ترکی زبان و ادب سے متعلق سوالات

محمد شعیب نے 'تعلیم و تدریس' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 18, 2014

  1. محمدظہیر

    محمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,274
    آپ کی اردو پر فارسی غالب ہے :)
     
    • متفق متفق × 1
  2. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    569
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    اظہارِ تشکر کے لئے ترکی میں دو ترکیبیں کاربُردہ ہوتیں ہیں۔
    1)teşekkür ederim
    2)sağ olun
    کیا یہ دونوں جدا موقعوں پر استعمال ہوتیں ہیں یا اول الذکر فقط فارسی الاصل ہونے کی وجہ سے موخر الذکر کا متبادل ہے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    11,015
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    دونوں کے مابیں کوئی خاص فرق نہیں ہے۔ فقط چند جگہوں پر یہ لکھا نظر آیا ہے کہ 'ساغ اۏلون' عموماً اُس وقت استعمال ہوتا ہے جب گویندہ زیادہ شکرگزار ہوتا ہے یا اُس کی شکرگزاری صمیمی و مخلص ہوتی ہے۔ یا یہ کہ جب کوئی شخص آپ کے لیے کوئی ایسا کام کرتا ہے جس کا کرنا اُس شخص کے لیے لازم نہیں تھا، لیکن پھر بھی اُس نے مہربانی کرتے ہوئے آپ کے لیے وہ کام کیا ہو تو آپ اپنی منّت داری ظاہر کرنے کے لیے 'ساغ اۏلون' کہتے ہیں۔ اِس عبارت کا لفظی ترجمہ 'سلامت رہیے!' ہے، لیکن اب یہ 'شکریہ' کے معنی میں استعمال ہوتا ہے۔ ایک جگہ یہ بھی نظر آیا ہے کہ آشنا افراد یا دوستوں کے مابین اِس عبارت کا استعمال زیادہ ہوتا ہے۔
    'تشکّر ائدریم' کا لفظی ترجمہ 'میں تشکّر کرتا ہوں' ہے، اور یہ 'تشکّرلر' اور 'ساغ اۏلون' کے مقابلے میں زیادہ رسمی ہے۔
    لیکن آپ اِن میں سے کوئی سا بھی متبادل استعمال کر سکتے ہیں اور یہ تینوں ہی تشکّر ظاہر کرنے کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ زیادہ سراسیمہ ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔

    ذہن میں رہے کہ 'sağ' کا تلفظ استانبولی میں 'سا' جبکہ آذربائجانی میں 'ساغ' ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 3, 2017
  4. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    569
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ترکی زبان میں صوتی ہم آہنگی دو صورت میں مستعمل ہے:
    1)i-type
    2)e-type
    کیا یہ تمام تراکیب میں یاد رکھنا پڑتا ہے کہ کس جگہ اولیں صوتی ہم آہنگی کاربُردہ ہوگی اور کن جگہوں پر دوئمین صورت یا ان کا کوئی عمومی قاعدہ ہے؟
     
  5. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    11,015
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    چند لاحقوں میں مصوّتی ہم آہنگی جب کاربُردہ ہوتی ہے تو اُن میں a/e والی قسم استعمال ہوتی ہے، جبکہ دیگر لاحقوں میں i/ı/u/ü والی مصوّتی ہم آہنگی بروئے کار لائی جاتی ہے۔ یہ لاحقے کی نوعیت سے بستگی رکھتا ہے کہ دونوں قسموں میں سے کون سی مصوّتی ہم آہنگی استعمال ہو گی۔ لاحقوں کی دونوں قسموں کو یاد رکھنا بھی زیادہ مشکل نہیں ہے، کیونکہ دونوں قسموں میں استعمال ہونے والے مصوّت مختلف ہیں۔
    مثلاً:
    علامتِ جمع 'لر/لار' میں اوّل الذکر قسم استعمال ہوتی ہے: کؤپک (سگ)؛ کؤپک‌لر (سگ‌ها)؛ داغ (کوه)؛ داغ‌لار (کوه‌ها)
    جبکہ 'بے' کے معنی میں استعمال ہونے والے تُرکی لاحقے 'سیز/سېز/سۆز/سوز' میں ثانی الذکر قسم استعمال ہوتی ہے: لذّت‌سیز (بے لذّت)؛ تات‌سېز (بے مزہ)؛ ذوق‌سۆز (بے ذوق)؛ توزسوز (بے نمک)۔

    یہ بھی دیکھیے:
    Turkish Grammar Guide - Vowel Harmony
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    569
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    یہاں واژہ “باری“ میں یائے تنکیر کاربردہ ہوا ہے؟
    علاوہ ازیں نیلگوں الفاظ کے معنی تحریر کردیں
     
  7. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    11,015
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جی، 'باری' میں فارسی کا یائے تنکیر استعمال ہوا ہے۔ ویسے، یہ لفظ 'بارے' کی شکل میں اردو میں بھی استعمال ہوتا رہا ہے۔
    اِلقا ائده‌یدی = پھینک دیتا، می‌انداخت (شرطیہ عبارت کی جزا کے معنوں میں)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر