ خوب لٹاتے رہیئے

    ہے یہ پیغام شہنشاہ دوعالم کا حسیں
    ہر طرف شمع الفت کو جلاتے رہیئے

    دل میں گر آپ کے ہے باغ ارم کی خواہش
    خود کو آقا کی محبت میں مٹاتے رہیئے

    جل رہی ہے جو یہاں آتش نفرت اس کو
    اپنے اخلاق سے گلزار بناتے رہیئے

    اپنا بس کام ہے آقا کی غلامی کرنا
    آپ شاہوں کے سدا ناز اٹھاتے رہیئے

    مل ہی جائےگی رضا رب کی نبی کے صدقے
    مفلسوں اور یتیموں کو مناتے رہیئے

    یاد آقا کو کلیجے سے لگا کر جوہر
    اپنی تقدیر کی دنیا کو سجاتے رہیئے

    شفیق اللہ نوری جوہرباڑاوی سیتامڑھی
     
  17. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    رونے والوں کو ہمیشہ تو ہنساتے رہیے
    دل کی آواز ۔ سے آواز ملاتے رہیے

    جو تمھے بھول کے بیھٹاہے زمانے والوں
    اسکو احساس محبت تو کراتے رہیے

    اپنی آواز کو موتی سے سجا لو پہلے
    پھرمجھےعشق کی غزلیں تو سناتےرہیے

    میری یادوں میں گزارےہیں زمانےکیسے
    بس یہی بات محبت سےبتاتےرہیے

    لوگ انگار لٹاتے ہیں لٹانے دو تم
    آپ الفت کے ہی بازار لگاتے رہیے

    ختم ہونےہی نہ پائے یو! گھروں کی رونق
    اپنےگھرکوتومحبت سے سجاتے رہیے

    بیج نفرت کاہٹاکر کےسداتم سبکو
    پھول الفت کاہمیشہ تو سنگھاتے رہیے

    بس یہی بات تو احسان ہماری سن لو
    دل پہ گزرے ہوئےحالات بتاتے رہیے
    ١نومبر٢٠١٩

    محمداحسان اللہ علیمی
     
  18. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    خوب تم جشن ولادت کومناتےرہیے
    آنےوالےہیں نبی سب کو بتاتے رہیے

    آمدنور ہے گھرکوتوسجاتےرہیے
    جوہےگستاخ نبی اسکو جلاتے رہیے

    اپنے خوابیدہ مقدر کو جگاتے رہیے
    پڑھ کے نعت نبی سبکوتو سناتےرہیے

    گنبدِ خضری کونظروں میں بساکرتم تو
    دل کو سرکارکا دیوانہ بناتے رہیے

    شہرسرکارمیں جاکرکےدوانوں اب تو
    بارش نورمیں ہردم تونھاتےرہیے

    ہے شفا خاک مدینہ تو زمانے والوں
    اپنے سرموں میں وہی خاک ملاتے رہیے

    شہرسرکارسےلاکرکےتوآبِ زم زم
    مجھ خطاکاردوانوں کوپلاتےرہیے

    بس یہی ایک ہی احسان ہومجھ پرآقا
    تاقیامت مجھے طیبہ میں سلاتےرہیے

    ١نومبر٢٠١٩
    محمداحسان اللہ علیمی
     
  19. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    پیار ہی پیار کے نغموں کو ہی گاتے رہیے
    بس محبت کے ترانوں کو سناتے رہیے

    دل میں سب پیار کے ارمان جگاتے رہیے
    عشق کی شمع ہمیشہ ہی جلاتے رہیے

    رِیت اور رسم یہ دنیا کی نبھاتے رہیے
    دوست و دشمن سبھی سے ہاتھ ملاتے رہیے

    اک محبت کا حسیں ساز بنے ممکن دوست
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیے

    وہ اگر منع کریں باغ میں ملنے تم کو
    اپنا پھر دشت سے ہی رشتہ بناتے رہیے

    یاد ظالم کی ستانے لگے اکثر تم کو
    فکر کو اپنی ہوا میں ہی اڑاتے رہیے

    ان کی نظروں کی توجہہ ہوئی جانب غیرہی
    تو نظر انکے قدم سے نہ ہٹاتے رہیے

    ناز انکا جو قیامت بنے چھائے ماہر
    مست جلووں سے ذرا خود کو بچاتے رہیے

    عبدالغنی ماہر
     
  20. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    یکجا کلام

    اک قدم آگے میرے دھیرے سے جاتے رہیئے
    راہ چلتا ہوں اشارے سے بلاتے رہیئے

    ڈر نہ جاؤں میں کہیں اس غم تنہائی میں
    دل کی آواز میں آواز ملاتے رہیئے

    حالت غش میں نہ آجائے مجھے مرگِ دوام
    پاس آ بیٹھ سرہانےمیں جگاتے رہیئے

    صحن گلشن میں خزاں چھائی ہوئی ہے میرے
    اے بہار روٹھ نہ جا.. ! لوٹ کے آتے رہیئے

    حوصلہ ہمت و طاقت کا سلیقہ ایسا
    مجھے حالات سے لڑنے کا سکھاتے رہیئے

    ورنہ کمزور ہوں میں ٹوٹ کے گر جاوں گا
    میری ہستی کی وہ زنجیر ہلاتے رہیئے

    چھوڑ اوروں کو فقط اپنا گریباں جھانکو
    یہ تو کھا جائیں گے تم تو نہ کھلاتے رہیئے

    مرتضٰی صرف ہے دو دن کی یہ ساری رونق
    ہنس بھی لے اور زمانے کو ہنساتے رہیئے

    مرتضیٰ آخوندی(گلگت بلتستان)
     

اس صفحے کی تشہیر