1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

کچھ ایسی رہ اختیار کرنا

سعید احمد سجاد نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 13, 2019 3:15 صبح

  1. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283
    محترم سر الف عین
    عظیم
    محمد ریحان قریشی
    اور دیگر احباب سے اصلاح کی درخواست ہے


    لہو سے میں نے جو باب لکھے۔
    بنامِ عہدِ بہار کرنا

    ملے جو ان کی گلی سے مجھکو
    نہ غم وہ سارے شمار کرنا

    میں خواہشوں کے بھنور سے نکلوں
    کچھ ایسی رہ اختیار کرنا

    مرا بھی اٹھنے کو ہے جنازہ
    لحد پہ کچھ انتظار کرنا

    تری تھی خواہش سو مر گیا ہوں
    کفن نہ اب تار تار کرنا
     
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,459
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    لہو سے میں نے جو باب لکھے۔
    بنامِ عہدِ بہار کرنا
    . کہیں" تم" ضمیر لانے کی ضرورت ہے ورنہ پھر فاعل "میں" کے ساتھ سمجھ میں نہیں آتا

    مرا بھی اٹھنے کو ہے جنازہ
    لحد پہ کچھ انتظار کرنا
    ... محبوب کس کی لحد پر موجود ہے؟ اس کا کچھ ذکر؟

    تری تھی خواہش سو مر گیا ہوں
    کفن نہ اب تار تار کرنا
    ... 'میرا کفن'؟ کوئی مجھ جیسا یوں بھی سمجھ سکتا ہے کہ محبوب بھی کفن پہنے ہے، شاید کبھی اس کا بھی فیشن چل جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283
    سر کوشش کرتا ہوں بہتر کرنے کی
     
  4. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283

    لہو سے تم پرجو باب لکھے۔
    بنامِ عہدِ بہار کرنا

    ملے جو ان کی گلی سے مجھکو
    نہ غم وہ سارے شمار کرنا

    میں خواہشوں کے بھنور سے نکلوں
    کچھ ایسی رہ اختیار کرنا

    مرا بھی اٹھنے کو ہے جنازہ
    مری لحد انتظار کرنا

    تری تھی خواہش سو مر گیا ہوں
    مجھےنہ اب داغدار کرنا

    سر نظر ثانی کی استدعا ہے
     
  5. محمد ریحان قریشی

    محمد ریحان قریشی محفلین

    مراسلے:
    1,875
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Devilish
    مکمل 'راہ' استعمال کیا جا سکتا ہے:
    کچھ ایسی راہ اختیار کرنا
     
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,459
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    کرنا ردیف امر ہے، یعنی کرو/کیجیے۔ یا بطور فعل؟ یہ واضح نہیں ہوتا شعروں سے
    لہو سے باب تم پر یا میں نے لکھے کی ضمیر کی بات نہیں کی تھی میں نے بلکہ اگر یہ امر ہے تو یوں کہا جائے
    تم ان کو نذرِ بہار کرنا
    پہلا مصرع تو پچھلا ہی بہتر تھا!
    آخری دونوں اشعار درست ہیں کہ صاف ہو گیا ہے کہ امر ہے، ایسا کرنے کو کہا جا رہا ہے ۔ لیکن شمار اور اختیار والے اشعار میں اب بھی واضح نہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  7. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,184
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    استاد محترم کا یہ نکتہ قابلِ غور ہے کہ ردیف کرنا کے سبب بعض اشعار میں واضح نہیں ہو رہا کہ یہ مشورہ کسے دیا جارہا ہے۔
     
  8. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283
    سر کوشش کرتا ہوں
     
  9. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283

    لہو سے میں نے جو باب لکھے۔
    تم ان کو نذرِ بہار کرنا

    ملے جو ان کی گلی سے مجھکو
    نہ تم وہ غم سب شمار کرنا

    میں خواہشوں کے بھنور سے نکلوں
    تم ایسی رہ اختیار کرنا

    مرا بھی اٹھنے کو ہے جنازہ
    مری لحد انتظار کرنا

    تمھاری خواہش تھی مر گیا ہوں
    مجھےنہ اب داغدار کرنا

    سر نظر ثانی کی استدعا ہے
     
  10. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,430
    نہ تم وہ غم سب شمار کرنا
    میں 'سب' کا معلوم نہیں پڑتا کہ تم سب لوگ یا سب غم کہا جا رہا ہے۔ ہلکی سی کنفیوژن ہے۔ اس مصرع کی پہلی صورت
    نہ غم وہ سارے شمار کرنا
    میرے خیال میں بہتر ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  11. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,459
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    درست ہو گئے ہیں اشعار، عظیم کے مشورے کے بعد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. سعید احمد سجاد

    سعید احمد سجاد محفلین

    مراسلے:
    283
    شکریہ سر
     

اس صفحے کی تشہیر