1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

’انقلابیوں‘ کو گھر جانے کی اجازت نہیں

امجد میانداد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 5, 2014

  1. امجد میانداد

    امجد میانداد محفلین

    مراسلے:
    4,970
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dead
    پاکستان عوامی تحریک کا ’انقلاب مارچ‘ طویل ہونے کی وجہ سے مبینہ طور پر کرائے پر لائے جانے والے افراد اب اپنے گھروں کو جانے کے منتظر ہیں لیکن اُن کا کہنا ہے کہ اُنھیں گھروں کو جانے کی اجازت نہیں دی جارہی۔ ایسے ہی سینکڑوں افراد میں بہاولپور کا رہائشی نوید بھی شامل ہے۔

    اس لڑکے کا نام تو کچھ اور ہے تاہم اُس کی سکیورٹی کے لیے اسے نوید کے ایک فرضی نام سے لکھا جا رہا ہے۔

    نوید کا کہنا تھا کہ وہ بہاولپور کے قریب ایک گاؤں ٹامے والی کا رہائشی ہے اور دسویں جماعت کا طالب علم ہے۔

    اُس لڑکے کا کہنا تھا کہ عوامی تحریک کے مقامی عہدیدار تنویر عباسی نے اُن کے گھر والوں کو بتایا کہ اُن کا بیٹا انقلاب مارچ میں شرکت کے لیے اسلام آباد جا رہا ہے اور وہ تین روز کے بعد واپس آجائے گا۔

    نوید کا کہنا تھا کہ عوامی تحریک کے مقامی عہدیداروں نے اُن کے گھر والوں کو چھ ہزار روپے بھی دیے جو اُنھوں نے بخوشی قبول کر لیے۔ اُس نے کہا کہ اس کے علاقے اور قریبی گاؤں سے 300 کے قریب زیر تعلیم نو عمر لڑکوں کو انہی شرائط پر اسلام آباد لایا گیا ہے۔

    اس لڑکے کا کہنا تھا کہ 20، 20 لڑکوں پر مشتمل بٹالین بنائی گئی ہیں اور ہر بٹالین کا انچارج روزانہ انقلاب مارچ کی انتظامیہ کو لڑکوں کی حاضری کے بارے میں آگاہ کرتا ہے۔

    نوید کا کہنا تھا کہ جو لڑکے پولیس کے ساتھ جھڑپوں میں زخمی ہوئے ہیں اُنھیں بھی اپنے گھروں کو جانے کی اجازت نہیں دی گئی بلکہ اُنھیں قریبی علاقوں میں ہی رکھا ہوا ہے۔

    اس لڑکے کے بقول اُنھیں 21 روز اسلام آباد میں ہوگئے ہیں اور جب وہ اپنے عہدیداروں سے کہتے ہیں کہ وہ اپنے گھروں کو واپس جانا چاہتے ہیں تو اُنھیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دینے کے علاوہ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ راولپنڈی اسلام آباد کے بس سٹینڈ پر اُن کے بندے کھڑے ہیں جو اُنھیں گھر جانے کی بجائے ’اگلے جہاں‘ پہنچا دیں گے اور اُن کے گھر والوں کو بتا دیں گے کہ وہ پولیس کے ساتھ ہونے والی جھڑپوں میں مارے گئے ہیں۔

    یاد رہے کہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے انقلاب مارچ شروع کرنے سے پہلے کہا تھا کہ جو اس مارچ سے واپس آئے تو اُسے مار دیا جائے تاہم اگلے روز اُن کا کہنا تھا کہ اُنھوں نے یہ بیان مذاق میں دیا تھا۔

    گوجرانوالہ کے نواحی علاقوں جہاں پر اکثر خواتین گھروں میں کام کرکے گُزارا کرتی ہیں وہاں سے بھی اطلاعات کے مطابق 100 کے قریب خواتین کو اس ’انقلاب مارچ‘ میں لایا گیا ہے اور اُن کے گھر والوں کو دس ہزار روپے مہینے کے حساب سے دیے گئے ہیں۔

    گوجرانوالہ کے ایک رہائشی محمد اسلم کے مطابق لوہیا والہ بائی پاس اور دیگر نواحی علاقوں میں گذشتہ ماہ لاؤڈ سپیکر پر اعلانات ہوئے جس میں خواتین کو انقلاب مارچ میں شرکت کرنے کی دعوت دی گئی اور کہا گیا کہ جن خواتین کے پاس شیر خوار یا دس سال سے کم عمر بچے ہیں اُنھیں بھی اپنے ساتھ لائیں تو اُنھیں تین سے پانچ ہزار روپے اضافی دیے جائیں گے۔

    پاکستان عوامی تحریک کے ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات عمر ریاض عباسی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ان خبروں کی تردید کی اور کہا کہ اس وقت انقلابی دھرنے میں جتنے بھی لوگ بیٹھے ہیں وہ اپنی مرضی سے بیٹھے ہیں اور اُنھیں نہ تو مجبور کیا گیا اور نہ ہی اُنھیں کوئی پیسے دیے گئے ہیں۔

    اُنھوں نے کہا کہ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ طاہرالقادری کے حکم پر آٹھ سو کے قریب ایسے مظاہرین اپنے گھروں کو واپس چلے گئے ہیں جن کے امتحانات ہیں یا پھر اُنھیں نوکری اور کاروبار کے مسائل ہیں۔

    انقلاب مارچ میں شریک شرکا سے متعلق وزارت داخلہ کو بھیجی جانے والی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس وقت شرکا کی تعداد چار سے لے کر پانچ ہزار تک ہے۔ اس رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ان شرکا میں ایسے افراد کی تعداد قابل ذکر ہے جو منہاج القران کے ملازم ہیں۔

    بی بی سی اردو
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • متفق متفق × 1
  2. گمنام زندگی

    گمنام زندگی محفلین

    مراسلے:
    1,307
    موڈ:
    Lurking
    تین تہائی مجمع کو انقلاب کا مطلب تو کجا ، لکھنا بھی نہیں آتا ہو گا۔
    افسوس، ذاتی مقاصد کے لئے سیڈیوس کرنے والوں پر
     
    • متفق متفق × 1
  3. mfdarvesh

    mfdarvesh محفلین

    مراسلے:
    6,524
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوب
    پتہ نہیں کیا ہورہا ہے، میری تو درخواست ہے کہ ان لوگوں پہ رحم کیا جائے، موسم یہاں بہت سخت ہو گیا ہے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. عظیم اللہ قریشی

    عظیم اللہ قریشی محفلین

    مراسلے:
    2,578
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  5. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,170
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    اگر آپ کسی خبر کا ربط دے رہیں تو پھر ضروری ہے کہ آپ عنوان بھی اصل دیں اور اپنا صادر کردہ فیصلہ یا اپنا اخذ کردہ نتیجہ یا اپنی قائم کردہ رائےاور وہ بھی دل آزار قسم کی ، عنوان میں دینے کی بجائے تبصر ے میں دیں۔میں نے عنوان اصل کے مطابق مدون کر دیا ہے۔
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. امجد میانداد

    امجد میانداد محفلین

    مراسلے:
    4,970
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dead
    میری یہی کوشش ہوتی ہے کہ اپنی رائے تھوپنے کے بجائے حقیقت کو پیش کر سکوں اور اپنی آراء کو حقیقت سمجھنے والوں کی مذمت کر سکوں۔ یہاں بھی میں نے کوشش تو یہی کی تھی پر بی بی سی کے ہاں ہوئی تبدیلی کا مجھے بھی آپ کی تنبیہہ پڑھنے کے بعد پتہ چلا۔ یہ رہا میری سچائی کا اور اس مراسلے کے عنوان کے ٹھیک ہونے کا ثبوت۔

    [​IMG]

    بی بی سی نے عنوان تو تبدیل کر دیا ہے پر افسوس کے ثبوت کے طور پر ابھی بھی وہی ہے اور لنک میں سابقہ عنوان جوں کا توں موجود ہے

    http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2014/09/140905_inqalabi_on_rent_tk.shtml
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  7. mfdarvesh

    mfdarvesh محفلین

    مراسلے:
    6,524
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بی بی سی پہ اب بھی موجود ہے، یہ دیکھیں:

    [​IMG]
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  8. mfdarvesh

    mfdarvesh محفلین

    مراسلے:
    6,524
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    ویسے اس کو پڑھ کی افسوس ہوا ہے، بی بی سی والے عموما خبر دیکھ کے ہی لگاتے ہیں
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. لئیق احمد

    لئیق احمد معطل

    مراسلے:
    12,179
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    کچھ دن پہلے ٹوٹر پر جیو کی صحافی نوشین یوسف نے بھی ایک خبر شئر کی تھی کہ تحریک انصاف والے کے پی سے 1000 روپے کے عوض لوگوں کو دھرنے پر لائے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  10. mfdarvesh

    mfdarvesh محفلین

    مراسلے:
    6,524
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بس اب یہ طے ہے کہ ڈوریاں کہیں اور سے ہی ہلائی جارہی ہیں
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  11. حسینی

    حسینی محفلین

    مراسلے:
    1,560
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    یہ بات بالکل غلط ہے۔۔۔۔ میں نے انقلاب اور آزادی مارچ اور دھرنے کو اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے۔۔۔ وہاں کوئی کسی پر جبر نہیں ہے۔۔۔
    طاہر القادری کے حوالے سے یہ بات سب کو معلوم ہے کہ ان کے لاکھوں مرید پاکستان کے اندر اور باہر ہیں جو اک اشارے پر ان کے لیے جان قربان کرنے پر تیار نظر آتے ہیں۔
    آپ نے بھی دیکھا ہوگا کہ جب وہ کہتے تھے کہ کسی پر کوئی جبر نہیں جس نے واپس جانا ہے چلے جائے تو مرد وزن زور زور سے رونے لگتے تھے۔۔۔ اور ہاتھ ہلا کر کہتے تھے ہم نے واپس نہیں جانا۔
    چند لوگ ہوں تو آپ کہہ سکتے ہیں کرایہ کے لوگ ہیں، پیسے دے کر لائے ہیں۔ لاکھوں نہیں تو ہزاروں مجمع ہے۔۔۔ بیس دن سے اوپر ہوگئے۔۔ راستے سارے کھلے ہیں۔۔ پھر بھی استقامت اور ان کا حوصلہ یقینا قابل دید ہے۔
     
    • متفق متفق × 2

اس صفحے کی تشہیر