چھوٹا منہ اور بڑی بات

امن ایمان نے 'گپ شپ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 29, 2006

  1. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    ماوراء اس کی تو میں بھی ضمانت دیتا ہوں کہ محب کبھی غصے میں نہیں آئے، لیکن تم کیوں ان کو غصے میں دیکھنا چاہتی ہو؟

    اور ہاں تم بھی تو کبھی غصے میں نہیں آئی، پھر ایسا کیوں؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    12,178
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بڑی مشکل سے ماورا کو صحیح کیا ہے اور شمشاد ماورا کو تو اتنی بار غصہ میں دیکھا ہے بھول گئے آپ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    محب اس کا غصہ جعلی ہوتا ہے۔ کبھی اصلی نہیں آیا اسے۔ کوشش تو بہت کرتی ہے کہ اوروں کو ڈرائے لیکن آج تک اس سے کبھی کوئی بچہ بھی نہیں ڈرا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    12,178
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    معصوم بچے بھی نہیں ڈرتے کیا :lol:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    یار اب آپ سب پول سب کے سامنے تو نہ کھلواؤ۔ وہ تو کہتی ہے کہ میں معصوم بچوں سے بہت پیار کرتی ہوں لیکن وہ تو معصوم ہیں ناں وہ تو یہ بات نہیں جانتے ناں :wink:
     
  6. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    ماوراء کافی گہری ہوتی جا رہی ہیں :roll:
    قیصرانی
     
  7. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    گہری ہوتی جا رہی ہے؟ کیوں کیا اس کے پیروں کے نیچے سے زمین نکلتی جا رہی ہے؟
     
  8. ماوراء

    ماوراء محفلین

    مراسلے:
    16,399
    ارے، میں تو خود بہت معصوم ہوں۔ میں بھلا کیوں کسی پر غصہ کروں گی۔ شمشاد بھائی کی بات درست تھی کہ رات کو شاید کچھ زیادہ ہی گرمی تھی۔ :lol:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    12,178
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    گہری ہونے سے میں سمجھا کہ شاید جتنی زمین کے اوپر ہے اتنی زمیں بھی ہوتی جا رہی ہے :lol:
     
  10. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    واقعی چھوٹا منہ بڑی بات لگ رہا ہے یہ دھاگہ :lol:
    قیصرانی
     
  11. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    شکر ہے اوسلو میں گرمی کم ہو گئی نہیں تو ایک رکن کم ہو جانی تھی اس محفل کی۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  12. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    7,987
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    “ذرا سی بات“
    ”ذر
    ا سی بات افسانہ بن جاتی ہے”
    نے شروع کیا افسانے کا تعارف جناب آصف فرخی مرحوم
    ان کی چند اور تحریریں جو میں نے پڑھیں ، اتفاق سے وہ اتنی آسان نہ تھیں ، مجھ جیسے کے لیے تو اچھی خاصی مشکل تھیں ۔ یوں کہ اگر ذہن پر ذرا بھی زور دینا پڑے تو بھاری پتھر جان کے چھوڑ دینا بہتر لگتا ہے ۔
    خیر میری بات چھوڑئیے آصف فرخی صاحب کا لکھا افسانے کا تعارف دیکھیے ۔
    ذرا سی بات افسانہ بن جاتی ہے ۔ نہ جانے کہاں سے خوشی امنڈ آتی ہے ہے اور رگوں میں کبھی تیز کبھی دھیرے دھیرے بہنے لگتی ہے ، اداسی بال کھولے اچانک گھر آنگن میں اتر آتی ہے یا کسی انجانی حقیقت کا بھید کھل جاتا ہے اور یہ انکشاف بجلی کے کوندے کی طرح لپک جاتا ہے ۔ ایسے ہی لمحے افسانے کو جنم دیتے ہیں اور دیر تک ساتھ چلتے ہیں۔ زندگی ایسے لمحوں اور افسانوں سے عبارت ہے ۔ تاروں بھری رات ہو تو اس طرف جب بھی نظر پڑے ، ایسا لگتا ہے آسمان پر ہزاروں افسانے جگمگا رہے ہیں ۔ افسانہ ذرا سی دیر کا قصہ ہے ، لمحے بھر کی بات ۔ لیکن ان چند لمحوں میں جیسے پوری زندگی سما سکتی ہے ، صدیاں بیت جاتی ہیں اور اتنی مدت کے لیے وقت بھی ٹھہر جاتا ہے ۔ ازل سے ابد تک پھیلی ہوئی ایک کیفیت ایک جھلک دکھا جاتی ہے ۔ ستاروں کی طرح افسانوں کی یہ مہربان روشنی اپنی دنیا میں داخل ہونے کی دعوت دیتی ہے ۔اور جوں ہی آپ اس کے بلاوے پر چلے ، ایک قدم بھی اٹھایا تو زندگی ایک نٸی ترتیب کے ساتھ بیان ہونے لگتی ہے ۔
    یہ افسانے کی زندگی ہے جس کا خوبصورت اظہار بعض جگہ اتنے حسن اور مہارت اور مناسبت کے ساتھ ہوا ہے کہ کہ اردو افسانے میں پوی دنیا آباد نظر آنے لگتی ہے ۔
    ایسی دنیا جو اپنی دریافت کے لیے افسانوں کے مطالعے کی مرہونِ منت ہے ۔

    یہ بارہ سطروں کا ایک( پہلا) پیرا گراف ہے دو پیراگراف اور ہیں ایک سولہ سطروں کا اور ایک نو سطروں کا ۔
    یہ آصف فرخی کے اندازِ بیان کا مکمل تعارف نہیں ۔
    وہ ایک کثیرالمطالعہ شخص تھے پیشے کے لحاظ سے ایلوپیتھک ڈاکٹر تھے ، دستِ شفا کے بارے میں وہ بتا سکتے ہیں جن کا انہوں نے علاج کیا ہو ۔
    ادب ( عالمی ادب ) کے نبض شناس ان کے جیسے شاید ہی چند اور ہوں ۔

    مختلف مضامین کے لیے مناسب اسلوب اختیار کرتے ۔
    جیسے کہ سنا ہے عشق اور مشک نہیں چھپتے ، ایسے ہی ان کا علم ان کی تحریروں سے عیاں ہو تا ہے ۔
    “ ایسے شروع کیا افسانے کا تعارف جناب آصف فرخی مرحوم نے ۔
    ان کی چند اور تحریریں جو میں نے پڑھیں ، اتفاق سے وہ اتنی آسان نہ تھیں ، مجھ جیسے کے لیے تو اچھی خاصی مشکل تھیں ۔ یوں کہ اگر ذہن پر ذرا بھی زور دینا پڑے تو بھاری پتھر جان کے چھوڑ دینا بہتر لگتا ہے ۔
    خیر میری بات چھوڑیئے آصف فرخی صاحب کا لکھا افسانے کا تعارف دیکھیے ۔
    ذرا سی بات افسانہ بن جاتی ہے ۔ نہ جانے کہاں سے خوشی امنڈ آتی ہے ہے اور رگوں میں کبھی تیز کبھی دھیرے دھیرے بہنے لگتی ہے ، اداسی بال کھولے اچانک گھر آنگن میں اتر آتی ہے یا کسی انجانی حقیقت کا بھید کھل جاتا ہے اور یہ انکشاف بجلی کے کوندے کی طرح لپک جاتا ہے ۔ ایسے ہی لمحے افسانے کو جنم دیتے ہیں اور دیر تک ساتھ چلتے ہیں۔ زندگی ایسے لمحوں اور افسانوں سے عبارت ہے ۔ تاروں بھری رات ہو تو اس طرف جب بھی نظر پڑے ، ایسا لگتا ہے آسمان پر ہزاروں افسانے جگمگا رہے ہیں ۔ افسانہ ذرا سی دیر کا قصہ ہے ، لمحے بھر کی بات ۔ لیکن ان چند لمحوں میں جیسے پوری زندگی سما سکتی ہے ، صدیاں بیت جاتی ہیں اور اتنی مدت کے لیے وقت بھی ٹھہر جاتا ہے ۔ ازل سے ابد تک پھیلی ہوئی ایک کیفیت ایک جھلک دکھا جاتی ہے ۔ ستاروں کی طرح افسانوں کی یہ مہربان روشنی اپنی دنیا میں داخل ہونے کی دعوت دیتی ہے ۔اور جوں ہی آپ اس کے بلاوے پر چلے ، ایک قدم بھی اٹھایا تو زندگی ایک نٸی ترتیب کے ساتھ بیان ہونے لگتی ہے ۔
    یہ افسانے کی زندگی ہے جس کا خوبصورت اظہار بعض جگہ اتنے حسن اور مہارت اور مناسبت کے ساتھ ہوا ہے کہ کہ اردو افسانے میں پوی دنیا آباد نظر آنے لگتی ہے ۔
    ایسی دنیا جو اپنی دریافت کے لیے افسانوں کے مطالعے کی مرہونِ منت ہے ۔

    یہ بارہ سطروں کا ایک( پہلا) پیرا گراف ہے دو پیراگراف اور ہیں ایک سولہ سطروں کا اور ایک نو سطروں کا ۔
    یہ آصف فرخی کے اندازِ بیان کا مکمل تعارف نہیں ۔
    وہ ایک کثیرالمطالعہ شخص تھے پیشے کے لحاظ سے ایلوپیتھک ڈاکٹر تھے ، دستِ شفا کے بارے میں وہ بتا سکتے ہیں جن کا انہوں نے علاج کیا ہو ۔
    ادب ( عالمی ادب ) کے نبض شناس ان کے جیسے شاید ہی چند اور ہوں ۔

    مختلف مضامین کے لیے مناسب اسلوب اختیار کرتے ۔
    جیسے کہ سنا ہے عشق اور مشک نہیں چھپتے ، ایسے ہی ان کا علم ان کی تحریروں سے عیاں ہو تا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    واہ واہ
    آپی یہ 14 سال کے بعد آپ کو کیا سوجھی کہ اس لڑی کو اوپر لے آئیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  14. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    7,987
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    آپ کی تمام پرُانی لڑیاں لاجواب ہیں شمشاد میاں !!!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    205,189
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    قدر افزائی کا شکریہ سیما آپی۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  16. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    7,987
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    اور لکھنے والا بھی بےمثال اللّہ سلامت رکھے آمین
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر