آن لائن ڈائری لکھیں!!!

پروفیسر شوکت اللہ شوکت نے 'متفرقات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 28, 2020

  1. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    16,894
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    علم کے شہر کے کے دروازے سے اعلان ہُوا۔۔۔ صدق یقین کے ساتھ سوئے رہنا اُس نماز سے کہیں بہتر ہے جس کے پڑھنے میں یقین شامل نہ ہو۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  2. ام عبدالوھاب

    ام عبدالوھاب محفلین

    مراسلے:
    2,096
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    توکل وہ راستہ ہے جس کے ذریعے 'آگ ٹھنڈی' کر دی جاتی ہے جو 'دریا' میں راستہ بنوا دیتا ہے جو بچھڑے ہوئےبیٹے کو باپ سے ملا دیتا ھے ،بچے سے گواہی دلوا سکتا ھے ۔
    جو شدید 'طوفانوں' میں 'کشتی ' پار لگا دیتا ہے جو 'پانی' پر 'گھوڑے' دوڑا دیتا ہے ،جوبغیر کسی مرد کے چھونے کےعورت کو ماں بنا سکتا ھے۔
    تو پھر کیا تم اپنے اس رب پر 'توکل' نہ کرو گے جو نا ممکن کو ممکن کرنے کی قدرت رکھتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  3. ام عبدالوھاب

    ام عبدالوھاب محفلین

    مراسلے:
    2,096
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    گورنر نجم الدین ایوب کافی عمر ہونے تک شادی سے انکار کرتا رہا ،
    ایک دن اس کے بھائی اسدالدین نے اس سے کہا : بھائی تم شادی کیوں نہیں کرتے ۔۔۔؟
    نجم الدین نے جواب دیا :
    میں کسی کو اپنے قابل نہیں سمجھتا.
    اسدالدین نے کہا :
    میں اپ کیلئے رشتہ مانگوں ؟
    نجم الدین نے کہا :
    کس کا ؟
    اسدالدین :
    ملک شاہ بنت سلطان بن مالک شاہ سلجوقی کی بیٹی کا یا وزیر الملک کی بیٹی کا ۔۔۔۔؟
    نجم الدین :
    وہ میرے لائق نہیں ،
    اسدالدین حیرانگی سے :
    پھر کون تیرے لائق ہوگی ؟
    نجم الدین نے جواب دیا :
    مجھے ایسی نیک بیوی چاہئے جو میرا ہاتھ پکڑکر مجھے جنت میں لےجائے اور اسی سے میرا ایک ایسا بیٹا پیدا ہو جس کی وہ بہترین تربیت کرے جو شہسوار ہو اور مسلمانوں کا قبلہ اول واپس لے ۔۔۔۔
    اسدالدین کو نجم الدین کی بات پسند نہ آئی اور انہوں نے کہا :
    ایسی تجھے کہاں ملے گی ؟
    نجم الدین نے کہا :
    نیت میں خلوص ہو تو اللّہ نصیب کرے گا ۔۔۔۔۔
    ایک دن نجم الدین مسجد میں تکریت کے ایک شیخ کے پاس بیٹھے ھوئے تھے ، اک لڑکی آئی اور پردے کے پیچھے سے ھی شیخ کو آواز دی ،
    شیخ نے لڑکی سے بات کرنے کیلئے نجم الدین سے معذرت کی ۔۔۔۔
    نجم الدین سنتا رہا شیخ لڑکی سے کیا کہہ رہا ہے ۔
    شیخ نے اس لڑکی سے کہا تم نے اس لڑکے کا رشتہ کیوں مسترد کر دیا جس کو میں بھیجا تھا ۔۔۔۔؟
    لڑکی :
    اے ہمارے شیخ اور مفتی وہ لڑکا واقعی خوبصورت اور رتبے والا تھا مگر میرے لائق نہیں تھا ۔
    شیخ :
    تم کیا چاہتی ہوں ؟
    لڑکی :
    شیخ مجھے ایک ایسا لڑکا چاہئے جو میرا ہاتھ پکڑ کر مجھے جنت میں لے جائے اور اس سے مجھے اللّہ اک ایسا بیٹا دے جو شہسوار ہو اور مسلمانوں کی قبلہ اول واپس لے ۔۔۔۔۔
    نجم الدین حیران رہ گیا کیونکہ جو وہ سوچتا تھا وہی یہ لڑکی بھی سوچتی تھی ۔۔۔۔
    نجم الدین جس نے حکمرانوں اور وزیروں کی بیٹیوں کے رشتے ٹھکرائے تھے شیخ سے کہا اس لڑکی سے میری شادی کروا دیں ۔۔۔۔۔
    شیخ :
    یہ محلے کی سب سے فقیر گھرانے کی لڑکی ہے ۔۔۔
    نجم الدین :
    میں یہی چاہتا ہوں :
    نجم الدین اس فقیر متقی لڑکی سے شادی کرلی اور اس سے وہ شہسوار پیدا ہوا جسے دنیا " صلاح الدین ایوبی " کے نام سے جانتی ہے ۔۔۔۔
    جنہوں نے مسلمانوں کے قبلہ اول بیت المقدس کو آزاد کروایا ۔۔۔۔۔
    " پھر دکھا دے اے تصور منظر وہ صبح شام تو
    دوڑ پیچھے کی طرف اے گردش ایام تو ۔۔۔۔۔۔..
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  4. ام عبدالوھاب

    ام عبدالوھاب محفلین

    مراسلے:
    2,096
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    دونوں کے درمیاں ایک گز اور ستر سال کا فاصلہ ہے
    مگر طبیعت اور مزاجوں میں دونوں یکساں ہیں ۔۔۔[​IMG]
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر