چلتے رہے تو کون سا اپنا کمال تھا ::: شبنم شکیل

فرقان احمد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 4, 2018

  1. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    چلتے رہے تو کون سا اپنا کمال تھا
    یہ وہ سفر تھا جس میں ٹھہرنا محال تھا

    اک دوسرے کا قرب ہوا خوف میں نصیب
    اب شہر میں ہر اک کو ہر اک کا خیال تھا

    رہتی تھی اس میں آٹھ پہر اک چہل پہل
    رونق میں دل کا شہر کبھی بے مثال تھا !

    میں خود میں گم تھی اور مجھے اپنی خبر نہ تھی
    دیکھا جو آئینہ تو عجب میرا حال تھا ۔۔۔!

    اک سایہ میرے ساتھ جو چلتا تھا رات دن
    مجھ سے بھی بڑھ کے اُس کو تو میرا خیال تھا

    غم کا حصول امرِ اضافی ہے زیست میں
    یہ جاننا مرے لیے وجہِ ملال تھا ۔۔۔!

    آخر شکستِ دل میرا اعزاز بن گئی!
    باعث مرے عروج کا میرا زوال تھا​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,128
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    خوبصورت غزل!
    بہترین شعر!

    عمدہ انتخاب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,128
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    شبنم شکیل غالباً شاعرہ ہیں۔

    دراصل شبنم رومانی قسم کے لوگ اچھے بھلے بندے کو تذبذب میں ڈال دیتے ہیں۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  4. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    شبنم شکیل معروف نقاد سید عابد علی عابد کی صاحب زادی تھیں۔ مزید تفصیل یہاں
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,128
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    "تھیں" پڑھ کر افسوس ہوا۔

    انا للہ وانا الیہ راجعون!
     
    • متفق متفق × 1
  6. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,128
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    ویسے شبنم شکیل سے واقف تھا اور یہ بات ازراہِ مذاق کہی تھی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر