تیرہویں سالگرہ کیسے لگے یہ محفلین

سید عمران نے 'محفل کی سالگرہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 13, 2018

  1. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,898
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    آپ خود کو چھپا رستم ثابت کرنا چارہے تھے شاید۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  2. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    دس ہزاری ہونے سے عقلیں بٹنے لگتی ہیں کیا؟؟؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  3. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,133
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    آپ نے جو سفر نامہ کی تبصرہ والی لڑی میں فرمایا تھا، اس کی بنیاد پر آپ کی شروع کردہ تمام لڑیوں کے حقوق انھوں نے ضبط کر لیے ہیں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    وہ تو اوپر لانے کا کہا تھا۔۔۔
    انہوں نے اوپر ہی اوپر سے کام دکھادیا!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  5. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,898
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    ہمارے کام ہمیشہ انوکھے تو ہوتے ہیں ۔
     
    • متفق متفق × 2
  6. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    وہ کیسے؟؟؟
     
  7. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    آج ہم جس محفلین کی بابت قلم اٹھانے جارہے ہیں یا یوں کہیں کہ کی بورڈ کے بٹن دبا رہے ہیں تو سمجھیں اپنی شامت اعمال کو بیٹھے بٹھائے خود بخود دعوت دے رہے ہیں۔ ڈر ہے کہیں ان کی حد سے زیادہ سنجیدہ مزاجی ہمارے جیسے من چلے، آزاد منش اور بے راہ رو کو سیدھی راہ لگانے کے لیے راہِ ہدایت کا چابک استعمال نہ کر بیٹھے۔ کیوں کہ جہاں ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہونے کا موقع ہوتا ہے وہاں صاحب بہادر دبی دبی ہلکی سی مسکراہٹ کے ساتھ دوستانہ کا تمغہ دے کر ہاتھ جھاڑ لیتے ہیں۔ خدا جانے ان سے قہقہہ لگوانے کے لیے کون سی کوہ کنی کرنی پڑتی ہوگی۔ نہ ہوئے یہ شیریں اور نہ ہوا ان کے زمانے میں کوئی فرہاد، ورنہ داستانِ عشق و جور و ستم ایک بار پھر دہرائی جاتی۔

    اگرچہ ڈر کے مارے ان کا نام لینے کی ہمت تو نہیں ہورہی لیکن جب اوکھلی میں سر دیا تو موسلوں کا کیا ڈر۔ پھر محفلین کی حیرت اور استفسار کا سامنا الگ کرنا پڑے گا کہ ہمت ہے تو پاس کر ورنہ برداشت کر۔ اگر ہمت نہیں تھی تو اس تذکرہ کا ذکر ہی کیوں چھیڑا۔ تو صاحبو، کلیجہ تھام کے سنیے اور ہمارے حق میں دعا گو رہیے کیوں کہ امید واثق ہے کہ ہمارے بچاؤ کو آئے گا تو کوئی نہیں۔ اس لیے نہیں کہ ہم سے ہمدردی نہیں بلکہ اس لیے کہ اپنی جان سب کو پیاری ہوتی ہے۔

    بھائی صاحب کا نام لینے سے پہلے ان کی ایک اور صفت بیان کرتے چلیں، کیوں کہ کچھ پتا نہیں کہ ان کا نام لینے کے بعد ہم آگے کچھ بیان کرنے کے قابل رہیں گے یا نہیں۔ تو ان کی دوسری زبردست صفت ہے بہترین اور معیاری اردو لکھنا اور بوقت فرمائش اس کے بخیہ بخیہ ادھیڑ ڈالنا۔ اگر محفل کے مابدولت مستقبل میں بطیب خاطر کسی کو مقامِ جاں نشینی پر فائز کرنا گوارا کریں گے تو وہ سو فیصد یہی موصوف ہوں گے۔

    اب ہم چلتے ہیں حضرت اقدس کا اسم گرامی تحریر کرنے۔ مگر یہ معرکہ سر انجام دیتے ہی ہم پلک جھپکنے کے بھی کم عرصہ میں یہاں سے نو دو گیارہ ہونے والے ہیں۔آپ لوگ یہ نہ سمجھیں کہ ہم مارے ڈر کے بھاگیں گے بلکہ عصر کی نماز کا وقت ہوا چاہتا ہے اس لیے جارہے ہیں۔ آپ لوگ بڑے ہوگئے ہیں، اب خود سے بھی کچھ سمجھ جایا کریں۔

    تو ہمارے آج کے یہ ہر دل عزیز محفلین ہیں سید عاطف علی بھائی۔۔۔

    ارے بھاگ رے بھیا جان بچا کے بھاگ رے!!!
    :auto::auto::auto::auto::auto:
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 21, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    12,557
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    میں نے بوجھ لیا تھا کہ یہ جناب سید عاطف علی ہی ہو سکتے ہیں کہ جن کا ذکرخوف معذرت:) ذکر خیر ہو رہا ہے۔:)
    بہرحال حسب معمول بہت اچھی تحریر ہے ماشاءاللہ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    بھیا کے ساتھ ساتھ آپ بھی بہت ذہین ہوتی جارہی ہیں۔۔۔
    یہ سب ہماری صحبت نیک اثر کا اثر لگتا ہے!!!
    :D:D:D
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. سید عاطف علی

    سید عاطف علی محفلین

    مراسلے:
    7,485
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Cheerful
    کہتی ہےتجھ کو خلق خدا غائبانہ کیا ؟
    لڑکپن میں بہت سے مضامین لکھنے کو دیئے جاتے کہ گائے پر مضمون لکھو ، اونٹ پر مضمون لکھو گدھے پر مضمون لکھو وغیرہ اور خدا بخشے بخاری صاحب کو کتے تک پر مضمون رقم فرماگئے ہیں۔ :) سو آج ہمیں ہم پر مضمون پڑھ کر جی بہت بوقلموں اور گوں نگوں کیفیات کی کھچڑی سے دوچار ہوا ۔ کچھ الزامات بھی لگائے گئے وہ تو درکنار کہ الزام تو وزراء و صدور پر بھی لگتے رہے ہیں ہم کس کھیت کی مولی ہیں ۔ خیر کچھ ملاحظات سپرد قلم کرنا مناسب معلوم ہوا۔
    جس وقت یہ مراسلہ دیکھا تو عجب حال ہوا تھا کہ کہیں کوئی مددگار کروبی نمودار ہو اور فی الفور آئینہ دکھا دے کہ سر پر کہیں سینگ تو نہیں اگ آئے اور یہ سربستہ سرِّ اعظم افشا ہو کہ ایسا رعب و طنطنہ عزیز از انٹرنیٹ محفلی بھائیوں بہنوں کے معصوم دلوں پر کیوں کر طاری ہوا ؟ وقت بھی ایسا تھا کہ فرائض منصبی کی کرسی پر براجمان تھا ہر سو صاحبان کمپنی اور عاملان ڈیپارٹمنٹ اپنے اپنے پردہ ء سیمیں پر نظریں گاڑے کام میں ایسے مشغول تھے کہ گویا کسی خزانہ ء الماس و مروارید کے خفیہ نقشے سے طول و عرض اپنی یادداشتوں میں محفوظ کر رہے ہوں ۔ٹیلیکوم کمپنی کے نیٹورک آپریشن کا ماحول اتنا ہی مہیب ہوتا ہے ۔لیکن مجھے تو خیال اسی مذکورہ رعب اور دبدے کے سبب کا تھا ۔
    سو ایسے میں ایک خیال آیا کہ آج کی اس تکنیکی و سائنسی زندگی کی چکا چوند مصروفیتوں میں ہر ایک کی جیب میں جدید دور کا ایک ایسا طلسمی و سیمیائی شاہکار موجود ہے جو جام جمشید کی انفرادیت اور افادیت کو للکارتا اور شکست دیتا ہے ۔ یہ نہ صرف دنیا و مافیہا ،شرق و غرب ، اور خشک و تر کے مناظر چند لمحوں میں مٹھی بھر کے مالک سا منے لا حاضر کرتا ہے بلکہ بوقت ضرورت آئینہ اور عکاس بن کر سامنے کے مناظر بھی دقت نظر اور بے پایاں گہرائی کے ساتھ محفوط کرسکتا ہے۔ جیب سے نکال کر اس کے پردے پر اپنا آپ دیکھا تو خدائے بزرگ و برتر کا شکر بجا لایا کہ سب خیریت ہے لیکن حیرت دو چند ہوگئی کہ اگر ظاہری سراپا بھی ٹھیک ہے تو پھر آخر اس کا سبب و باعث کیا ہوا ؟ اسی فکر میں سربگریباں ناچار اپنے قلم کو تکنے لگا کہ اس میں یہ صمصام بے نیام اور نوک خنجر کے تیور آخر کہاں سے در آئے ؟ شاید یہ خدشات اس نوک اور تیز دھاری کا کرشمہ ہوں کہ محفلین کے گمان کو بوجھل کیا ۔
    جب اس پر بھی غور کیا تو یہ شک زائل ہوا کہ قلم میں بھی ایسی کوئی ایسا جوہر نہیں کہ سطوت و جلال کا نقش بٹھا سکے ۔ اب تو استعجاب اس درجے بڑھا کہ استغراق کی منزل تک پہنچا اور گویا گم ہو گیا ۔ اسی کیفیت میں توسن ہاے فکر تکان کے مارے آگے بڑھنے سے انکار کرنے لگے سو آن کی آن میں یہ خیال آسمانی بجلی کی طرح کونداکہ اے زیبائش گیتی کی بے ثباتی کے شکار! یہ سب کذب و مکر کےفریب کا سحر ہے ، نفس امارہ کا تعمیر کردہ محل ہے جسے ثبات نہیں ۔کبر و عُجب انسان کو شایاں نہیں یہ سراسر دھوکا ہے ،لمحے بھر کا مزہ اور عمر بھر کی شرمساری ہے ۔ کبریائی کی ردا اسی ذات بے ہمتا کو سزاوار ہے ۔ انسان کو وہی انکسار زیبا ہے جو ذات کبریا کی بارگاہ جلال سے خلعتِ تواضع کو اختیار کر کے مخلوق خداوند کی تعظیم و خدمت کے میدان میں زندگی کو پھیرنے سے حاصل ہو سو تو بھی محفلین کے سامنے خاکساری کا سچا سلام پیش کر اور عجز و تواضع سے خمیدہ کمر کے ساتھ کورنش بجا لا اور اس تکبر کے پیکر کو توڑ جو دو دن کی زندگی میں گھاٹے کا سودا کر بیٹھے اور پونجی لٹا کر کف افسوس مل کر پچھتاتا رہے ۔
    بہر کیف شکر گزاری کا ہدیہ محفلین کی خدمت میں پیش ہے جو محبت اور عزت افزائی کا مقابلہ کرنے سے تو قاصر ہے لیکن خلوص دل کے بیش بہا جذبات کا حامل ہے۔خیر اب اجازت آتش لکھنوی صاحب کے ان سنہرے کلمات کے ساتھ ۔
    سن تو سہی جہاں میں ہے تیرا فسانہ کیا ۔
    کہتی ہے تجھ کو خلق خدا غائبانہ کیا ۔
    خیر اندیش۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 4
  11. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,133
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اتنا ہی کہوں گا کہ اردو کو اچھے لکھاری سے محروم نہ کیجیے، لکھتے رہا کیجیے۔ :)
     
    • متفق متفق × 4
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  12. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    اس مراسلہ ہوش ربا کا مطالعہ کرنے کے بعد ہوش و حواس جو ذرا بحال ہوئے تو وجودِ خود کو بے خود پایا۔ بغور معائنہ قلبی و دماغی کرنے کے باوجود سببِ سلبِ حواس دریافت نہ ہوسکا۔ اس عالم حیرت و تعجب میں بے سدھ دنیائے عقل و خرد سے بے گانہ پڑے تھے کہ پاس موجود رفیقِ دیرینہ نے حالتِ زار کو کائنات سے بے زار دیکھ کر جھٹ تلوے سہلائے، لخلخہ سنگھایا اور خمیرہ چٹایا۔

    ان تدابیر آزمودہ کے آزمائے جانے کے بعد جب اوسان ذرا بحال ہوئے اور سانس میں سانس آیا تو مراسلہ ہٰذا کو دائرۂ عقل و فہم میں لانے کے لیے از سرِ نو بغور دیکھنا شروع کیا۔ مریض کو مرض کی طرف دوبارہ کمربستہ جاتے دیکھ کر رفیقِ دیرینہ نے جھٹ برقی پردۂ سیمیں کا بجلی سے رابطہ منقطع کردیا۔ بقول اس کے گر ہے جان و دل عزیز تو مطالعۂ مراسلہ ہذا سے احتیاط احوط ہے۔

    سو بلا مطالعہ ثانی بدستِ لاغر یہ مراسلہ تحریر کرنے کی جسارت کی جارہی ہے۔ امید ہے راقم تحریر کی حالتِ ضعف و ناتوانی پر نگاہِ ترس ڈالی جاوے گی اور قابل گرفت الفاظ کو درخور اعتنا نہ سمجھ کر درگزر سے کام لیا جاوے گا۔
    فقط
    والسلام!!!
    :hypnotized::hypnotized::hypnotized:
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 23, 2019
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  13. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,332
    جھنڈا:
    Pakistan
    • پر مزاح پر مزاح × 3
  14. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,431
    موڈ:
    Cheerful
    مابدولت فی الفور اس حالت غش سے بخیر وعافیت نکلنے کے لئے نبرد آزما ہیں جو مراسلہ مرقوم بالا المرسل عزیزی سید عمران ساکنہ اردو محفل کو ملاحظہ کرنے پر مابدولت پر طاری ہوا ہے ! (تفنن برطرف ) زبردست۔:):)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    12,557
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    دونوں سیدوں کے مراسلے "کلاسک ادباء" میں سے کسی کی تحریر لگتے ہیں۔
    بتائیں آپ نے کس کی نقل کی ہے؟:D
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  16. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    12,557
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    اور "مابدولت" کا اب غش کھانا تو بنتا ہے۔:)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر