تحریک انصاف کی وزیرستان ریلی

محب علوی نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 7, 2012

  1. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    کوڈپنک کیا ہے؟
    میرا ذاتی خیال ہے کہ ان کی بات ان کے اپنے ملک میں نہیں سنی جاتی۔ ان کی اواز مین اسٹریم کی اواز نہیں لگتی ۔ ذرا تعارف تو کراوائیں
     
  2. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    میرا ذاتی خیال ہے کہ عمران کا کوئی نظریہ نہیں۔
    صرف خواب ہیں جو پاکستانی عوام کو خوشنما لگتے ہیں
    بات اگر نظریہ کی ہورہی ہے اچھی بات ہوگی اگر اپ واضح کردیں کہ عمران کا کیا نظریہ ہے پھر اس پر بات بھی کریں گے
     
  3. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    جانے کا کوئی فائدہ تو ہے
    صرف یہ کہنا کہ سی این این نے دکھایا ، اخبار میں خبر لگ گئی۔ کیا یہ کافی ہے
    مغرب میں اس سے عمران کے موقف کو کوئی زیادہ پذیرانی نہیں ملے گی
    عمران کا امن مارچ کرنا اسکی پارٹی کا حٖق ہے اور زیادہ ووٹز کے لیے کام کرنا بھی اسکی پارٹی کا حق ہے ۔ اسپر کوئی دو رائے نہیں
     
  4. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    اپکے اس مزاح کی کچھ سمجھ نہیں ائی
    میں نے کسی یہودی کی بات اس تھریڈ میں کہیں بھی نہیں کی ہے
     
  5. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    عمران انٹیلیجنس والوں نے نرغے میں ہے۔ امن کے حق میں اور ڈونز کا مخالف ساری پاکستانی عوام ہے لہذا سیدھی سادی پاکستان عوام عمران کے اس مارچ کی حمایت کرسکتی ہے۔ مگر اس مارچ سے نہ تو امن ہوگا نہ ڈرون حملہ رکے گا۔ امن جب ائے گا جب امریکہ خطے سے نکلے گا۔ ڈورون جب رکے گا جب پاکستانی ائرفورس اس کو گرائے گی۔
     
  6. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,422
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    خان صاحب
    عمران کا ایجنڈا کچھ بھی ہو ۔۔۔
    کیا عمران کے علاوہ کسی بھی سیاسی لیڈر میں اتنی ہمت و جرات کبھی نظر آئی ۔
    کہ وہ وزیرستان کی جانب رخ تو دور کی بات اس پر اک کلمہ بھی کہہ سکے ۔ ؟
    یہ جو " ڈرائنگ روم میں بیٹھا تھنک ٹینک " لفاظی کرتا ہے ۔ ان کے پاس صرف مفروضے ہوتے ہیں ۔
    اور یہ مفروضے ان کی جیب سے براہ راست منسلک ہوتے ہیں ۔
    آج انٹیلی جنس کے سر ڈال رہے ہیں عمران خان کو ۔۔۔۔۔
    کل کو یہ طالبان کا ہیرو ثابت فرمائیں گے عمران خان کو ۔ ۔۔
    اس مفاد پرست " تھنک ٹینک " ٹولے نے سوائے پاکستان کو بدنام کرنے اور ہر اس لیڈر کی ٹانگ کھینچنے کے علاوہ اور کیا ہی کیا ہے ۔ ؟
    ایوب خان سے لیکر بھٹو دور سے گزرتے ضیاالحق کو رگڑتے مشرف کو بدنام کرتے ہر اس سیاسی لیڈر کو انہوں نے چمچہ ثابت کرتے
    عوام کے ذہنوں میں شکوک ابھارے جو پاکستان کے ساتھ مخلص محسوس ہوئے ۔
    عمران خان نے اس " امن مارچ " سے یہ ثابت کر دیا ۔ کہ وہ اک بہادر سیاسی لیڈر ہے ۔
    اتنا عرصہ بزدل سیاسی لٹیروں کے پیچھے خوار ہوئے ہیں ۔ اس بار اک بہادر "لٹیرا ہی سہی " کوسردار بنا آزما لینے میں کیا حرج ۔۔۔۔؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    ظاہر ہے اپ کی مرضی ہے اپ کس کو فالو کرتے ہیں
    میرے خیال میں عمران اسی بزدل حکمرانوں کا ایک نیا تسلسل ہے۔ یہ پرانے گھوڑے پر نئی کاٹھی ہے۔ وہی ہے جو ایوب تھا، یحیی تھا، ضیا تھا، مشرف تھا۔ یہ اسی تسلسل کی کڑی ہے اور کچھ بھی نہیں
     
  8. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    کوڈ پنک کے بارے جنگ اخبار کے آن لائن ایڈیشن میں پڑھا تھا کہ یہ امریکی پالیسیوں اور جارحیت کے خلاف کام کرتا ہے اور پر امن احتجاج کرتا ہے۔ زیادہ تفصیل تو معلوم نہیں البتہ یہ لنک دیکھ لیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  9. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,422
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    میرے محترم بھائی
    کبھی یہ بھی سوچیئے گا کہ "ایوب ۔ یحیی ۔ ضیا ۔ مشرف " کیوں ہم پر مسلط رہے ۔۔۔۔۔۔۔
    عمران بزدل سیاسی لٹیرا ہے یا کہ روشن پاکستان کی آخری امید ۔۔۔۔۔
    اس کا فیصلہ وقت کرے گا ۔ فی الحال عمران اک سچا مخلص بہادر پاکستانی ثابت ہو رہا ہے ۔
    وقت کسی کو نہیں بخشتا جھوٹے نقاب بہت جلد اتار دیتا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    آئے میلا منا، ایشے نئیں تلتے۔۔۔ شو جا منے شو جا
    شبح اتھ تے فیڈر تے شاتھ مجے لینا میلا بچہ
     
  11. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    شکریہ
    میں ہر پرامن انسان کی کوششوں کی حمایت ہی کرسکتا ہوں
    ویسے یہ کوڈ پنک عورتوں کا گروپ ہے ۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے یہ لیسبینز کا گروپ ہے۔ یہ بھی ملاحظہ کیجیے
    یہ بھی
    بہرحال یہ ایک چھوٹا سا گروپ ہے جو امریکی عوام کی اکثریت کا عکاس نہیں
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  12. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    جنگ میں منصور آفاق کا کالم

    عمران خان پر الزامات...دیوار پہ دستک…منصور آفاق

    الیکشن جیسے جیسے قریب آنے لگے ہیں عمران خان کے خلاف میڈیا مہم ویسے ویسے تیز ہوتی جارہی ہے۔ خاص طور پر یہ ثابت کیا جا رہا ہے عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے۔ اس حوالے سے گزشتہ دنوں عرفان صدیقی کا کالم عجیب و غریب ہونے کی حد تک دلچسپ تھا۔ انہوں نے ارشاد عارف کا سہارا لیتے ہوئے عمران خان پر کچھ خودکُش نوعیت کے الزام لگائے شکر ہے کہ ان کے اپنے سوا اور کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ انہوں نے آخری وصیت کے طور پر یہ فیصلہ دیا کہ ”عمران خان کی انتخابی کامیابی کے امکانات معدوم ہوتے جارہے ہیں، شیریں مزاری کی ہجرت کے بعد اندازہ ہوا کہ نظریات اور اصولوں کا چمنستان بھی اجڑ رہا ہے“ اور میں مسلسل شیریں مزاری کی ہجرت کے متعلق سوچ رہا ہوں، میں نے قیام پاکستان کے وقت مسلمانوں کی ہجرت کے متعلق پڑھا تھا۔ تاریخ سے اور بھی بڑی بڑی ہجرتوں کا ذکر سنا مگر شیریں مزاری کی ہجرتِ عہد ساز کی عظیم المرتبہ اطلاع عرفان صدیقی ہی نے فراہم فرمائی ہے۔ بے شک یہ ہجرت بھی کئی میلوں پر مشتمل ہے۔ لاہور میں عمران خان کے گھر سے نواز شریف کے گھر تک پیدل نہیں جایا جا سکتا۔
    عرفان صدیقی نے عمران خان کو پہلا پتھر تنگ دل اور تنگ دست کہہ کر مارا۔ انہیں اس بات کا دکھ ہے کہ جب کوئی ان کے گھر جاتا ہے تو وہ چوہدری شجاعت کی طرح آنے والے کو یہ نہیں کہتے کہ ”روٹی شوٹی کھاکے جاویں“۔ مجھے لگتا ہے عرفان صدیقی تیز بھوک کے عالم میں کسی وقت عمران خان کے پاس تشریف لے گئے تھے اور وہاں صرف چائے کا ایک کپ اور دو بسکٹ ملے وگرنہ عمران خان کو چوہدری شجاعت سمجھنے کی توقع عرفان صدیقی جیسے سمجھ دار اور گھاک کالم نگارسے نہیں کی جا سکتی تھی اگرچہ تحریک انصاف سے میراکوئی تعلق نہیں لیکن میانوالی کا ضرور ہوں اور اسی ناطے عرفان صدیقی کی خدمت میں مودبانہ عرض گزار ہوں کہ اگر بات کھانے کی ہی ہے تو عمران خان کے نام پر اگلی تمام زندگی کا کھانا میری طرف کھا لیجئے گا، اللہ کا دیا بہت کچھ ہے۔
    عرفان صدیقی نے دوسرا پھول مارتے ہوئے اس بات کا بھی خیال نہیں رکھا کہ ساتھ گملا بھی پھینک رہے ہیں فرماتے ہیں کہ ان کے لہجے میں نرمی اور دلکشی نہیں ہے اور بقول اقبال میرِ کارواں میں دل نوازی، دلداری اور دلبری ہونی چاہئے۔ علامہ اقبال اپنے متذکرہ شعر کے استعمال پر یقینا قبر میں بھی چیخ پڑے ہوں گے۔ عرفان صدیقی کسی ماہر اقبالیات سے پوچھ لیں اس شعر میں اقبال نے جس خوئے دل نوازی کی بات کی ہے اس کا لہجے کی نرمی اور دلکشی سے کوئی تعلق نہیں۔ ویسے میرے نزدیک تو عمران خان سے زیادہ نرم اور دلکش لہجہ کسی اور سیاست دان کاہے ہی نہیں کیونکہ ان کی زبان سے جو بات نکلتی ہے وہ بقول اقبال ہزار خوف ہوں لیکن زباں ہے دل کی رفیق اور دل سے نکلی ہوئی بات سیدھی دل میں اترتی ہے۔ جہاں تک ان کے ذرا سے تلخ ہونے کی بات ہے تو اس عہد منافقت میں سچائی کی آواز تلخ نہ محسوس ہو تو کیا ہو۔
    ایک الزام انہوں نے یہ بھی لگایا کہ عمران خان نے سیاست میں بازاری زبان اور گالی گلوچ کو رواج دیا ہے۔ حیراں ہوں دل کو روؤں کہ پیٹیوں جگر کو میں، عمران خان تو وہ سیاست دان ہیں جو دوسرے تمام سیاست دانوں کے مقابلے انتہائی سلجھی ہوئی گفتگو کرتے ہیں۔ ان کی گفتگو ممکن ہے عرفان صدیقی کو اس لئے اچھی نہ لگتی ہو کہ وہ اسے رائے ونڈ کے چشموں سے دھو کر نہیں لاتے۔ جہاں تک بازاری زبان کی بات ہے توکہاں عمران خان اور کہاں امراؤ جان ادا کی زبان۔ صدیقی صاحب جانتے ہیں کہ پرانے زمانے کے نواب اپنے بچوں کو طوائفوں کے کوٹھوں پر زبان سیکھنے کیلئے بھیجا کرتے تھے۔
    عرفان صدیقی نے ایک الزام لگانے کا الزام بھی لگایا ہے کہ عمران خان تحقیق و تفتیش کئے بغیر الزامات لگاتے رہتے ہیں۔ میری سمجھ میں بالکل نہیں آ رہا کہ عرفان صدیقی نے کس آنکھوں والے کی دکان سے نئی عینک خریدی ہے، ان کے دیکھنے کا یہ انداز میرے لئے حیران کن ہے۔کیونکہ عمران خان نے تو ہمیشہ پورے ثبوت کے ساتھ بات کی ہے۔ بغیرثبوت کے الزام لگانے کا کام تو وہ احباب کرتے ہیں، جن کی مقبولیت کا گراف امریکی ادارے آئی آر آئی کو اونچا ہوتا ہوا نظر آ رہا ہے، میں اس معاملہ میں بھی حیرت زدہ ہوں کہ ابھی مئی 2012 ء میں اسی ادارے نے سروے کیا اور کہا کہ تحریک انصاف پاکستان کی سب سے پاپولر پارٹی ہے اورصرف چار مہینوں کے بعد انہوں نے نیا سروے نواز شریف کے حق میں جاری کر دیا ہے۔ سروے کرنے والے جانتے ہیں کہ سروے مہینوں اور سالوں میں ہوتے ہیں دنوں میں نہیں۔ عرفان صدیقی نے یہ بھی نہیں سوچا کہ ابھی تک اس کے پسندیدہ شرفاء نے عمران خان پر جتنے الزامات لگائے ہیں ان میں سے ایک بھی سچا ثابت نہیں ہوا۔
    انہوں نے ایک الزام یہ بھی لگایاکہ کل جماعتی کانفرنس میں وہ دوسروں لیڈروں سے گلے کیوں نہیں ملے۔ منافقت کا لبادہ کیوں نہیں اوڑھا جن کے بارے میں انہیں یقینِِ کامل ہے کہ یہ چور، ہیں ڈاکو ہیں، بھتہ خور ہیں، قاتل ہیں، منافق ہیں انہیں سامنے دیکھ کر انہیں گلے لگا کر انہی کی طرح منافق کیوں نہیں بن گئے۔
    ایک الزام یہ بھی لگایا گیا ہے کہ مہمان جس میز پر بیٹھ کر کھانا کھا رہے تھے، میزبان نے کھانا کھاتے ہوئے اس طرف پشت کر رکھی تھی، یہ کتنی غیر منطقی بات ہے اگر کچھ لوگ تین چار میزوں پر کھانا کھا رہے ہوں تو کچھ لوگوں کی کچھ لوگوں کی طرف پشت ہوتی ہی ہے موصوف نے نہیں یہ لکھا کہ عمران خان کی میز اور کتنے لوگ تھے، وہاں کتنی میزیں لگی ہوئی تھیں۔ اسے کہتے ہیں حقائق کو توڑ موڑ کر پیش کرنا عرفان صدیقی نے اپنے کالم کا اختتام علامہ اقبال کے اس شعر پر کیا ہے:
    ہجوم کیوں ہے زیادہ شراب خانے میں
    فقظ یہ بات کہ پیر مغاں ہے مردِ خلیق
    اس شعرسے انہوں نے مسلم لیگ نون کو شراب خانہ اور نواز شریف کو مرد خلیق ثابت کرنے کی کوشش ہے۔ مگرحیرت کی بات یہ ہے کہ عوام مسلسل خوئے دلنوازی اور خوش خلقی سے محروم عمران خان کی طرف دیکھ رہی ہے اور بھاگ بھاگ کرتحریکِ انصاف میں شامل ہو رہی ہے۔ تحریکِ انصاف کے ایک یا دو لوگوں کو توڑ کر یہ دعویٰ کرنا ہے کہ عمران خان کے برے رویئے کی وجہ سے لوگ تحریک چھوڑ گئے ہیں میرے نزدیک تو پیلے رنگ کی صحافت کے زمرے میں آتا ہے۔ دنیا جانتی ہے کہ ان لوگوں کو عمران خان کا برا رویہ اتنے برسوں بعد اس لئے نظر آیا ہے کہ کہیں اور سے زیادہ قیمت لگ گئی تھی لیکن یہ بھی طے ہے کہ انہیں قیمت کے قابل عمران خان نے ہی بنایا ہے۔
    کچھ تجزیہ نگار عمران خان کی مقبولیت میں کمی کی وجہ ان سیاست دانوں کو قرار دے رہے ہیں جواپنی پارٹیاں چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہوئے۔ میرے نزدیک ان میں دو اہم نام ہیں ایک جاوید ہاشمی ہیں جو مسلم لیگ ن کو چھوڑ کر آئے۔ لوگ کہتے ہیں کہ مسلم لیگ ن میں ان سے زیادہ قربانیاں دینے والی اور بے داغ کوئی شخصیت اور نہیں تھی۔ دوسرا نام شاہ محمود قریشی کا ہے میرے خیال میں شاہ محمود قریشی پیپلز پارٹی کے وہ واحد وزیر رہے ہیں جن پر اس دورِ حکومت میں کرپشن کا کوئی الزام تک سامنے نہیں آیا۔ پھر یہی لوگ اگر نواز شریف یا آصف زرداری کے ساتھ ہوں ان کی طاقت قرار دئیے جائیں اور تحریک انصاف میں آئے ہیں تو ان کی وجہ سے عمران خان کی مقبولیت کم ہونے لگے۔ سچ یہ ہے کہ تحریک انصاف عوامی مقبولیت میں کوئی کمی نہیں آئی۔ اس وقت اس کے خلاف میڈیا وار کا واحد مقصد صرف مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے ان اہم لوگوں کوروکنا ہے جو جانے کے لئے پر تول رہے ہیں۔

    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 2
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  13. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    عین ممکن ہے، لیکن اس بارے جیسا کہ میں نے اوپر بیان کیا، مجھے کوئی خاص معلومات نہیں :)
     
  14. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    آپ نے اس لیے اس بارے معلومات حاصل نہیں کیں کہ آپ کا ان کی ذاتی زندگیوں سے کوئی لینا دینا نہیں تھا لیکن سب آپ جیسے سادھو تو نہیں۔ دنیا نے تو ایسی ویب سائٹیں حفظ کر رکھی ہیں جہاں ایسی بلکہ ایسی ویسی "معلومات" ملتی ہیں۔ :)
     
    • زبردست زبردست × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  15. ساجد

    ساجد محفلین

    مراسلے:
    7,113
    موڈ:
    Question
    عمران ایک سیاستدان ہے اور بلا شبہ اس نے سیاست ہی کرنی ہے لیکن اس اس ریلی کے انعقاد سے اس نے اپنی سیاست کا رُخ صحیح سمت کی طرف کیا ہے۔ ایک ایسے خطرناک علاقے میں جا کر جلسہ کرنے کا اعلان کہ جہاں مقامی لوگ بھی محفوظ نہیں ہیں سیاست سے کہیں بڑھ کر ہے۔ اب وہ یہودی لابی کا ہے یا مغربی خیالات کا یہ باتیں اپنے موجودہ حکمرانوں کے لچھنوں کو دیکھ کر مضحکہ خیزلگتی ہیں اور میرا تو اس قسم کے دانشوارانہ ریمارکس سن کر "ہاسا" نکل جاتا ہے۔ نیٹ پر آج کل امریکی و مغربی میڈیا کا دورہ کر کے دیکھیں کہ اس ریلی سے ڈرون حملوں کے خلاف پاکستان کے عوامی موقف کی کس بھرپور طریقے سے وہاں کے ایوانوں میں گونج سنائی دی ہے نیز مغرب میں عوامی سطح پر ان ڈرون حملوں کے خلاف ایک زبردست آگاہی پیدا ہوئی ہے۔ میں نے پچھلے دو دن میں مغرب کے ہمہ قسم میڈیا اور ان کے عوامی فورمز پر اس حوالے سے جو باتیں عام ہوتی دیکھی ہیں وہ پاکستانی عوام کے موقف کی بھرپور ترجمان ہیں ۔
     
    • متفق متفق × 4
    • زبردست زبردست × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  16. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    بے کار کی باتیں ہیں۔ مغرب کا میڈیا اس بے مقصد مظاہرے سے محظوظ ہی ہوتا رہا ہے۔ عمران نے پاکستان کا موقف مزید کم زور کیا ہے۔ سیلم صآفی اس بارےمیں وہی بات کررہے ہیں جو ہم کہہ رہے ہیں۔ یہ دیکھیے
    ایک اور نقطہ نظر یہ ہے۔ یہ بات بہت اہم ہے کہ عمران اور اس کے حواری انتہائی گھٹیا زبان اپنے مخالفین کے بارے میں استمعال کرتے ہیں جس سے نہ صرف ان کی قابلیت بلکہ ذھنی سطح کا بھی اندازہ ہوتاہے۔ یہ لوگ اگے جاکر کیا نہ کریں گے کم ہے
     
  17. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    برخوردار یہ ویب سائٹ خود اس غیرمعروف تنظیم پنک کوڈ کی ہے
     
  18. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    میرے بچے، میرے منے، میرے لاڈلے، میرے چاند، اس سے فرق کیا پڑتا ہے کہ اپنی ذاتی زندگیوں میں ان کی سیکشول اورینٹیشن کیا ہے۔
     
  19. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    جناب محترم جن کو پڑتا ہے ان کو پتہ ہے
     
  20. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool

اس صفحے کی تشہیر