1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

ناسخ واعظا مسجد سے اب جاتے ہیں مےخانے کو ہم- شیخ امام بخش ناسخ

فہد اشرف نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 17, 2016

  1. فہد اشرف

    فہد اشرف محفلین

    مراسلے:
    6,510
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Relaxed
    واعظا مسجد سے اب جاتے ہیں مے خانے کو
    پھینک کر ظرفِ وضو لیتے ہیں پیمانے کو ہم

    کیا مگس بیٹھے بھلا اس شعلہ رو کے جسم پر
    اپنے داغوں سے جلا دیتے ہیں پروانے کو ہم

    تیرے آگے کہتے ہیں گل کھول کر بازوے برگ
    گلشنِ عالم سے ہیں تیار اڑ جانے کو ہم

    کون کرتا ہے بتوں کے آگے سجدہ زاہدا!
    سر کو دے دے مار کر توڑینگے بتخانے کو ہم

    جب غزالوں کے نظر آ جاتے ہیں چشمِ سیاہ
    دشت میں کرتے ہیں یاد اپنے سیہ خانے کو ہم

    بوسۂ خال زنخداں سے شفا ہو گی ہمیں
    کیا کرینگے اے طبیب اس تیرے بہدانے کو ہم

    باندھتے ہیں اپنے دل میں زلف جاناں کا خیال
    اس طرح زنجیر پہناتے ہیں دیوانے کو ہم

    پنجۂ وحشت سے ہوتا ہے گریباں تار تار
    دیکھتے ہیں کاکل جاناں میں جب شانے کو ہم

    عقل کھو دی تھی جو اے ناسخ جنون عشق نے
    آشنا سمجھا کئے اک عمر بیگانے کو ہم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,538
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    واعظا مسجد سے اب جاتے ہیں مے خانے کو ہم​
    پھینک کر ظرفِ وضو لیتے ہیں پیمانے کو ہم


    کیا مگس بیٹھے بھلا اس شعلہ رو کے جسم پر
    اپنے داغوں سے جلا دیتے ہیں پروانے کو ہم

    تیرے آگے کہتے ہیں گل کھول کر بازوے برگ
    گلشنِ عالم سے ہیں تیار اڑ جانے کو ہم

    کون کرتا ہے بتوں کے آگے سجدہ زاہدا!
    سر کو دے دے مار کر توڑیں گے بتخانے کو ہم

    جب غزالوں کی نظر آ جاتی ہیں چشمِ سیاہ
    دشت میں کرتے ہیں یاد اپنے سیہ خانے کو ہم

    بوسۂ خال زنخداں سے شفا ہو گی ہمیں
    کیا کرینگے اے طبیب اس تیرے بہدانے کو ہم

    باندھتے ہیں اپنے دل میں زلفِ جاناں کا خیال
    اس طرح زنجیر پہناتے ہیں دیوانے کو ہم

    پنجۂ وحشت سے ہوتا ہے گریباں تار تار
    دیکھتے ہیں کاکلِ جاناں میں جب شانے کو ہم

    عقل کھو دی تھی جو اے ناسخؔ جنونِ عشق نے
    آشنا سمجھا کیے اک عمر بیگانے کو ہم

    (شیخ امام بخش ناسخؔ)​
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر