تبسم پھول تو ہیں پھول کانٹوں سے سنور جائے بہار ۔ صوفی تبسم

فرخ منظور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 22, 2017

  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,832
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    پھول تو ہیں پھول کانٹوں سے سنور جائے بہار
    اب کے آئے تو ہر اِک شے میں اتر جائے بہار

    اہتمامَ ہاو ہُو کر پر کہیں ایسا نہ ہو
    صحنِ گلشن سے دبے پاؤں گزر جائے بہار

    گُل نہیں ہنستے تو کانٹوں سے لپٹ کر روئیے
    کچھ تو ہو رنگَ چمن، کچھ تو نکھر جائے بہار

    ہر روش پر اِک نئے دورِ خزاں کی الجھنیں
    اب تمہیں کہہ دو چمن والو کدھر جائے بہار

    اس نے دیکھے ہیں ابھی آغازِ گُل کے رنگ روپ
    کچھ تو انجامِ چمن بھی دیکھ کر جائے بہار

    (صوفی تبسم)
     

اس صفحے کی تشہیر