1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $420.00
    اعلان ختم کریں
  2. اردو محفل سالگرہ چہاردہم

    اردو محفل کی یوم تاسیس کی چودہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

پنجاب بک بورڈ کی کتاب میں عقیدہ ختم نبوت کے الفاظ حذف کرنے پر مقدمہ درج

جاسم محمد نے 'تعلیم و تدریس' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 11, 2019

  1. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,135
    جھنڈا:
    Pakistan
    غیر مسلموں سے مشاورت اسلامی احکامات کے سلسلے میں نہیں کی جانی تھی، ان کے اپنے مذہب کے بارے میں کی جانی تھی!!!

     
  2. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,135
    جھنڈا:
    Pakistan
    یہ ایسا ہی اسلامی نظام ہے۔۔۔
    اس کے ماننے والے مسلمان۔۔۔
    اور نہ ماننے والے غیر مسلم کہلاتے ہیں۔۔۔
    کیا اسرائیل میں کوئی مسلمان وزیر اعظم بن سکتا ہے؟؟؟
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  3. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,135
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہم نے ثبوت تحریک کے وقت کا مانگا ہے۔۔۔
    پاکستان بننے کے بعد کا نہیں!!!
     
    • متفق متفق × 1
  4. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    104
    موڈ:
    Breezy
    محترم قائد اعظم لیڈر تھے شارح شریعت نہیں تھے کہ وہ بتاتے کہ اسلامی ریاست میں کون وزیراعظم بن سکتا ہے اور کون نہیں ۔اس کیلئے ہمارے پاس رسول اللہﷺ اور خلفائے راشدینؓ کا طرز عمل کافی ہے۔
     
    • متفق متفق × 3
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    مسلم اکثریت اس لئے غیر محفوظ ہے کیونکہ قرار داد مقاصد کے مطابق ملک کی اصل حاکمیت صرف اور صرف اللہ کے پا س ہے۔ منتخب نمائندگان اللہ تعالیٰ کے اس حق حکمرانی کو"امانتاً" کچھ عرصہ کیلئے مستعار لیتے ہیں اور پھر واپس لوٹا دیتے ہیں۔
    ایک طرف آپ سول بالا دستی کی بات کرتے ہیں۔ تو دوسری طرف اسٹیبلشمنٹ کے اقتدار پر مستقل قبضہ کا رونا بھی روتے بھی ہیں۔
    جبکہ مغربی جمہوری ممالک میں ایسا نہیں ہے۔ وہاں اقتدار کا اصل سرچشمہ صرف اور صرف عوام یعنی عوامی نمائندگان ہیں۔ اللہ یا خدا کی حاکمیت کا کوئی تصور موجود نہیں۔ اور اسٹیبلشمنٹ مکمل یا جزوی طور پر سول حکمران کے زیر کمان ہوتی ہے۔
    ادھر پاکستان میں سول بالا دستی کا یہ حال ہے کہ کوئی قانون اس وقت تک پاس نہیں ہو سکتا جب تک وہ علما کرام کی اسلامی نظریاتی کونسل سے پاس ہو کر ایوان میں واپس نہ آئے۔
    اگر نظام کو بدلنا ہے تو پہلے آئین (قرار داد مقاصد) کو ٹھیک کرنا پڑے گا۔ جہاں سے ساری خرابی شروع ہوئی تھی۔
     
    • غمناک غمناک × 1
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    یہی تو اصل المیہ ہے۔
     
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    یہاں ملک و معاشرہ چلانے سے متعلق اقلیتوں سے مشاورت کی بات ہو رہی ہے۔
     
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    اسرائیل کا معلوم نہیں البتہ مغربی جمہوری ممالک کے آئین و قانون میں ایسی کوئی مذہبی قید موجود نہیں ہے۔
     
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    اوپر متن قرار داد پاکستان 1940 کا پیش کیا گیا ہے جس کے بعد تحریک پاکستان کا باقاعدہ آغاز ہوا تھا۔
     
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    پہلے تو اس اندھے یقین کو دور کر لیں کہ قائد اعظم ملک میں شریعت کا نفاذ چاہتے تھے۔ اگر ایسا ہوتا تو ملک کے پہلے وزیر قانون نچلی ذات کے ہندو کی بجائے کسی جید عالم دین کو بناتے۔
     
  11. شیخ محمد نواز

    شیخ محمد نواز محفلین

    مراسلے:
    239
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Daring
    اصل المیہ یہ نہیں ہے بلکہ اصل المیہ ہی یہی ہے کہ ہم اپنے مطلب کی بات پسند کرتے ہیں چاہے سامنے والا کتنا ہی سچ کیوں نہ بول رہا ہو۔ وہاں بھی قائد اعظم اسلامی نظام کا بول بول کر دنیائے فانی سے رخصت ہو گئے مگر جنہیں مادر پدر آزادی چاہئیے تھی وہ آج بھی ان سے منسوب وہ باتیں کہہ جاتے ہیں کہ آج اگر وہ زندہ ہوتے تو شاید "ملاؤں" سے بھی زیادہ سختی برتتے۔
     
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    اگر آج بھی کوئی عالم دین قائد اعظم جیسی مغربی اور آزاد طرز زندگی گزارنے والا مل جائے تو ہم اس کی بیعت کر لیں گے۔
    [​IMG]
    [​IMG]
     
  13. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,453
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    پاکستان میں تو اقلیت کی مذہبی، ثقافتی اور سیاسی مفادات محفوظ ہیں لیکن مسلمانوں کے نہیں۔

    اس سے پتا چلتا ہے کہ آپ کا سارا مسئلہ اسلام بیزاری ہے۔ جو انتہائی افسوس ناک ہے۔
    اگر آپ کے نزدیک اسلام میں اقلیتوں کا تحفظ نہیں تو اس کی وضاحت کریں۔
    پاکستان میں بسنے والے مسلمان خود بھی اِن سیاسی فریب کاریوں اور اسٹیبلیشمنٹ کے نام پر بعض بارسوخ غیرملکی ایجنٹوں سے تنگ ہیں۔ اگر اقلیت بھی ہے ایسا ہی سوچتی ہے تو اس میں کوئی تعجب نہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    میں اسلام کے حوالہ سے بات نہیں کر رہا۔ جس قسم کا "اسلامی" نظام ملک میں نافذ ہو چکا ہے اس سے متعلق لکھ رہا ہوں۔
    اب تک کتنے واقعات ہو چکے ہیں جہاں توہین رسالت کے جھوٹے الزام میں غیرمسلمو ں کو سالہا سال سلاخوں کے پیچھے گزارنا پڑا؟
    آسیہ مسیح کو دس سال بعد کہیں جا کر سپریم کورٹ سے انصاف ملا تھا ۔ لیکن ملک کی سب سے بڑی عدالت سے بریت کے باوجود ریاست پاکستان اس کی جان و مال کی حفاظت نہ کر سکی اور بالآخر تحفظ کیلئے اپنے ہی پاکستانی شہری کو ایک کافر ملک میں فرار کروانا پڑا تھا ۔
    آج بھی خاکروب کے لئے نکلنے والی آسامیاں غیرمسلم ہونے کی شرط مانگتی ہیں۔
    [​IMG]
    آج بھی ملک میں کتنی دکانیں اور کاروباری مراکز ہیں جہاں قادیانیوں کا داخلہ ممنوع ہے۔
    [​IMG]
    ملک کی کتنی دیواریں ہیں جہاں آج بھی قادیانی مخالف پراپگنڈہ آویزاں ہے۔
    [​IMG]

    کیا یہی وہ اسلامی نظام ہے جس کیلئے قائد اعظم نے پاکستان بنایا تھا؟
     
  15. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,453
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آپ آئینِ پاکستان کی بات کررہے ہیں، شریعتِ مطہرہ کی یا اشتہارات کی؟

    جہاں تک مرزائیوں اور قادیانیوں کا تعلق ہے، جب تک قادیانی خود کو غیرمسلم تسلیم نہیں کریں گے، اُن کے لیے پاکستان میں رہنا غیرقانونی اور غیر اخلاقی ہے۔ یہ آسان بات جس دن آپ کو سمجھ آگئی آپ کا قادیانیوں کے متعلق سارے گلے شکوے خود ختم ہوجائیں گے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  16. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    9,768
    میں تو پورے نظام کی بات کر رہا ہوں جو اسلام کے نام پر ملک و معاشرہ میں نافذ ہے۔
    ایسا کوئی مغربی سیکولر ملک موجود نہیں جہاں اپنے ہی ہم وطنوں کے خلاف اس قسم کے نفرت آمیز پراپگنڈہ کی کھلی اجازت دی جاتی ہے۔
    یہ کیسے ممکن ہے کہ تمام شہری آئین و قانون کے مطابق برابر بھی ہوں اور کاروباری مراکز میں قادیانیوں کا داخلہ ممنوع بھی ہو۔
    تمام شہری برابر کے حقوق بھی رکھتے ہوں لیکن صرف مسلمان ہی وزیر اعظم، صدر، چیف جسٹس اور فوج کے سربراہ کے عہدہ تک پہنچ سکتے ہوں۔
     
  17. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    7,850
    انڈرورا بھی غالباََ یورپ میں ہے جہاں سربراہ ریاست بننے کے لیے عیسائی ہونا شرط ہے؛ لبنان میں بھی ایسا ہی ہے۔ دراصل، ایسے تیس ممالک ہیں جہاں اس قسم کی شرائط موجود ہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ ان میں زیادہ تر مسلم ممالک ہی ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  18. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,135
    جھنڈا:
    Pakistan
    اصل متن کے الفاظ تو کچھ اور ہیں!!!
     
  19. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,135
    جھنڈا:
    Pakistan
    پہلے آپ اسرائیل میں مسلمان کو وزیر اعظم لگوادیں پھر بات کریں۔۔۔
    خود جو چاہیں کریں دوسروں کو کچھ نہ کرنے دیں!!!
     
  20. شیخ محمد نواز

    شیخ محمد نواز محفلین

    مراسلے:
    239
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Daring
    آپ کو اور کتنی آزادی چاہیئے؟ اسلام اور پاکستانی معاشرے پر آپ کھل کر بےسروپا تنقید کر رہے ہیں۔نہ اسرائیل کی طرح آپ پر کیس دائر کیا جارہا ہے اور نہ ہی امریکہ کی طرح آپ پر دہشتگرد ہونے کا لیبل چسپاں کیا جارہا ہے اور نہ ہی انڈیا کی طرح آپ کو ہم نے غدارِ وطن قرار دیا۔
    سو کی ایک بات، مرزائی کافر تھے، ہیں اور جب تک ایمان نہیں لاتے رہیں گے۔
     
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر