1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

ناز خیالوی ''کہو سن لیں کہ شعر ان کو ہمارے کچھ نہیں کہتے" ناز خیالوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 13, 2017

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    کہو سن لیں کہ شعر ان کو ہمارے کچھ نہیں کہتے
    کنائے بے ضرر ہیں ، استعارے کچھ نہیں کہتے

    سب اندازے لگا لیتا ہے ان کی چال سے ورنہ
    مُنجمّ سے زبانی تو ستارے کچھ نہیں کہتے

    ڈبو دیتا ہے کیا کیا کشتیوں کو سامنے ان کے
    سمندر کو مگر بے حِس کنارے کچھ نہیں کہتے

    بس اتنا ہم نے دیکھا ہے محبت کی تجارت میں
    منافعے کچھ نہیں دیتے، خسارے کچھ نہیں کہتے

    ہمارے ہر عمل پر ہے کڑی ان کی نظر، پھر بھی
    غنیمت ہے ہمیں بچے ہمارے کچھ نہیں کہتے

    کرو مامور ہم کو آشیانوں کی حفاظت پر
    کہ ہم شعلہ بجانوں کو شرارے کچھ نہیں کہتے

    میں اُن کے نام کا کتبہ لکھے پھرتا ہوں ماتھے پر
    وہ اس پر بھی کسی سے میرے بارے کچھ نہیں کہتے

    کہاں کے منصف و عادل ،فقیہہ و محتسب کیسے
    انہیں کے ہیں یہ سارے اُن کو سارے کچھ نہیں کہتے

    ہنر ضبطِ نفس کا نازؔ آتا ہو جو انساں کو
    رگوں میں جلتے بلتے خوں کے دھارے کچھ نہیں کہتے
    ناز خیالوی
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 13, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. محمد عظیم الدین

    محمد عظیم الدین محفلین

    مراسلے:
    853
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    کیا کہنے ہیں، واہ بھئی واہ
     
    • زبردست زبردست × 1
  3. سائرہ تبسم

    سائرہ تبسم معطل

    مراسلے:
    36
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    لاجواب ۔خوب اشتراک ہے
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    شکریہ
    شکریہ نوازش
     

اس صفحے کی تشہیر