وحدت الوجود

شاکرالقادری نے 'تاریخ کا مطالعہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 13, 2006

  1. باباجی

    باباجی محفلین

    مراسلے:
    3,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Curmudgeon
    سر جی آپ بھی جواب دینے میں کمال کرتے ہیں
    لفظوں کے شیر ایسے ہی ہوتے ہیں جن کے بقول صوفیوں کو وختہ پڑا ہوا ہے
    ہم نے تو آج تک کسی صوفی سے ایسا نہیں سنا کہ ملاؤں کو وختہ پڑا ہوا ہے :)
    بلکہ میں نے تو آج تک یہی دیکھا اور سنا ہے کہ صوفی تو اہل علم کی تعریف کرتے ہیں کہ سب ہی طرح کے اہل علم اپنے اپنے دائرے میں بہت اچھا کام کر رہے ہیں اور انسانیت کی خدمت کر رہے ہیں
    آجکل دراصل جو لفاظی اچھی کرتا ہے وہ قابل تعریف ہے، لوگ گفتار کے غازی کو پسند کرتے ہیں، کردار تو کہیں پس پردہ رہ گیا ہے
    ادب صرف کتابوں اور لائبریریوں تک محدود ہوگیا ، حقیقی زندگی سے کمیاب ہو گیا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  2. تلمیذ

    تلمیذ لائبریرین

    مراسلے:
    3,914
    موڈ:
    Cool
    بالکل درست کہا۔ فراز جی۔ جزاک اللہ!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 1
  3. فرسان

    فرسان محفلین

    مراسلے:
    290
    اجي روحاني جي "موجودہ سائنس اور ٹیکنالوجی سے ہزارہا گنا اپڈگریٹڈ

    اردو ادب سے بھی اگر اپڈگریٹڈ هو جائيں تو مضايقه تو نهيں۔ جديد پاكستاني ادب میں انگريزي يا پنجابي الفاظ استعمال كرنا اب كوئي بهت معيوب تو نهيں رها۔ اجي روحاني بابا جي صرف "بابا صاحبا" میں اس كي كئي مثاليں ديكھ كر آپ كے دل میں ٹَھڈ پڑ سكتي هے۔ انگريزي (وه بھی غلط) تو آپ نے استعمال كي هے اور پنجابي كے پورے پورے دوهے لے آتے ہیں۔

    اتني مريل سي مثال آپ نه ديں ميري كم علمي كي اور بهت سي دليلیں ہیں۔

    بلا شبه اوائل صوفيا بهت بلند اور پارسا تھے اور آج بھی كچھ بزرگ موجود ہیں جو ان كے نقش قدم پر چلتے ہیں مگر رونا تو اس پر ہے جو بيچاري عوام كے لئے كتوں كے استعارے ، مثاليں اور كنائے استعمال كركے خود كو بهت بڑی اخلاقي بلندي پر فائز سمجھتا هے۔ اور ايك بار نهيں كئي بار استعمال كرتا هے۔ دوسروں كو منه پر بونا كهتا هے اور اشارے كنائے میں بد تهذيب كهتا هے۔
    اور آخر میں كئيوں كو ٹیگ كركے داد اور پسنديدگی كا منتظر رهتا هے۔
    ايسي روحانيت پر سلام۔

    جزاك الله بابا جي۔ ليكن كيا اس میں هم سب شامل نهیں ؟؟
     
  4. فرسان

    فرسان محفلین

    مراسلے:
    290
    صوفيوں نے جو فقهاء اور ملاوں كي شان میں معركے رقم كيے ہیں كيا وه يهاں ڈھیر لگانے سے آپ اپنی رائے بدل لیں گے؟؟

    اور پھر كب كسي ملا نے صوفي كو وخته پڑنے كا كها ؟؟؟
    كيا میں ملا هو گیا كسي ايك تبصره كي وجه سے ؟؟؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. باباجی

    باباجی محفلین

    مراسلے:
    3,869
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Curmudgeon
    میرے محترم بھائی
    جیسے آپ نے کچھ تبصرہ کیا ویسے ہی میں نے بھی صرف تبصرہ کیا
    کیوں کہ آجکل یہاں صوفی اور ملا دونوں کو الگ کردیا گیا ہے
    حالاں کہ دونوں ایک ہی چیز پر 2 مختلف طریقوں سے کام کر رہے ہیں ایک لوگوں کو بتا رہا ہے تو دوسرا اس کا عملی مظاہرہ کر رہا ہے
    میرا کسی کی ذات کو نشانہ بنانا مقصد نہیں تھا اور نہ ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  6. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,421
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    محترم روحانی بابا جی
    بحث آگہی پانے کے لیئے ۔ اور تنقید تعمیر کے نظریئے سے ۔
    اور میں تو " بیٹھ جاتا ہوں وہیں جہاں چھاؤں گھنی " لگتی ہے ۔
    تنقیدی بحث علم کو اجاگر کرتی ہے ۔
    بزرگ کہتے ہیں کہ " بحث " اس سے کرو جس کی گفتگو میں " آگہی کا نور " اپنی جملہ خصوصیات کے ساتھ اجاگر نظر آئے ۔ تاکہ علم کا نور بکھرے ۔ اور انجان بھی کچھ جان جائے ۔
    مجھ جیسے " جاہل " چار ایسی کتابیں پڑھ جو کہ مناظرانہ انداز گفتگو کے رموز کھولتی ہیں ۔ ہر اک گفتگو میں " کہیں کی اینٹ کہیں کا روڑا " جمع کر خود کو " صاحب علم " ثابت کرتے ہیں ۔
    " وحدت الوجود " کے فلسفے بارے کوئی بھی گفتگو چھیڑنے سے پہلے یہ یقین کرلینامناسب و لازم ہے کہ گفتگو ان کے ساتھ ہو جو کہ فتوؤں کی بجائے اصلاح کی کوشش پر یقین رکھتے ہیں ۔ اور وہ قران پاک کی پہلی سورت کے معنی و مطالب سے آگہی رکھتے ہوں ۔۔۔۔۔۔۔۔
    ورنہ " فتوؤں " کی بارش کیچڑ پھیلاتے بابا بلھے شاہ والی صدا " بلھیا کی جاناں میں کون " کو گمراہی سے معنون کرتی ہے ۔
    اور گمراہ کون ہوتے ہیں ۔ اسے قران پاک نے مکمل وضاحت کے ساتھ بیان فرما دیا ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  7. عظیم اللہ قریشی

    عظیم اللہ قریشی محفلین

    مراسلے:
    2,588
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant
    واہ واہ فرسان جی واہ کیا بات ہے جناب میرا آپ کے وختہ سے مراد آپ کو وختہ ڈالنا نہیں تھا بلکہ یہ لفظ ایک عامیانہ سا لفظ ہے جس کو اگر بازارای کہا جائے تو بے جا نہ ہوگا وحدت الوجود جسے سنجیدہ دقیق اور علمی موضوع پر جس طرح آپ نے منہ کھولا ہے تو وختہ تو لازمی پڑنا تھا میرا مقصد آپ کی پنجابی کو اردو میں استعمال کرنے کی ممانعت ہرگز نہیں تھا جس طرح کہ میری ٹائپنگ مسٹیک کو آپ اپڈگریٹڈ لکھ کر استہزاہیہ انداز اختیار کیا ہے بلکہ آپ کے عامیانہ انداز کو اجاگر کرنا تھا اب آپ جو مرضی کہتے رہو میری صحت پر کیا اثر پڑتا ہے ویسے بھی میں چھوٹا منہ بڑی بات والے لوگوں کو منہ نہیں لگایا کرتا ہوں۔
     
  8. فرسان

    فرسان محفلین

    مراسلے:
    290
    اگر آپ صرف مجھ پر ذاتي حمله كرنے اور مجھے برا بھلا كهنے پر اكتفا فرماتے تو شايد میں جواب نه ديتا۔ مگر محض اپنا غصه اتارنے كيلئے اور ميرے اندر كيڑے نكالنے كيلئے بيچاری پنجابي كے ايك خوبصورت لفظ پر بازاري هونے كا الزام لگا دينا اور عاميانه كهنا انتهائي افسوسناك هے۔

    دھاگہ اگرچہ كه ايك فلسفيانه موضوع پر ہے مگر كچھ الزامات كو رفع كرنا ازحد ضروري هے۔ كئي دن تك آپ كے اس مفروضے سے كسي نے اتفاق نهيں كيا كه وختا بازاري هے اور ابھی تك نهيں كيا۔

    پهلے تو مجھے شديد دھچکا لگا كه يه كونسي پنچابی ہے جس میں وختا بازاري اور عاميانه هے۔ چاروناچار میں نے پٹھان دوستوں كو بھی وختا ڈال ديا كه كهيں تمهاري طرف پشتو میں لفظ وختا بازاري تو نهيں جس سے روحاني بابا صاحب كو غلط فهمي لگ گئي هو؟؟؟ بهرحال پشتو میں وختا تو هے مگر بازاري نهيں هے۔
    پنجابي میں بھی وختا هرگز بازاري لفظ نهيں هے اور نه عاميانه هے۔ اگر كسي كو خاص هونے كي شديد غلطي لگ گئي هو تو وه كسي نفسياتي دباؤ ميں اس كو عاميانه كهه سكتا هے۔

    اجي روحاني جي ! يا تو آپ وختا كا مطلب نهيں جانتے يا لفظ بازاري كا مطلب نهیں جانتے اور يا پھر حالت سكر میں چند هفوات صادر فرما گئے ہیں ۔

    اس بھونڈي حركت كا ايك جواب تو يه ہے كه میں بھی آپ كے كسي استعمال كرده خوبصورت لفظ كو بازاري اور بدتهذيب قرار دے دوں ۔

    مگر اس طرح سے آپ كي جو خاصيانه سي زبان وجود میں آئے گی اس میں دو چار لفظ خاصيانه اور گھريلو هوں گے۔

    میں آپ كے اس اقدام كا بھی خير مقدم كرتا هوں كه آپ مجھ سے بحث نهيں كرسكتے اور اس كي تعليل بھی آپ نے بيان فرما دي هے۔ مجھے بھی آپ سے بحث میں بڑی دقت آتي ، ميري شان میں نئے نئے محاورات اور امثال وجود میں آتي۔

    ميري هجو میں پنجابي شاعري پیش كي جاتي جو ايك بار هو بھی چکا ہے۔ كئي سابق علماء كے مذمتي اقوال كا اطلاق مجھ پر كيا جاتا۔ اور پھر داد وصول كرنے كو مختلف همنواؤں كو ٹیگ كيا جاتا۔ مجھ مسكين كي ذات پر حمله كركے وه بھی حقِ همراهي ادا كرتے۔

    حيرت هے كه بعض لوگ جهالت كا دعوى بھی خود هي كرتے ہیں اور پھر علمي مسائل میں كف گیر چلاتے ہیں۔ يه طرز عمل بھی ناياب هے۔

    اگر گفتگو كرنے كا دم نه هو تو ذاتي حملے شروع كركے انتظاميه كو وختا نهيں ڈالنا چاہیے۔

    بهرحال سكر سے صحو كي جانب تشريف لائیے اور وختا جيسا هے ويسا هي رهنے ديجئے اور لوگوں كو عوام اور الفاظ كو عاميانه كهنے كي سوقيانه روش كو آزمانا ترك كر ديں۔

    اگر مزيد كوئي گالی ديني هو تو درخواست هے كه بيچ میں كوئي عوامي اور عملي غلطي سے پرهيز كيجئے گا تاكه مجھے جواب كي زحمت نه هو۔
     
  9. عظیم اللہ قریشی

    عظیم اللہ قریشی محفلین

    مراسلے:
    2,588
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant
    فرسان جی آپ کو صرف ایک ہی روحانی مشورہ دونگا کہ آپ اپنی غذا میں سرخ مرچوں کا استعمال ترک کردیں شکریہ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1

اس صفحے کی تشہیر