آزاد شاعری ۔۔۔؟؟؟

بافقیہ نے 'محفل چائے خانہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 23, 2019

  1. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    شکر ہے کہ باذوق افراد کا ایک جم غفیر اس سائٹ کے ذریعے حاصل ہوا ہے۔ تو کیوں نا یہ بحث کہ آزاد شاعری فی نفسہ مفید ہے یا مضر اور دوسرا سوال آزاد شاعری نے اردو کو فائدہ پہنچایا یا نقصان ؟
    تیسرا سوال : کیا آپ آزاد شاعری پسند کرتے ہیں؟

    اس کے علاوہ آزاد شاعری کے متعلق اہم نکات اور لطائف بھی ہوں تو ضرور شیئر کریں۔۔۔ شکریہ۔۔۔ والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    آزاد شاعری سے مراد اگر آزاد نظم ہے تو وہ نظم کی مقبول ترین اقسام میں سے ایک ہے۔ اور آزاد ہوتے ہوئے بھی پابند ہے۔
    اگر آپ کی مراد نثری شاعری سے ہے تو وہ اب تک متنازعہ ہے۔ البتہ محفل پر ایسے احباب موجود ہیں جو اس صنف کے حق میں ہی نہیں بلکہ اس صنف میں لکھ بھی رہے ہیں۔
    محفل پر باقاعدہ ایک زمرہ نثری شاعری کے لیے موجود ہے۔
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    ہاں جناب میں نے بھی دیکھا۔۔۔ بقول حسرت :

    شعر کی محفل میں نثری نظم جب چلنے لگی
    میں نے بھی رکھا "غزل" اپنے اک افسانے کا نام
     
    • زبردست زبردست × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  4. انس معین

    انس معین محفلین

    مراسلے:
    325
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    جہاں تک آزاد شاعری کی بات مجھے تو پسندہے مگر کچھ شعراء کی جیسے امجد اسلام امجد صاحب کی نظمیں . مگر اگر نثری نظم کی بات کی جائےتو ایسے محسوس ہوتا ہے کہ کوئی مضمون رک رک کرپڑھنا پڑ رہا ہے . میرے خیال میں یہ صرف عروض سے جان چھڑانے کا ایک بہانہ ہے .. ورنہ خیالات تو اس میں بھی شاعرانہ ہی ہوتے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,281
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    چائے خانے میں آزاد شاعری ۔بہت خوب ۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  6. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    چائے بھی آج کل کافی آزاد ہو گئی ہے۔
    گڑ والی چائے، الائچی والی چائے، سونف والی چائے، تندوری چائے، وغیرہ وغیرہ :)
    ایک جگہ پڑھا تڑکے والی چائے۔ اب اللہ ہی جانے کہ چائے میں کس چیز کا تڑکا دیا جا رہا تھا وہاں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 6
  7. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    شکریہ جناب! مسئلہ یہ ہے کہ انگریزی کے عروج نے کچھ افراد کو اس بات پر مجبور کردیا کہ اردو کو بھی تمام قیود و ضوابط سے بالکل آزاد کرلیں۔ اور مغربی تہذیب سے متاثر بہت سے ادباء و شعراء نے یہ تحریک شروع کردی۔۔۔ اور یوں اردو بھی ہر کس و ناکس کیلئے میدان کار بن گئی۔۔۔ اب ہر کوئی آتا ہے ہنر آزمانے کی کوشش کرتا ہے۔ حالانکہ اس نے کلاسیکی ادب کو چھوا تک نہیں۔۔۔
    اب آپ ہی بتائیں جو بنیاد سے ناواقف ہو ، وہ کس بنیاد پر اپنی شاعری کی بنیاد رکھے گا؟؟؟!!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. سید عاطف علی

    سید عاطف علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,281
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    میرا بس چلے تو ان عناصر کو دریف قافیہ وغیرہ کے قاعدے مان کر چائے کو بھی کسی عروضی زندان میں ڈال دوں ۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  9. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    بحور کی قید سے آزاد 'شاعری'کے بارے میں رائے بٹی ہوئی ہے تاہم اتنا ضرور ہے کہ انگریزی میں بلینک ورس اور فری ورس ہے جس کو ہماری دانست میں آزاد نظم اور 'نثری نظم' کہا جا سکتا ہے۔ یہ سوال ضرور ذہن میں پیدا ہوتا ہے کہ بحور اور قافیہ ردیف کی پابندی کے بغیر 'نظم'کیسے لکھی جا سکتی ہے تاہم اس کا جواب نثم یا نثری نظم لکھنے والے یہ دیتے ہیں کہ نثری نظم میں اندرونی آہنگ، لفظوں کی تکرار، شعری لہجہ اور وہ تمام لوازم موجود ہوتے ہیں جو کہ شاعری کی ذیل میں آتے ہیں تاہم اس میں صرف عروضی پیمانوں کا استعمال نہیں کیا جاتا ۔ گو کہ آزاد نظم میں تو اس کا اہتمام ہوتا ہے تاہم نثم یا نثری نظم میں ایسی کوئی قدغن نہیں۔ یہی وجہ ہے کہ نثری نظم اور نثر لطیف میں فرق کرنا کارِ دشوار ہے۔ اس کے علاوہ کچھ مغربی تحریکوں کا بھی اثر ہے جس کے باعث اردو میں نثری نظم کو فروغ حاصل ہوا۔ کلاسیکی ادب کی جہاں تک بات ہے تو پھر یہ بات بھی پیش نظر رکھیے کہ وقت کے ساتھ ساتھ کسی نہ کسی حد تک تغیر تو آتا ہی ہے۔ ہمارے معروف شاعر افتخار عارف کبھی فرماتے تھے کہ نثری نظم لکھنے والوں کی ادبی نماز جنازہ جائز نہیں اور اب فرماتے ہیں کہ انہوں نے اپنی رائے سے رجوع کر لیا ہے۔ سو، اس معاملے میں رائے بٹی ہوئی ہے ۔۔۔!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  10. عدیل عبد الباسط

    عدیل عبد الباسط محفلین

    مراسلے:
    146
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy
    آزاد نظم مدتوں سے پڑھتے چلے آرہے ہیں. یہ ادب کے بیش بہا کنوز کی امین ہے. اس میں موجود ترنم کو موزون طبائع بهی قبول کر لیتی ہیں. شعری ذوق رکھنے والوں کو یہ اپنی جانب کھینچتی ہے.
    کبھی افکار و جذبات امڈتے ہیں، مگر بحور کی پیچیدہ گلیاں انہیں راستہ دینے پر آمادہ نظر نہیں آتیں. ایسے میں اظہار خیال کے جذبات کو آزاد نظم اپنے نرم و گرم دامن میں سمیٹ لیتی ہے اور افکار و جذبات سے بھرا دل آسودگی پا لیتا یے.
    یہ خاص لمحات اور خاص کیفیات کی ضرورت ہے.

    البتہ بحور کے ساتھ ساتھ عروض سے بھی آزاد جملوں کو شاعری کہنے پر دل آمادہ نہیں ہوتا. ہر جملے کو شعر کا نام دینا ضروری بھی نہیں لگتا. چھوٹے چھوٹے جملوں کی مدد سے نثر کی خدمت کی نیت کر لی جائے تو اظہار خیال بھی ہوجائے، ادب کی ایک مسلمہ صنف کی خدمت بھی ہوجائے. شعر سے محبت رکھنے والی طبائع پر بھی گراں نہ گذرے.
    اپنے اندر موجود صلاحیتوں کو ہی اگر دل و جان سے تسلیم کر کے نکھار لیا جائے تو یہ بھی کافی ہو سکتا ہے. ضروری تو نہیں لگتا کہ ہر شخص ہر فن کا ماہر ہو.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  11. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,379
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    متفق۔ میرا بھی یہی نقطۂ نظر ہے۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  12. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    جی بالکل۔۔۔ مگر میرے کہنے کا مطلب یہ ہے کہ جب دل آزاد شاعری کی طرف لگ جاتا ہے تو وہ پھر دانستہ یا نادانستہ عروض و بحور اور ردیف و قافیہ سے خواہ مخواہ آزاد ہوجاتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. عدیل عبد الباسط

    عدیل عبد الباسط محفلین

    مراسلے:
    146
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy
    بجا فرمایا! کم از کم دردمندانِ ادب کو اتنی آزادی روا نہیں رکھنی چاہئے۔ آزاد نظم پر ہی اکتفا کرنا مناسب لگتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  14. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    22,395
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    باقفیہ صاحب!

    محفل میں خوش آمدید!

    اغلب گمان ہے کہ جناب شعر کہتے ہیں اور شاعری سے اُنس رکھتے ہیں۔ براہِ کرم اپنا تعارف کروائیے اور اپنا کلام بھی محفل میں شامل کیجے۔
     
    • متفق متفق × 1
  15. بافقیہ

    بافقیہ محفلین

    مراسلے:
    518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Volatile
    بہت نوازش۔۔۔
    جناب ! کیا عرض کروں ! اس مؤقر محفل میں اپنا تعارف ہو ایسی میری ہستی نہیں۔۔۔ شعر و شاعری سے بے انتہا شغف ہے اور ذوق بھی ہے اس سے انکار نہیں ، لیکن بندہ شعراء کی مبسوط فہرست سے عمدا خارج ہے، وجہ جو بھی ہو۔۔۔
    کلاسیکی ادب کا انتہائی شوقین، غالب و میر کا رسیا، اقبال کا دلدادہ، اور بعضے متقدمین کا مداح۔۔۔

    حسن بافقیہ نام اور ہندوستان کی مشہور دینی درسگاہ دارالعلوم ندوۃالعلماء سے کسب فیض کیا ہے۔۔۔ اسی لئے خود کو علامہ شبلی اور سید سلیمان ندوی کا شاگرد مانتا ہوں۔۔۔

    ادب سے وابستگی کیلئے یہی دو نام کافی ہوں گے۔۔۔ والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 2
  16. غالب میر

    غالب میر محفلین

    مراسلے:
    14
    متفق۔۔۔۔۔ میرے بچپن سے آج تک مجھے یہ صنف پسند نہیں آئی ۔۔۔۔ بلکہ آزاد نظم یا جو بھی ہے میں اسے پڑھتا ہی نہیں۔۔۔۔ اسے آپ میری کم علمی کہہ لیں اس کے ساتھ اپنا مزاج نہیں ملتا
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  17. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,884
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    آزاد نظم اور نثری نظم دو بالکل مختلف اصناف سخن ہیں۔
     
  18. غالب میر

    غالب میر محفلین

    مراسلے:
    14
    محترم میرے واسطے دونوں ہی نہیں ہیں ۔۔۔ نہ میں انکا ذوق رکھتا ہوں نہ شوق۔۔۔۔ ایسا میں سمجھتا ہوں۔۔۔ کسی کا بھی متفق ہونا ضروری نہیں۔۔۔۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  19. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,884
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    درست فرمایا آپ نے۔ ہمیں بھی اردو نثر سخت ناپسند ہے، خاص طور پر میر و غالب کی غزلیں! اردو نثر میں مومن کی غزلیں پھر بھی کچھ غنیمت ہیں لیکن میر و غالب کی غزلوں کی نثر تو واہیات ہے!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  20. غالب میر

    غالب میر محفلین

    مراسلے:
    14
    ادب کی یہی رنگا رنگی ہے، کسی کو کچھ بھاتا ہے کسی کو کچھ۔۔۔۔ انہی رنگوں سے یہ گلستاں سجتا ہے۔۔۔۔ اب باغ کا ہر پھول ہر کسی کو پسند آ جائے یہ تو ممکن ہی نہیں۔۔۔۔ بے نور چیزوں کے لئے بھی دیدہ ور پیدا ہوتے ہیں۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر