1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $420.00
    اعلان ختم کریں
  2. اردو محفل سالگرہ چہاردہم

    اردو محفل کی یوم تاسیس کی چودہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

اردو میں‌واحد سے جمع کرنے کے قوانین

دوست نے 'اردو لوکلائیزیشن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 15, 2008

  1. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    12,952
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    مجھے ابھی ابھی ایک ای میل ملی ہے جسے میں یہاں پیسٹ کررہا ہوں۔
    I found your names in the header of the Urdu translation of PoEdit.

    I lead an opensource software translation project called Decathlon, and we have a potential Urdu translator. However, in order to translate certain PO files, we need to know what the plural formula for Urdu is. Would you be able to tell me how many plural forms there are in Urdu?

    More information about plural forms:
    http://www.gnu.org/software/gettext/manual/html_node/Plural-forms.html

    About Decathlon:
    http://translate.sourceforge.net/wiki/decathlon/mainpage

    Our web-based translation system, Pootle:
    http://pootle.locamotion.org/

    Alternatively, could you tell me which of the languages at our Pootle server is so closely related to Urdu that it would likely have the same number of plurals?

    Thanks!

    Samuel Murray
    Decathlon project leader

    یہ صاحب اوپن سورس سافٹویرز کے ترجمے کے سلسلے میں کام کرتے ہیں اور نئی مترجم کمیونٹیز بنانے کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔ اگر اس میں موجود روابط کا جائزہ لے لیا جائے تو ان کا کام کلئیر ہوجائے گا۔ مجھ سے اور زیک سے انھوں نے رابطہ کیا ہے کہ اردو کے واحد سے جمع میں بدلنے والی قوانین بتائے جائیں۔ اس لیے میں دھاگہ شروع کررہا ہوں۔ پہلے ہم نے واحد سے جمع کے تمام طریقے ڈھونڈنے ہیں۔ اس کے بعد شاید ان کو فارمولے میں بدلنا ہے۔ اب آپ حضرات اپنا اردو کا علم یہاں‌ استعمال کریں تاکہ جلد از جلد یہ کام ہوسکے۔ بسم اللہ میں ہی کردیتا ہوں۔
    استعمال سے استعمالات
    جواب سے جوابات
    اس سے ایک قانون نکلا کہ واحد کے آخر میں‌"ات"‌شامل کردو۔
    کتاب سے کتابوں
    جراب سے جرابوں
    اس سے قانون نکلا کہ واحد کے آخر میں‌"وں"‌شامل کردو۔
    شجر سے اشجار
    فکر سے افکار
    اس سے قانون نکلا کہ واحد کے شروع میں‌ "ا"‌ اور آخری حرف سے پہلے بھی ایک "ا"‌ شامل کردو۔
    کتاب سے ہی کتابیں
    جراب سے جرابیں
    ایک اور سادہ قانون کہ واحد کے آخر میں "یں"‌ شامل کردو۔
    مزید قوانین بھی شامل کرتا ہوں فی الحال میری اردو مُک گئی ہے۔ میرے خیال سے ساتھ کچھ شرائط بھی لگانا ہونگی۔ کونسا واحد ہو تو کونسا قانون اس پر لاگو کیا جائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
  2. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,123
    پہلی بات تو یہ کہ
    اردو میں جمع کی دو قسمیں ہیں۔
    یا یوں کہیں کہ
    اردو میں جمع کی دو اقسام ہیں۔

    ایک تو جمع سالم جس میں واحد کا وزن جوں کا توں بنا رہتا ہے بس اس میں کچھ اضافہ کر دیا جاتا ہے مثلاً (قسم + یں) یا (قسم + وں) اس کے قوانین آسان اور مختصر ہیں۔

    دوسرا جمع مکسّر جس میں واحد کا وزن ٹوٹ جاتا ہے اس میں تبدیلیاں لفظ واحد کے درمیان میں ہوتی ہیں اور ساتھ ہی شروع اور اخیر میں بھی ہو سکتی ہیں۔ یہ تبدیلیاں عموماً حروف کا اضافہ ہی ہوتی ہیں مثلاً (ا + قس + ا + م) پر کبھی کبھار لفظ واحد سے کچھ حذف بھی کیا جاتا ہے مثلاً (کتب، رسل) اس کے اصول انتہائی پیچیدہ ہیں۔

    باقی باتیں زبان دانوں کے زمے :)

    واضح رہے کہ میں نے متن میں کچھ الفاظ کو جلی کر رکھا ہے جو کہ جمع ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    جناب بہت شکریہ اس قدر مفید سلسلہ شروع کرنے پر۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
  4. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    مرد کی جمع مرد رہے گا (مردود نہیں)، عورت کی جمع عورتیں۔ اسی طرح فقرے کی مناسبت سے عورتیں عورتوں میں بھی بدل سکتی ہیں جو رہے گا تو جمع ہی لیکن شکل بدل چکا ہوگا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  5. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    12,952
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    مردوں کیوں نہیں ہوسکتا پاء جی؟
    لو جی کچھ اور قاعدے۔
    قانون سے قوانین
    خاتون سے خواتین
    خان سے خوانین
    یعنی واحد کے پہلے "ا" کی جگہ "و" اور آخر میں‌ "ین"
    ابن سعید کی بات سے میرے ذہن میں آیا ہے کہ اس طرح قوانین نکالتے نکالتے تو موج ہوجائے گی۔ جبکہ یہ صرف ترجمہ کرنے کے کام کو خودکار کرنے کے لیے درکار ہیں۔ تو کیا اس کے لیے صرف جمع سالم ہی کو چلنے دیا جائے؟ چونکہ فائل سے فائلوں اور فائلیں‌ چلے گا۔ عمومًا عام فہم الفاظ ہی اس سلسلے میں درکار ہونگی۔ ہم کونسا اردو کا کوئی گرامر چیکر یا ٹیگر تشکیل دے رہے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    12,952
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    لو بھئی اللہ والیو ان صاحب کو اردو میں‌ واحد سے جمع کرنے کے قوانین نہیں صرف جمع کی شکلیں‌ درکار تھیں(صدقے ہماری انگریزی کے)‌۔ یعنی عربی کی طرح اس میں بھی واحد، تثنیہ اور جمع تو نہیں‌ہوتا۔ ایک واحد، دو تثنیہ اور دو سے زیادہ جمع یا جمع الجمع۔ ۔۔۔ ویسے تو اردو میں جمع الجمع ہوتے ہیں شاید (یا نہیں‌ہوتے؟) لیکن میں نے ان صاحب کو کہہ دیا پاء جی ایک واحد ہے اور دوسرا جمع۔ اور جمع ہر تعداد کے ساتھ لکھا جاسکتا ہے۔ :cool:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,123
    ہا ہا ہا ہا ہا

    یہ بھی خوب رہی :)

    ویسے یہ سلسلہ چلتے رہنا چاہئے ممکن ہے یوں ہی بلا سبب ڈبکی لگانے سے کوئی مچھلی ہی ہاتھ لگ جائے۔

    ہاں جمع الجمع پر یاد آیا کہ کچھ ایک ہیں جو در حقیقت عربی سے ہی ماخوذ ہیں مثلاً اخبارات، اقوام

    جمع پر اپنے ایک دوست کا بہت مزیدار واقعہ یاد آ گیا لیکن اسے کسی اور وقت کے لئے اٹھا رکھتا ہوں۔ :)
     
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,303
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    منصور عورت کا یہ استعمال یعنی معانی اردو میں ہیں۔ عربی میں اس کا مطلب ہے چھپائی جانے والی شے۔ اور اس کی جمع عورات ہے بمعنی چھپائی جانے والی اشیاء۔ اسی وجہ سے اس کی جمع فارسی عربی کے حساب سے نہیں بنتی،۔
    جمع کے قوانین فارسی اور عربی میں مختلف ہیں۔ فارسی الفاظ کی جمع فارسی طریقے سے بنائی جاتی ہے اور عربی کی عربی طریقے سے۔ ’ات‘ والی فارسی جمعیں ہیں۔ اور ’ین‘ والی عربی۔ خبر سے اخبار، قسم سے اقسام۔۔ یہ عربی اور فارسی ؎دونوں میں رائج ہیں۔
    یہ میں محض اپنی کم علمی کے بوتے پر بول رہا ہوں۔ پیشِ نظر کوئی کتاب نہیں ہے۔ بھائی وارث آتے ہی ہوں گے اپنا انسائکلو پیڈیا لے کر۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  9. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    مردوں ہو سکتا ہے لیکن یہ فقرے پر منحصر ہوگا، یعنی

    ہم مردوں کے کرنے کا کام ہے

    ہم مرد بیچارے کر بھی کیا سکتے ہیں؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,087
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    کچھ الفاظ واحد، جمع اور جمع الجمع بھی ہوتے ہیں، مثلاً :

    دوا، دوائیں اور ادویات
    خبر، اخبار، اخبارات
     
  11. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    اسی طرح گاؤں کی جمع گاؤں ہی رہے گی۔ گائے کی جمع گاؤں نہیں ہو سکتی اور گایوں کے استعمال کے لئے فقرے کی مناسبت ضروری ہے۔ کچھ پلے نہیں پڑی یہ بات
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,303
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    کسی اسم کے ساتھ جب ’کا‘ ’کو‘ کی، ’کے‘ ’سے وغیرہ کا استعمال ہوگا تب ہی ہندی طریقے سے جمع کی جاتی ہے۔
    کتابوں کو خریدو
    کتابوں سے حوالے دو
    لیکن
    کتابیں رکھ دو
    چنانچہ ہندی طریقے سے جمع میں ’وں‘ یا ’یں‘ استعمال کے مطابق لگتا ہے۔
    گاؤں کی جمع مفرد صورت میں گاؤں ہی ہوگی، لیکن
    ان گاؤوں میں سڑکیں نہیں ہیں۔۔۔ میں گاؤوں جمع ہوگی۔
    ہاں ایک بات کا خیال بعد میں آیا۔ عربی میں مؤنث اسموں کی جمع میں بھی ’ات‘ لگتی ہے۔ مومنات، سورۂ نور ہی پڑھ لیں بیسیوں مثالیں مل جائیں گی۔
    شمشاد اخبار اور اخبارات کی بات درست ہے۔ لیکن کچھثقہ حضرات اخبار کو درست نہیں مانتے کہ اخبار خود جمع ہے۔ لیکن دوا کی ہندی جمع دوائیں ہوگی، ادویات عربی طریقے کی جمع ہوگی۔
    اس سے یہ ثابت ہوا کہ جمعیں دونوں طریقے سے بنائی جا سکتی ہیں۔۔۔ ہندی طریقے سے استعمال کے مطابق۔ جیسے کتابیں/ کتابوں۔۔۔ ہندی
    کتب۔ فارسی/عربی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. چاند بابو

    چاند بابو محفلین

    مراسلے:
    1,378
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت "اوکھا" موضوع ہے "اوکھے" اوکھے سوالات ہو رہے ہیں ہم تو چلے۔
     
  14. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    127
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    جناب! کچھ الفاظ مبنی الاصل ہوتے ہیں جو کبھی نہیں بدلتے ۔ اس میں ایک گاؤں بھی ہے۔۔۔

    چھوٹا منھ بڑی بات
     

اس صفحے کی تشہیر