درست تلفظ کیا ہے؟

ابو حذیفہ عباسی نے 'ادبیات و لسانیات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 2, 2013

  1. ابو حذیفہ عباسی

    ابو حذیفہ عباسی محفلین

    مراسلے:
    60
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    باب افتعال ومفاعلہ کے مصادرمیں دوران گفتگو واقع ہونے والی تلفظ کی اغلاط ۔

    انتہاء ؛اجتناب ؛ افتراق ؛ ؛انتظام ؛ امتحان ؛ التجاء؛ وغیرہ ان کلمات میں حرف ،، ت ؛؛کو اکثر لوگ فتحہ ( زبر ) کے ساتھ مثلا اِنتَہاء پڑھتے ہیں جبکہ درست ؛؛ ت ؛؛ کے کسرہ( زیر) کے ساتھ ِانتِہاء ہےِ ۔
    اسیطرح مشاھدہ ، َمطالعہ،مکالمہ مباحثہ وغیرہ میں ،الف کے بعد والا حرف ہمیشہ مفتوح ہو گا ۔ جیسے مباحَثہ : اسے مکسور پڑھنا غیر صحیح ہے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
  2. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    17,928
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    معلوماتی پوسٹ کے لیے بہت شکریہ۔ مجھ سمیت زیادہ تر لوگ بابِ مفاعلہ کے اکثر مصادر ہمیشہ مکسور ہی پڑھتے ہیں۔ آج پتا چلا کہ یہ غلط ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. ابو حذیفہ عباسی

    ابو حذیفہ عباسی محفلین

    مراسلے:
    60
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    السلام علیکم! حسان بھائی

    مراسَلہ کا مطالَعہ؛ غلطیوں کا مشاہَدہ ؛ خلوص کا مظاہَرہ کرتے ہوئے اس بے نوا عدیم العلم کی بے ربط تحریر

    کو لائق اعتِناء جان کراظہار خیال کرتے ہوئے قابل اعتِبار سمجھ کر اس پر اعتِماد کیا ؛ جس کے لیے سراپا امتِنان وتشکر ہوں ۔

    جزاکم اللہ تعالی وایانا احسن الجزا فی الدارین ۔
     
    • زبردست زبردست × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. مؤثرہ

    مؤثرہ محفلین

    مراسلے:
    50
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    تحریر تو بڑی زبردست ہے مگر اب اس کی تشریح کون کرے گا ۔؟
     
  5. مسافر چند روزہ

    مسافر چند روزہ محفلین

    مراسلے:
    49
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    السلام علیکم
    جناب افصح و احسن عبارت۔ بہت خوب!
    سطر بالا میں مفتوحہ اور سطر زیریں میں مکسورہ کی مزید امثال ہی مزین نہیں بلکہ اسلوب متن بھی خوب مثال ہے۔
    ما شآء اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  6. محمد اسامہ سَرسَری

    محمد اسامہ سَرسَری لائبریرین

    مراسلے:
    6,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    مغالطات سے اجتِناب کرانے کے لیے انتہائی مناسَبت رکھنے والا مکالَمہ اختِیار کیا ہے آپ نے۔
    اس کا مطالعہ ، مشاہدہ اور معاینہ کرنے کے بعد اب اشتباہ ختم ہوگیا ، لہذا مباحثے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔
    یہ مشارَکت آپ کا ہم اصحابِ اشتیاق پر امتِنان ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  7. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    استاد داغ کی یہ غزل فیس بک پر دیکھی ہے۔ اس میں تیسرے شعر کے قافیے پر مخمصے کا شکار ہوں۔ اہلِ علم و فن احباب سے راہنمائی دی درخواست ہے۔

    کتاب عشق کے اُلٹے ورق اول سے آخر تک
    مگر سمجھے نہ ہم اس کا سبق اول سے آخر تک

    بری ہے ابتدا بھی انتہا بھی تیری الفت کی
    کہ اس میں ہیں غم و رنج و قلق اول سے آخر تک

    بشر کو گر نہ ملتی کس کو ملتی عشق کی دولت
    نہیں تھا کوئی اس کا مستحق اول سے آخر تک

    مَےِ انگور تحفے میں تجھے دیتا ہوں اے زاہد
    رہے گا تیز یکساں یہ عرق اول سے آخر تک

    ہزاروں دوست دشمن بزم میں اس کی رہے لیکن
    رہا اک شکل پر نظم و نسق اول سے آخر تک

    لکھوں اُس کو جواب اے داغ کیا میں سخت حیران ہوں
    لکھے ہیں خط میں مضمون ادق اول سے آخر تک

    بشر کو گر نہ ملتی کس کو ملتی عشق کی دولت
    نہیں تھا کوئی اس کا مستحق اول سے آخر تک
    یہاں درست کیا ہے؟ مستحِق یا مستحَق؟ ۔۔ اگر مستحِق درست لفظ ہے تو یہاں دیگر قوافی میں حرف ماقبل قاف سب مفتوح ہیں۔
    مرزا غالب کی ’’ ۔۔ ۔۔ کافِر نہیں ہوں میں‘‘ کا معاملہ بھی کچھ ایسا ہے، کہ وہاں دیگر سب قوافی میں حرف ماقبل راء مفتوح ہیں: (برابَر، گوہَر، در پَر، پتھَر وغیرہ)۔


    الف عین صاحب، فاتح صاحب، محمد وارث صاحب، مزمل شیخ بسمل صاحب، اور محمد خلیل الرحمٰن صاحب سے خصوصی توجہ کی درخواست ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,576
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    میرے خیال میں یہاں داغ نے آزادی برتی ہے کہ درست تلفظ استعمال نہیں کیا قافئے کی مجبوری کی وجہ سے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • متفق متفق × 1
  9. مزمل شیخ بسمل

    مزمل شیخ بسمل محفلین

    مراسلے:
    3,530
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    پہہلی بات:::
    میرے نزدیک یہ معاملہ روز مرہ بولی جانے والی زبان سے تعلق رکھتا ہے. جس کے گرد و نواح میں جو زبان عام ہے وہ وہی بولتا ہے. داغ نے بھی ایسا کر لیا تو کیا عجب ؟؟؟ غالب نے لفظ صاحِب کو صاحَب باندھا جس پر نولوی نجم الغنی نے باقاعدہ تنقید کی ہے بحر الفصاحت میں. اور حسرت نے اپنی کتاب اصلاح سخن میں بھی اعتراض اٹھایا. پھر یہیں بس نہیں ہوتی. لغات جو مشہور اور مستند ہیں ان میں بھی اس تلفظ کو غلط کہا ہے. اب کیا کہئے گا؟
    ان باتوں کی حیثیت در حقیقت اب کچھ بھی نہیں. کہاں تک بچیں گے؟
    ایک شاعر جو استاد ہو وہ بھی الفاظ کے تلفظ کو نہیں جانتا. ما سوائے دو باتوں کے..
    ١. کونسا حرف متحرک ہے.
    2. کونسا حرف ساکن ہے.

    بس یہی دو باتیں ہیں جن سے مصرع بحر میں رہتا ہے. کہاں زبر کہاں زیر کہاں پیش یہ کسکو معلوم؟ اور اس سے حاصل بھی کیا؟
    مثال کے طور پر ایک عام لفظ کو لیجئے. "محبت"
    میں ایک ہزار فیصد گارنٹی کے ساتھ کہتا ہوں کہ اس لفظ کو کسی بھی شاعر یا کسی اردو لٹریچر میں پی ایچ ڈی کئے ہوئے استاد سے پڑھوا لیجئے. اس لفظ کو میم مضموم سے مُحبت ہی پڑھے گا. جب کہ درست تلفظ کے لئے لغت دیکھ لیں. :)
    یہی معاملہ شاعروں کا ہے. جہاں جیسا لفظ اور تلفظ عام ہے اسے ہی باندھا جاتا ہے. یہ پہلی صورت ہے. اور دوسری صورت ہے کہ اپنی آسانی کے لئے غلط تصرفات کو بھی روا رکھتے ہیں. :) اور پھر کہتے ہیں کہ ریختہ میں کلام ہم سے نہ کر. یہ ہماری زبان ہے پیارے. :D
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • متفق متفق × 1
  10. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    یوں تو مستحِق اور مستحَق دونوں ہی درست ہیں لیکن مختلف معانی میں لیکن یہاں محل مستحِق کا ہی ہے اور داغ نے غالب کی سنت پر عمل کرتے ہوئے آزادی برتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 2
  11. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 1
  12. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    جی! تبھی غلط العام صرف اس غلط کو کہا جاتا ہے جسے "اہلِ زبان ادبا و شعرا" نے غلط باندھا ہو جب کہ اس کی الٹ غلط "العوام" ہے اور اسے کبھی درجۂ قبولیت نہیں ملتا۔۔۔
    اگر میرا گھر ہے تو مجھے اختیار ہے کہ میں اپنے گھر کی کیاریوں میں گلاب لگاؤں یا چنبیلی اگاؤں۔۔۔ اسی طرح اہلِ زبان کو یہ اختیار ہے کہ وہ کسی لفظ کو کس طرح استعمال کرتے ہیں۔۔۔ اس میں اشرافیہ یا عوام کا ذکر کہاں سے آ گیا؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اشرافیہ کا ذکر آ گیا نا، جناب۔ اگر میں اشرافیہ میں ہوں اور اپنے باغیچے کے گوبھی کے پھول کو موتیا قرار دیتا ہوں تو تسلیم نہ کرنے والا آنکھوں کے موتیا کا مریض کہلائے گا، اور اگر میں اشرافیہ میں نہیں ہوں تو اسی بات پر مجھے موتیا کا مریض کہا جائے گا۔

    بات پھول لگانے یا بونے کی نہیں ہے، بات پھول کو نام دینے کی ہے؛ یہ قافیہ ہے یہ ردیف ہے۔ میں چاہوں تو گوبھی کے پھولوں کا ہار پہن لوں، کوئی مجھے روک نہ سکے تو نہ روک سکے، میں اس کو ہنسنے سے نہیں روک سکوں گا۔

    زبان صرف میری نہیں، سب کی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  14. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    آپ نجانے کیوں اس قدر ڈپریسڈ ہو رہے ہیں۔۔۔ غلط العوام اور غلط العام کی تعریف آپ مجھ سے بہتر جانتے ہیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  15. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اشرافیہ والی بات تو یہ بھی ہے!۔
     
  16. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ارے نہیں صاحب۔ کون ڈی پریس ہوتا ہے یہاں!
    بہت آداب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  17. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    تو کیا فرانسیسی زبان میں نئے الفاظ شامل کرنے کے لیے اہلِ عرب کی رائے مستند قرار دے دی جائے یا جاپانی زبان کے قواعد پنجابیوں سے بنوائے جائیں؟ اور اگر ایسا کرنے سے منع کیا جائے تو اشرافیہ و عوام کی بحث کھڑی کری جائے؟؟؟؟
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  18. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    خوش آمدید جناب منیر انور صاحب۔
    آپ کی رائے کا بھی منتظر ہوں۔
     
  19. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,858
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    میں نے تو از راہ تفنن کہا تھا، صاحب!
    ہم تو پنجابی ہیں، صاحب۔ اردو سے محبت کرتے ہیں بس!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  20. منیر انور

    منیر انور محفلین

    مراسلے:
    94
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بہت شکریہ محترم آسی صاحب ۔۔ میں اپنا نکتہ نظر پیش کئے دیتا ہوں ۔۔۔ لیکن پہلے غالب کی ایک اور غزل کے چند اشعار تبرکآ ملاحظہ کر لیجے ۔۔۔

    گئی وہ بات کہ ہو گفتگو تو کیونکر ہو
    کہے سے کچھ نہ ہوا پھر کہو تو کیونکر ہو

    ہمارے ذہن میں اس فکر کا ہے نام وصال
    کہ گر نہ ہو تو کہاں جائیں ، ہو تو کیونکر ہو

    تمہین کہو کہ گذارہ صنم پرستوں کا
    بتوں کی ہو اگر ایسی ہی خو تو کیونکر ہو

    الجھتے ہو تم اگر دیکھتے ہو آئینہ
    جو تم سے شہر میں ہوں ایک دو تو کیونکر ہو

    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    میرا مختصر نکتہ نظر بس اتنا ہے کہ غلطی ، غلطی ہے ۔۔ کوئی بھی کرے ۔۔۔ وہ غالب ہو ۔۔ میر ہو ۔۔۔ کہ داغ ہو ۔۔۔ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ۔۔۔ غلطی کو تجربہ کہہ کر چھپانا یا پھر انہیں اہل زبان ہونے کی رعایت دینا ۔۔ یا یہ کہ انہوں نے رعایت لی ہے ۔۔ اس کی مثال تو ایسے ہی ہے جیسے ہم اپنے کسی " حضرت " کی ہر بات کو درست ثابت کرنے پر تل جائیں ہر قیمت پر ۔۔۔۔
     
    • متفق متفق × 3
    • زبردست زبردست × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر