ناخداؤں کے کھلے کیسے بھرم پانی میں

ظہیراحمدظہیر نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 21, 2019

  1. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آج پھر ایک پرانی غزل آپ احباب کے ذوقِ لطیف کی نذر کررہا ہوں ۔ ایک دور میں مشکل زمینوں میں طبع آزمائی کا شوق ہوا تھا ۔ یہ انہی دنوں کی یادگار ہے۔ شاید آپ کو کچھ اشعار پسند آئیں ۔


    ناخداؤں کے کھُلے کیسے بھرم پانی میں
    کیا سفینے تھے کئے غرق جو کم پانی میں

    شہر کا شہر ہوا گریہ کناں مثلِ سحاب
    کون دیکھے گا کوئی دیدۂ نم پانی میں

    ڈر نہیں سیلِ زمانہ سے کہ ہم سوختہ جاں
    سنگِ جاوا ہیں ،نہیں ڈوبتے ہم پانی میں

    چھین لے مجھ سے مری خشکیِ دامن کا غرور
    جوشِ گریہ! ابھی اتنا نہیں دم پانی میں

    اشک ہے سوزِ دروں ، اشک غبارِ خاطر!
    آتش و خاک بالآخر ہوئے ضم پانی میں

    یونہی بھر آئے کبھی آنکھ تو ہوتی ہے غزل
    آہوئے حرفِ سخن کرتا ہے رم پانی میں

    قطرۂ اشک ہو یا جرعۂ صہبا ہو ظہیرؔ
    ہم ڈبوتے نہیں اپنا کوئی غم پانی میں

    ***

    ظہیر ؔاحمد ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔۔۔۔۔۔ ۔۔ 2012

     
    آخری تدوین: ‏اکتوبر 22, 2019
    • زبردست زبردست × 8
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    سنگِ جاوا یا جاوا پتھر: آتش فشاں سے نکلا گرم لاوا جب جمتا ہے تو اپنے اندر گیس کی کثیر مقدار کی وجہ سے ایک مسام دار پتھر کی صورت اختیار کرلیتا ہے ۔یہ پتھر ہلکا اور ہوا سے بھرا ہونے کی وجہ سے پانی پر تیرتا ہے۔ اسے انگریزی میں Pumice کہتے ہیں ۔ جاوا کے مشہور آتش فشاں کی نسبت سے اسے اردو میں جاوا پتھرکہاجاتا ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,800
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    کیا پیاری غزل ہے صاحب۔ بہت سی داد
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  4. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,074
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوب ظہیر بھائی۔ لاجواب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  5. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,074
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    میں ایسے ہی خوش ہوتا رہا کہ جاوا ڈویلپرز کی تعریف کی ہے۔ :-(
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  6. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,840
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    خوبصورت عمدہ غزل ہے ظہیر بھائی!

    ماشاءاللہ۔
    کیا کہنے! :)

    واہ، یہ مثال خوب نکالی ہے آپ نے اپنے لئے۔ :)

    عمدہ!

    صہبا کی آبرو پر پانی پھینک ہی دیا آپ نے۔ :)

    واہ واہ! آہوئے سُخن کا دشتِ آب میں رم کرنا کمال ہے۔ ۔۔!

    بہت عمدہ!

    بہت سی داد اس خوبصورت غزل پر!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,076
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    ماشااللہ، لاجواب کلام:)
    یہ تین لفظ لکھنے کیلیے لغت میں دس پندرہ منٹ سر کھپانا پڑا
    اس شعر نے ہمیں کافی مشکوک کر دیا ہے(n)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    آداب! بہت شکریہ خلیل بھائی ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  9. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    نوازش! بہت بہت شکریہ تابش بھائی ۔
    ایک طرح سےکہہ بھی سکتے ہیں کیونکہ یہ شعر آپ جیسے سخت جان لوگوں پر ہی صادق آتا ہے کہ کمپیوٹر کا کتنا بھی بڑے سے بڑا مسئلہ ہو اسے حل کرکے ہی دم لیتے ہیں ۔ یعنی اگر جاوے کا جاوا بھی بگڑا ہوا ہو تو ٹھیک کردیتے ہیں ۔ :):):)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  10. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    نوازش! بہت بہت شکریہ احمد بھائی ! ذرہ نوازی ہے ۔
    احمد بھائی ، یہ تبصرہ کچھ ویسا ویسا ہے آپ کا ۔:):):)
    اس شعر پر آپ کے اس تبصرے اور عاطف ملک کے جملے نے مجبور کردیا کہ اس شعر کو تبدیل کردیا جائے ۔اور اسے مملکتِ شک و شبہ سے نکال کر سرحدِ صدق و صفا کے اُس طرف کردیا جائے ۔ ورنہ ممکن تھا کہ آپ اس شعر سمیت مجھے بھی ڈوپ ٹیسٹ کے لئے گھسیٹ لے جاتے ۔ :D
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,441
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    بہت شکریہ عاطف بھائی ، سخنوروں کی داد اسپیشل ہوتی ہے ۔ بہت شکریہ ! اللہ خوش رکھے ۔
    عاطف، یہ تو آپ اس شعر پر خوامخواہ کا الزام لگارہے ہیں ۔ آپ تو اس شعر کی اشاعت سے پہلے بھی مشکوک تھے ۔ پوچھ لیجئے کسی سے بھی ۔ :D

    قطرۂ اشک ہو یا جرعۂ صہبا ہو ظہیرؔ
    ہم ڈبوتے نہیں اپنا کوئی غم پانی میں

    اب ٹھیک ہے ؟!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  12. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    12,417
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    خوبصورت ترین غزل۔
    بہت پیارے اشعار۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,109
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    یونہی بھر آئے کبھی آنکھ تو ہوتی ہے غزل
    آہوئے حرفِ سخن کرتا ہے رم پانی میں
    واہ واہ واہ
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  14. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,840
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    ویسے"صہبا کی آبرو پر پانی پھیرنے " سے ہماری مُراد یہ تھی کہ شاعروں کا ایک طبقہ ، اسی جرعہء صہبا کے سہارے شاعری اور زندگی کیا کرتا ہے۔ لیکن آپ نے بہ یک جنبش قلم اس "شرارتی آب" کو دیس نکالا دے دیا۔ :)

    اب یہ شعر مزید اچھا ہو گیا اور اس میں قطیعت آ گئی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر