اب آدمی کچھ اور ہماری نظر میں ہے

سردار محمد نعیم نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 6, 2018

  1. سردار محمد نعیم

    سردار محمد نعیم محفلین

    مراسلے:
    1,917
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Aggressive
    اَب آدمی کچھ اور ہَماری نَظر میں ہے
    جَب سے سُنا ہے یار لِباسِ بَشر میں ہے

    اَپنا ہی جَلوہ ہے جو ہَماری نَظر میں ہے
    اَب غیر کون چشمِ حَقیقت نَگر میں ہے

    وہ گَنجِ حُسن ہے دِلِ وِیراں میں جَلوہ گَر
    فَضلِ خُدا سے دولتِ کونین گَھر میں ہے

    بَس اِک فَروغِ نَقشِ کَفِ پا کے فیض سے
    ہَر ذرہ آفتاب تِری رَہگذر میں ہے

    اللہ خیر میرے دِلِ بیقرار کی
    انداز یاس کا نِگہ نامہ بر میں ہے

    خود بینیوں کی آنکھ مِلی چشمِ شوق کو
    میری نَطر بھی آج تمہاری نَظر میں ہے

    بَننے سے پہلے ساغرِ مَے ٹُوٹ جاتے ہیں
    کیا محتسب کی خاک کفِ کُوزہ گَر میں ہے

    غُربت میں بھی خیالِ وَطن ساتھ ساتھ ہے
    یہ بھی نہ ہو تو کِس کا سَہارا سَفر میں ہے

    اے نُوح ! اپنی کشتئ عالم سے ہوشیار
    طُوفان گریہ آج مِری چشمِ تر میں ہے

    اِک مِیہماں سے دونوں گھر آباد ہیں مِرے
    دِل میں ہے تِیر تِیر کا پیکاں جِگر میں ہے

    حیران ہُوں کہ سَجدہ کَروں تو کِدھر کَروں
    کعبہ میں بھی وہی بُتِ کافر نَظر میں ہے

    ہَنستے ہیں میرے گِریۂ بے اِختیار پر
    یہ آپ کی اَدا لَبِ زخمِ جِگر میں ہے

    بیدم یہ جُستجو بھی عَجب ہے عَجب تَلاش
    نِکلے ہیں ڈھونڈنے کو اُسے ہَم جو گَھر میں ہے

    کلام حضرت بیدم شاہ وارثی رحمتہ اللہ علیہ​
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر