موویز پلینٹ

محمد حسن شہزادہ نے 'سنیما، ٹی وی اور تھیٹر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 12, 2018

  1. محمد حسن شہزادہ

    محمد حسن شہزادہ محفلین

    مراسلے:
    324
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوب جناب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    13,915
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    واہ کیا بات ہے امین بھیا ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,178
    موڈ:
    Cheerful
    سند پسندیدگی عطا کرنے پر مابدولت برادران محترم محمد وارث ، شہزادہ صاحب اور عدنان کے قلب صمیم کی عمیق گہرائیوں سے شکریہ ادا کرتے ہیں ۔:):)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,178
    موڈ:
    Cheerful
    پسندیدگی کے لئے مابدولت برادرم فرقان احمد کا شکریہ ادا کرتے ہیں ۔ :):)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    5,763
    صاحب! آپ ہمیں مسلسل حیران کرتے جاتے ہیں۔ زبردست! :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,178
    موڈ:
    Cheerful
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. محمد حسن شہزادہ

    محمد حسن شہزادہ محفلین

    مراسلے:
    324
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اگورہ ، فزیشن تنقیدی مقدمہ۔
    آج یورپ مذھب کے نام سے اتنا متنفر کیوں ہے کیوں مذھب کا نام اتے ہی یورپ کے ماتھے پر تیوڑی پڑ جاتی ہے؟ اس کے پیچھے صدیوں کی داستان ظلم ہے مذھب اور مذھبی میں بہت فرق ہوتا ہے اور اس وقت خرابی پیدا ہوتی ہے جب مذھبی مذہب کا علمبردار بن جاتے ہیں یورپ میں یہی سب ہوا مذھب کے نام پر کلیسا نے اجارہ داری قائم رکھی لوگوں کو ریاست اور کلیسا کا غلام بنائے رکھا کبھی عورتوں کو وچ ڈاکٹر کہہ کر زندہ جلا دیا گیا کبھی سائنس اور فلسفہ کے طالب علموں کو زندہ درگور کر دیا گیا عقل فہم شعور کے دروازے بند رکھے گئے اور صدیوں تک اس ظلم کو برداشت کرنے کے بعد لوگ نا صرف کلیسا کے خلاف اٹھے بلکہ مذھب بھی نفرت کا نشانہ بنا اور یوں مذھب ریاست سے اور لوگوں کی ذاتی زندگیوں سے بھی رخصت ہو گیا اور انسانیت واخلاقیات نے اس کی جگہہ لے لی۔۔
    اگورہ
    ہم مسلمانوں نے صدیوں تک ایک دنیا پر حکومت کی ہم نے قدیم یونانی سائنس کو جدید بنیادوں پر استوار کیا، قوانین کی تشریح کی اور مزید سائنسی ایجادات کیں، ہم نے فلسفے کو دوام بخشا ابن رشد جیسا فلاسفر پیدا کیا ہم نے رومی جیسا شاعر اور ابن عربی جیسا صوفی پیدا کیا ہم نے ابن الہیثم البیرونی ، الرازی، ابن نفیس و البیرونی جیسے نگینے اور اور ابن سینا جیسا فزیشن پیدا کیا کیوں کہ تب ہم میں کوئی سائنس و فلسفے کو دین سے متصادم ہونے والا فتوی نہیں دیتا تھا تب ہمارے علما کا کام دین کی خدمت تھا دین کی ترویج اور تبھی ہم نے سلطنت عباسیہ، غرناطہ اور عثمانیہ قائم کی لیکن پھر ہمارے بھی وہی مذھبی لوگ مذھب کے علمبردار بن گئے اور ہم نے قرآن کی پرنٹنگ پر فتوی دیا ہم نے لاؤڈ سپیکر، سائنس اور غرض سب کو دین اسلام سے خارج کر دیا اور
    ہمارے ذہن میں یہ راسخ کردیا گیا تھا یہ دنیا " دنیاوی کتوں " کےلئے ہے

    چنانچہ ہم نے دفاع, علم, تحقیق, انڈسٹری اور معیشت "دنیاوی کتوں" پر چھوڑ دی اور اپنے لئے دنیاوی کتوں کی غلامیں پسندکرلی

    یوں "دنیاوی کتے" اہل ایمان کے حکمران بن گئے , دنیا مسائل کا حل تلاش کرتی رہی ,

    یہ انٹی بائیوٹک, گاڑیاں, جہاز, کیڑے مار ادویات,اور میزائل بناتی رہی ,

    ہم وظائف ,تعویزوں , اور پھونکوں سے دشمن کی توپوں میں کیڑے پڑنے کا انتظار کرتے رہے,

    ہمیں یقین دلایا گیا کہ تم صرف عبادت کرو,

    وظائف اور پھونکیں مارو, اورغیروں کو کام کرنے دو. ...........

    چنانچہ پورا عالم اسلام" دنیاوی کتوں " کا غلام بن

    گیا .
    فزیشن۔ اور اگورہ دو ایسی ہی فلمیں ہیں

    میری اس تحریر سے ہر ایک انسان کا اتفاق کرنا ضروری نہیں ہے ۔
    [​IMG]

    [​IMG]
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  8. محمد امین صدیق

    محمد امین صدیق محفلین

    مراسلے:
    1,178
    موڈ:
    Cheerful
    پسندیدگی کے لئے مابدولت برادرم سردار محمد نعیم کا قلبی شکریہ اداکرتے ہیں ۔ :):)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر