عدیم ہاشمی ہم بہرحال دل و جاں سے تمہارے ہوتے۔ عدیم ہاشمی

شیزان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 29, 2012

  1. شیزان

    شیزان لائبریرین

    مراسلے:
    6,469
    موڈ:
    Cool
    ہم بہرحال دل و جاں سے تمہارے ہوتے
    تم بھی اِک آدھ گھڑی کاش ہمارے ہوتے
    عکس پانی میں محبت کے اُتارے ہوتے
    ہم جو بیٹھے ہوئے ، دریا کے کنارے ہوتے
    جو مہ و سال گزارے ہیں بچھڑ کر ہم نے
    وہ مہ و سال اگر ساتھ گزارے ہوتے
    کیا ابھی بیچ میں دیوار کوئی باقی ہے
    کونسا غم ہے بھلا تم کو ہمارے ہوتے
    آپ تو آپ ہیں، خالق بھی ہمارا ہوتا
    ہم ضرُورت میں کِسی کو نہ پکارے ہوتے
    ساتھ احباب کے حاسد بھی ضرُوری ہیں عدیم
    ہم سخن اپنا سُناتے، جہاں سارے ہوتے
    نذرِ داغ
    عدیم ہاشمی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر