جون ایلیا ہونے کا دھوکا ہی تھا

انتہا نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 7, 2017

  1. انتہا

    انتہا محفلین

    مراسلے:
    1,112
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    ہونے کا دھوکا ہی تھا
    جو کچھ تھا وہ تھا ہی تھا
    اب میں شاید تہہ میں ہوں
    پر وہ کیا دریا ہی تھا
    بُود مری ایسی بِکھری
    بس میں نے سوچا ہی تھا
    بھُولنے بیٹھا تھا میں اُسے
    چاند ابھی نِکلا ہی تھا
    ہم کو صنم نے خوار کیا
    ورنہ خدا اچھا ہی تھا
    کیسا ازل اور کیسا ابد
    جس دَم تھا لمحہ ہی تھا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    جون ایلیا کی سنجیدہ شاعری بھی مزاحیہ شاعری کا درجہ رکھتی ہے۔ کیا مزاحیہ غزل ہے۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • متفق متفق × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. انتہا

    انتہا محفلین

    مراسلے:
    1,112
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    اپنا اپنا ذوق نظر ہے فرخ بھائی
    میرے خیال سے اس جملے کو اس طرح ہونا چاہیے کہ
    ” جون ایلیا کی سنجیدہ شاعری کبھی کبھی مزاحیہ شاعری کا مزہ دیتی ہے۔“
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    جی درست فرمایا۔ اسی لیے میں نے اپنا خیال ظاہر کیا کیونکہ مجھے تو جون ایلیا کی تمام شاعری ہی مزاحیہ شاعری لگتی ہے۔ سوائے کوئی ایک آدھی غزل ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool

    یہ مزاحیہ ہے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  6. انتہا

    انتہا محفلین

    مراسلے:
    1,112
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    وہ ایک آدھی غزل پیش بھی تو کریں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. انتہا

    انتہا محفلین

    مراسلے:
    1,112
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    آپ کیوں ناراض ہوتے ہیں ہمت بھائی!
     
  8. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    اب بالکل یاد نہیں آ رہا کہ وہ کون سی غزل تھی۔ جو ایک دو غزلیں پسند تھیں وہ القلم فورم پر پوسٹ کی تھیں مگر افسوس وہ فورم ہی ختم ہو گیا۔ ڈھونڈوں گا اگر مل گئی تو پوسٹ کر دوں گا۔ مع آپ کے نام کے ٹیگ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    دفتر میں ہوں سن نہیں سکتا۔ لکھ کر بتائیے پھر ہی کوئی رائے دے سکوں گا۔
     
  10. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    میں قطعی ناراض نہیں
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  11. انتہا

    انتہا محفلین

    مراسلے:
    1,112
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Persnickety
    منتظر ہوں جناب!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  12. اکمل زیدی

    اکمل زیدی محفلین

    مراسلے:
    4,470
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    فرخ منظور صاحب ان ایک آدھ میں اک یہ تو نہیں ۔ ۔ ۔ ؟

    سینہ دہک رہا ہو تو کیا چُپ رہے کوئی
    کیوں چیخ چیخ کر نہ گلا چھیل لے کوئی

    ثابت ہُوا سکونِ دل و جان نہیں کہیں
    رشتوں میں ڈھونڈتا ہے تو ڈھونڈا کرے کوئی

    ترکِ تعلقات تو کوئی مسئلہ نہیں
    یہ تو وہ راستہ ہے کہ بس چل پڑے کوئی

    دیوار جانتا تھا جسے میں، وہ دھول تھی
    اب مجھ کو اعتماد کی دعوت نہ دے کوئی

    میں خود یہ چاہتا ہوں کہ حالات ہوں خراب
    میرے خلاف زہر اُگلتا پھرے کوئی

    اے شخص اب تو مجھ کو سبھی کچھ قبول ہے
    یہ بھی قبول ہے کہ تجھے چھین لے کوئی !!

    ہاں ٹھیک ہے میں اپنی اَنا کا مریض ہوں
    آخرمیرے مزاج میں کیوں دخل دے کوئی

    اک شخص کر رہا ہے ابھی تک وفا کا ذکر
    کاش اس زباں دراز کا منہ نوچ لے کوئی۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    جی نہیں۔ ان میں سے کوئی بھی نہیں۔ دراصل اس غزل میں جون کا روایتی انداز نہیں جھلکتا تھا ۔ کلاسیکی روایت سے جڑی تھی۔ اسی لیے شاید مجھے بہت پسند آئی تھی۔ افسوس بالکل ذہن سے محو ہو گئی۔ بہرحال میں اب خاص طور پر دوبارہ ڈھونڈنے کی کوشش کروں گا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. ابدال حسن

    ابدال حسن محفلین

    مراسلے:
    18
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    شاعر ہیں آپ یعنی کہ سستے لطیفہ گو
    زخموں کو دل سے روئیے سب کو ہنسائیے ۔۔۔
    جون ایلیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  15. شیزان

    شیزان لائبریرین

    مراسلے:
    6,469
    موڈ:
    Cool
    جون ایلیا جیسے شاعر صدیوں میں پیدا ہوتے ہیں۔ بےساختگی اور برجستگی تو ان پر جیسے ختم ہے

    کس سے اظہار ِ مدعا کیجئے
    آپ ملتے نہیں ہیں، کیا کیجئے
    -
    ہو نہ پایا یہ فیصلہ اب تک

    آپ کیجئے تو کیا کیا کیجئے
    -
    آپ تھے جس کے چارہ گر، وہ جواں
    سخت بیمار ہے ، دُعا کیجئے
    -
    ایک ہی فن تو ہم نے سیکھا ہے
    جس سے ملئے، اُسے خفا کیجئے
    -
    زندگی کا عجب معاملہ ہے
    ایک لمحے میں فیصلہ کیجئے
    -
    مجھ کو عادت ہے روٹھ جانے کی
    آپ مجھ کو منا لیا کیجئے
    -
    ملتے رہیئے اسی تپاک کے ساتھ
    بے وفائی کی انتہا کیجئے
    -
    مجھ سے کہتی تھیں وہ شراب آنکھیں
    آپ یہ زہر مت پیا کیجئے
    -
    ہے تقاضا مری طبعیت کا
    ہر کسی کو چراع پا کیجئے
    -
    رنگ ہر رنگ میں ہے داد طلب
    خون تھوکوں تو واہ واہ کیجئے
    -
    آج ہم کیا گلہ کریں اس سے
    گلہء تنگئ قبا کیجئے
    -
    جون ایلیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  16. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,665
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    کِس سے اِظہار ِ مُدَّعا کیجے
    آپ ملِتے نہیں ہیں، کیا کیجے

    ہو نہ پایا یہ فیصلہ اب تک
    اب کِیا کیجئے تو کیا کیجے

    آپ تھے جس کے چارہ گر، وہ جواں
    سخت بیمار ہے ، دُعا کیجے

    ایک ہی فن تو ہم نے سِیکھا ہے
    جس سے ملیے، اُسے خفا کیجے

    ہے تو بارے ہی عالَمِ اسباب
    بے سبب چیخنے لگا کیجے

    آج ہم کیا گِلہ کریں اُس سے؟
    گلۂ تنگیِ قبا کیجے

    نُطقِ حیوان پر گِراں ہے ابھی
    گفتگو کم سے کم کِیا کیجے

    حضرتِ زُلفِ غالیہ افشاں!
    نام اپنا صبا صبا کیجے

    زندگی کا مُعاملہ ہے عجب !
    ایک لمحے میں فیصلہ کیجے

    مجھ کو عادت ہے رُوٹھ جانے کی
    آپ مجھ کو منا لِیا کیجے

    ملِتے رہیئے اِسی تپاک کے ساتھ
    بے وفائی کی اِنتہا کیجے

    کوہکن کی ہے خُود کُشی خواہش
    شاہ بانو سے اِلتجا کیجے

    مجھ سے کہتی تھیں وہ شراب آنکھیں
    آپ یہ زہر مت پیا کیجے

    ہے تقاضا مِری طبِعیت کا
    ہر کسی کو چراغ پا کیجے

    رنگ ہر رنگ میں ہے داد طلب !
    خون تُھوکوں تو واہ واہ کیجے


    جون ایلیا

    :) :)
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 20, 2017

اس صفحے کی تشہیر