مائیکرو سافٹ ورڈ کی پریشانیاں

شکیب نے 'لکھنے پڑھنے میں مدد' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 19, 2015

  1. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    مندرجہ ذیل تحریر پر نستعلیق فانٹ اپلائی نہیں ہو پارہا ہے۔۔۔ اس کی کیا وجہ ہوسکتی ہے اور اس کی درستگی کے لیے کیا کیا جاسکتا ہے؟
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اھل حدث عرف وکٹورین علماء دیوبند پر بھتان لگاتے ہیں کہ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ ﮐﺎ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﺭﮐﻬﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﻮﮐﮧ ﺍﯾﮏ ﮐﻔﺮﯾﮧ ﺷﺮﮐﯿﮧ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﮨﮯ ۰ یہ بھتان ﻓﺮﻗﮧ ﺟﺪﯾﺪ ﺍﮨﻞ ﺣﺪﯾﺚ ﻣﯿﮟ ﺷﺎﻣﻞ ﭼﻨﺪ ﺟﮩﻼﺀ ﻧﮯ ﭘﮭﯿﻼﯾﺎ ﮨﻮﺍ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﭘﻨﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﻋﻮﺍﻡ ﮐﻮﺍﺱ ﻣﻄﻠﺐ ﺑﺘﻼﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﭘﮭﺮﺍﻥ ﺳﮯ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﮧ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﮐﺎ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﮨﮯ ، ﺍﺱ ﺑﺎﺏ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﻣﺨﺘﺼﺮ ﻣﮕﺮﺟﺎﻣﻊ ﻣﻀﻤﻮﻥ ﻟﮑﮫنا چاہتا ہوں .1 ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺣﻖ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﭘﺮ ﺍﯾﮏ ﺑﮩﺘﺎﻥ ﭼﻨﺪ ﺟﮩﻼﺀ ﻭﻧﺎﻡ ﻧﮩﺎﺩ ﺍﮨﻞ ﺣﺪﯾﺚ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﻟﮕﺎﯾﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﯾﮧ ﻟﻮﮒ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺣُﻠﻮﻝ ﻭﺍﺗﺤﺎﺩ ﮐﺎ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﺭﮐﻬﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﺲ ﮐﻮ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ “ ﮐﮩﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﺎ ﻣﻄﻠﺐ ﻭﻣﻔﮩﻮﻡ ﯾﮧ ﻟﻮﮒ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﺑﯿﺎﻥ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ( ﻣﻌﺎﺫﺍﻟﻠﻪ ) ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﺗﻤﺎﻡ ﮐﺎﺋﻨﺎﺕ ﮐﮯ ﺍﺟﺰﺍ ﻣﺜﻼ ﺣﯿﻮﺍﻧﺎﺕ ﺟﻤﺎﺩﺍﺕ ﻧﺒﺎﺗﺎﺕ ﻭﻏﯿﺮﻩ ﮨﺮ ﭼﯿﺰ ﻣﯿﮟ ﺣﻠﻮﻝ ﮐﯿﺎ ﮨﻮﺍ ﮨﮯ ﯾﻌﻨﯽ ﻣﺨﻠﻮﻕ ﺑﻌﯿﻨﮧ ﺧﺎﻟﻖ ﺑﻦ ﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﺟﺘﻨﯽ ﺑﮭﯽ ﻣﺸﺎﮨﺪﺍﺕ ﻭﻣﺤﺴﻮﺳﺎﺕ ﮨﯿﮟ ﻭﻩ ﺑﻌﯿﻨﮧ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﮐﯽ ﺫﺍﺕ ﮨﮯ ۔ ( ﻣﻌﺎﺫﺍﻟﻠﻪ ﺛﻢ ﻣﻌﺎﺫﺍﻟﻠﻪ ﻭﺗﻌﺎﻟﯽ ﺍﻟﻠﻪ ﻋﻦ ﺫﺍﻟﮏ ﻋﻠﻮﺍ ﮐﺒﯿﺮﺍ ) ﺑﻼ ﺷﮏ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ ” ﮐﺎ ﯾﮧ ﻣﻌﻨﯽ ﻭﻣﻔﮩﻮﻡ ﺻﺮﯾﺢ ﮐﻔﺮ ﻭﺿﻼﻝ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﺎ ﺍﯾﮏ ﺍﺩﻧﯽ ﻣﺴﻠﻤﺎﻥ ﺗﺼﻮﺭ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺳﮑﺘﺎ ﭼﮧ ﺟﺎﺋﯿﮑﮧ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺣﻖ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﮐﺎ ﯾﮧ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﮨﻮ ۔ ( ﺳﺒﺤﺎﻧﮏ ﻫﺬﺍ ﺑﻬﺘﺎﻥ ﻋﻈﯿﻢ ) ﻧﺎﺣﻖ ﺑﮩﺘﺎﻥ ﻭﺍﻟﺰﺍﻡ ﻟﮕﺎﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺟﮩﺎﻝ ﻭﻣﺘﻌﺼﺒﯿﻦ ﮐﺎ ﻣﻨﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﻨﺪ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺳﮑﺘﺎ ﺍﻭﺭ ﻧﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﻣﻘﺮﺏ ﺟﻤﺎﻋﺖ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺍﺱ ﺳﮯ ﻣﺤﻔﻮﻅ ﺭﻩ ﺳﮑﺘﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﮨﺮﺯﻣﺎﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﮐﻤﯿﻨﮯ ﺍﻭﺭ ﺟﺎﮨﻞ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﻧﮯ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺭﺑﺎﻧﯿﯿﻦ ﮐﯽ ﻣﺨﺎﻟﻔﺖ ﻭﻋﺪﺍﻭﺕ ﮐﯽ ﮨﮯ ،ﻟﮩﺬﺍ ﺟﻮﻟﻮﮒ ﺍﭘﻨﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ ” ﮐﺎ ﯾﮧ ﻣﻌﻨﯽ ﮐﺮﮐﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﻣﻨﺴﻮﺏ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﻋﻮﺍﻡ ﺍﻟﻨﺎﺱ ﮐﻮ ﮔﻤﺮﺍﻩ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﻘﯿﻨﺎ ﺍﯾﺴﮯ ﻟﻮﮒ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﮐﮯ ﭘﮑﮍ ﺳﮯ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﭻ ﺳﮑﯿﮟ ﮔﮯ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﮕﺮ ﺻﻮﻓﯿﮧ ﮐﺮﺍﻡ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ “ ﮐﮯ ﺍﺱ ﮐﻔﺮﯾﮧ ﻣﻌﻨﯽ ﻭﻣﻔﮩﻮﻡ ﺳﮯ ﺑﺮﯼ ﮨﯿﮟ ۔ ﻭﺍﺿﺢ ﺭﮨﮯ ﮐﮧ ﮐﭽﮫ ﺑﺪﺑﺨﺖ ﻟﻮﮒ ﺍﺱ ﺑﯿﺎﻥ ﻭﺗﺼﺮﯾﺢ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺑﮭﯽ ﯾﮧ ﺑﮩﺘﺎﻥ ﻟﮕﺎﺗﮯ ﺭﮨﯿﮟ ﮔﮯ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﺍﻥ ﮐﺎ ﻣﻘﺼﺪ ﺣﻖ ﺑﺎﺕ ﮐﻮ ﻗﺒﻮﻝ ﮐﺮﻧﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﭘﺮﻋﻤﻞ ﮐﺮﻧﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﺑﻠﮑﮧ ﺍﻥ ﮐﺎ ﻣﻘﺼﺪ ﻭﺣﯿﺪ ﺗﻮﺍﺑﻠﯿﺲ ﮐﯽ ﭘﯿﺮﻭﯼ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﻮﺋﮯ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺣﻖ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﮐﯽ ﻣﺨﺎﻟﻔﺖ ﻭﻋﺪﺍﻭﺕ ﮨﯽ ﮨﮯ ﭼﺎﮨﮯ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﺩﯾﻮﺑﻨﺪ ﮨﺰﺍﺭ ﺑﺎﺭﯾﮧ ﮐﮩﯿﮟ ﮐﮧ ﮨﻤﺎﺭﺍ ﯾﮧ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﻧﺼﯿﺤﺖ ﺗﻮ ﺍﯾﺴﮯ ﻋﺎﻡ ﻧﺎﻭﺍﻗﻒ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮨﮯ ﺟﻮﺍﯾﺴﮯ ﺟﮭﻮﭨﮯ ﺍﻭﺭﺟﺎﮨﻞ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﯽ ﺳﻨﯽ ﺳﻨﺎﺋﯽ ﺑﺎﺗﻮﮞ ﮐﯽ ﺍﻧﺪﻫﯽ ﺗﻘﻠﯿﺪ ﮐﺮﮐﮯ ﺍﭘﻨﯽ ﻋﺎﻗﺒﺖ ﺧﺮﺍﺏ ﮐﺮ ﺭﮨﮯ ﮨﯿﮟ۔ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﺑﺎﺭﮮ ﻣﯿﮟ ﺍﻣﺎﻡ ﺷﻌﺮﺍﻧﯽ ﺷﺎﻓﻌﯽ ﺭﺣﻤﮧ ﺍﻟﻠﮧ ﮐﮯ ﯾﮧ ﻧﺼﯿﺤﺖ ﺁﻣﯿﺰ ﮐﻠﻤﺎﺕ ﺫﮨﻦ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮭﯿﮟ ﻗﺴﻢ ﺍﭨﮭﺎﮐﺮﻓﺮﻣﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﮐﮧ ﺟﺐ ﺑﺘﻮﮞ ﮐﮯ ﭘﺠﺎﺭﯾﻮﮞ ﮐﻮ ﯾﮧ ﺟﺮﺍﺀﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺋﯽ ﮐﮧ ﺍﭘﻨﮯ ﻣﻌﺒﻮﺩﺍﻥ ﺑﺎﻃﻠﮧ ﮐﻮ ﻋﯿﻦ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﮐﯽ ﺫﺍﺕ ﺗﺼﻮﺭ ﮐﺮﯾﮟ ﺑﻠﮑﮧ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺑﮭﯽ ﯾﮧ ﮐﮩﺎ ﺟﯿﺴﺎ ﮐﮧ ﻗﺮﺁﻥ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ﻣﺎَ ﻧﻌﺒُﺪُﻫُﻢ ﺍﻻ ﻟِﯿُﻘَﺮّﺑﻮُﻧﺎ ﺍﻟﯽ ﺍﻟﻠﻪ ﯾﻌﻨﯽ ﮨﻢ ﺍﻥ ﺑﺘﻮﮞ ﮐﯽ ﻋﺒﺎﺩﺕ ﺍﺱ ﻟﺌﮯ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺗﺎﮐﮧ ﯾﮧ ﮨﻤﯿﮟ ﺍﻟﻠﻪ ﮐﮯ ﻗﺮﯾﺐ ﮐﺮﺩﯾﮟ ﺗﻮ ﺍﻭﻟﯿﺎﺀ ﺍﻟﻠﻪ ﮐﮯ ﻣﺘﻌﻠﻖ ﯾﮧ ﺑﮩﺘﺎﻥ ﻟﮕﺎﻧﺎ ﮐﮧ ﻭﻩ ، ﺣﻠﻮﻝ ﻭﺍﺗﺤﺎﺩ ، ﮐﺎ ﻋﻘﯿﺪﻩ ﺭﮐﮭﺘﮯ ﺗﮭﮯ ﺳﺮﺍﺳﺮ ﺑﮩﺘﺎﻥ ﺍﻭﺭ ﺟﮭﻮﭦ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺣﻖ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﻣﺤﺎﻝ ﻭﻧﺎﻣﻤﮑﻦ ﺩﻋﻮﯼ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﻮ ﺟﺎﮨﻞ ﻭﺍﺣﻤﻖ ﮨﯽ ﻗﺒﻮﻝ ﮐﺮﯾﮕﺎ۔ .2 ﺟﻦ ﺻﻮﻓﯿﮧ ﮐﺮﺍﻡ ﺍﻭﺭ ﺑﺰﺭﮔﺎﻥ ﺩﯾﻦ ﮐﮯ ﮐﻼﻡ ﻣﯿﮟ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ “ ﮐﺎ ﮐﻠﻤﮧ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﯾﺴﮯ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﯽ ﻓﻀﻞ ﻭﻋﻠﻢ ﺗﻘﻮﯼ ﻭ ﻭﺭﻉ ﮐﯽ ﺷﮩﺎﺩﺕ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺍﻥ ﮐﯽ ﭘﻮﺭﯼ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺍﺗﺒﺎﻉ ﺷﺮﻉ ﻣﯿﮟ ﮔﺬﺭﯼ ﮨﮯ ﺗﻮ ﺍﺱ ﺣﺎﻟﺖ ﻣﯿﮟ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺍﺱ ﮐﻼﻡ ﮐﯽ ﺍﭼﮭﯽ ﺗﺎﻭﯾﻞ ﮐﯽ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﯽ ﺟﯿﺴﺎ ﮐﮧ ﻋﻠﻤﺎﺀ ﻣﺤﻘﻘﯿﻦ ﮐﺎ ﻃﺮﯾﻘﮧ ﮨﮯ ﺍﺱ ﻗﺴﻢ ﮐﮯ ﺍﻣﻮﺭ ﻣﯿﮟ ۔ﺍﻭﺭ ﻭﻩ ﺗﺎﻭﯾﻞ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﮐﮧ ﺍﯾﺴﮯ ﺣﻀﺮﺍﺕ ﮐﯽ ﻣﺮﺍﺩ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ ” ﺳﮯ ﻭﻩ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﮯ ﺟﻮ ﻣﻠﺤﺪ ﻭ ﺯﻧﺪﯾﻖ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﻧﮯ ﻣﺮﺍﺩ ﻟﯿﺎ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﺑﮭﯽ ﯾﮩﯽ ﮨﮯ ۔ ﺍﺱ ﮐﻠﻤﮧ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﮐﮯ ﺩﯾﮕﺮ ﮐﻠﻤﺎﺕ ﺟﻮ ﺻﻮﻓﯿﮧ ﮐﺮﺍﻡ ﮐﯽ ﮐﺘﺐ ﻣﯿﮟ ﻭﺍﺭﺩ ﮨﻮﺋﮯ ﮨﯿﮟ ﺟﻮ ﺑﻈﺎ ﮨﺮ ﺧﻼﻑ ﺷﺮﻉ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻥ ﮐﯽ ﻣﺜﺎﻝ ﺍﺱ ﺍﻋﺮﺍﺑﯽ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﯽ ﺩﻓﺎﻉ ﺧﻮﺩ ﺁﭖ ﷺ ﻧﮯ ﮐﯽ ﮨﮯ ( ﺻﺤﯿﺢ ﺑﺨﺎﺭﯼ ﻭﻣﺴﻠﻢ ) ﮐﯽ ﺭﻭﺍﯾﺖ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﺎ ﻣﻔﮩﻮﻡ ﯾﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻭﻩ ﺟﻨﮕﻞ ﺑﯿﺎﺑﺎﻥ ﻣﯿﮟ ﺍﭘﻨﯽ ﺳﻮﺍﺭﯼ ﭘﺮ ﺳﻔﺮ ﮐﺮ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ ﺍﺱ ﭘﺮ ﺍﺱ ﮐﺎ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﭘﯿﻨﺎ ﺑﮭﯽ ﺗﮭﺎ ﻟﮩﺬﺍ ﻭﻩ ﺗﮭﮑﺎﻭﭦ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﺁﺭﺍﻡ ﮐﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺍﯾﮏ ﺩﺭﺧﺖ ﮐﮯ ﺳﺎﯾﮧ ﻣﯿﮟ ﻟﯿﭧ ﮔﯿﺎ ﺟﺐ ﺍﭨﮭﺎ ﺗﻮ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﮐﮧ ﺳﻮﺍﺭﯼ ﺳﺎﻣﺎﻥ ﺳﻤﯿﺖ ﻏﺎﺋﺐ ﮨﮯ ﻭﻩ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺗﻼﺵ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮔﯿﺎ ﻟﯿﮑﻦ ﺍﺱ ﮐﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﻣﻼ ﻟﮩﺬﺍ ﭘﮭﺮ ﺍﺱ ﺩﺭﺧﺖ ﮐﮯ ﻧﯿﭽﮯ ﻣﺎﯾﻮﺱ ﮨﻮ ﮐﺮﻟﻮﭦ ﺁﯾﺎ ﺍﻭﺭ ﻣﻮﺕ ﮐﮯ ﺍﻧﺘﻈﺎﺭ ﻣﯿﮟ ﺳﻮ ﮔﯿﺎ ﭘﮭﺮ ﺟﺐ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮫ ﮐﮭﻠﯽ ﺗﻮ ﮐﯿﺎ ﺩﯾﮑﮭﺘﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺳﻮﺍﺭﯼ ﺑﮭﯽ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﭘﯿﻨﺎ ﺑﮭﯽ ﻭﻩ ﺍﺗﻨﺎ ﺧﻮﺵ ﮨﻮﺍ ﺑﻠﮑﮧ ﺧﻮﺷﯽ ﻭﻓﺮﺣﺖ ﮐﮯ ﺍﺱ ﺍﻧﺘﮩﺎ ﭘﮩﻨﭽﺎ ﮐﮧ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺯﺑﺎﻥ ﺳﮯ ﯾﮧ ﺍﻟﻔﺎﻅ ﻧﮑﻞ ﮔﺌﮯ . ﺍﻟﻠﻬﻢ ﺍﻧﺖَ ﻋﺒﺪﯼ ﻭﺍﻧﺎ ﺭﺑُﮏ . ﯾﻌﻨﯽ ﺍﮮ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻮ ﻣﯿﺮﺍ ﺑﻨﺪﻩ ﻣﯿﮟ ﺗﯿﺮﺍ ﺭﺏ ، ﺍﺳﯽ ﺣﺪﯾﺚ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻌﺎﻟﯽ ﺑﻨﺪﻩ ﮐﯽ ﺗﻮﺑﮧ ﺳﮯ ﺍِﺱ ﺁﺩﻣﯽ ﺳﮯ ﺑﮭﯽ ﺯﯾﺎﺩﻩ ﺧﻮﺵ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ، ﺟﺎﺀ ﻓﻲ ﺍﻟﺤﺪﻳﺚ ﺍﻟﺬﻱ ﺭﻭﺍﻩ ﺍﻹﻣﺎﻡ ﻣﺴﻠﻢ ” ﻟﻠﻪ ﺃﺷﺪ ﻓﺮﺣﺎً ﺑﺘﻮﺑﺔ ﻋﺒﺪﻩ ﺣﻴﻦ ﻳﺘﻮﺏ ﺇﻟﻴﻪ ﻣﻦ ﺃﺣﺪﻛﻢ ﻛﺎﻥ ﻋﻠﻰ ﺭﺍﺣﻠﺘﻪ ﺑﺄﺭﺽ ﻓﻼﺓ ﻓﺎﻧﻔﻠﺘﺖ ﻣﻨﻪ ﻭﻋﻠﻴﻬﺎ ﻃﻌﺎﻣﻪ ﻭﺷﺮﺍﺑﻪ ﻓﺄﻳﺲ ﻣﻨﻬﺎ ﻓﺄﺗﻰ ﺷﺠﺮﺓ ﻓﺎﺿﻄﺠﻊ ﻓﻲ ﻇﻠﻬﺎ ﻭﻗﺪ ﺃﻳﺲ ﻣﻦ ﺭﺍﺣﻠﺘﻪ ﻓﺒﻴﻨﻤﺎ ﻫﻮ ﻛﺬﻟﻚ ﺇﺫ ﻫﻮ ﺑﻬﺎ ﻗﺎﺋﻤﺔ ﻋﻨﺪﻩ ﺑﺨﻄﺎﻣﻬﺎ ، ﺛﻢ ﻗﺎﻝ ﻣﻦ ﺷﺪﺓ ﺍﻟﻔﺮﺡ : ﺍﻟﻠﻬﻢ ﺃﻧﺖ ﻋﺒﺪﻱ ﻭﺃﻧﺎ ﺭﺑﻚ ! ﺃﺧﻄﺄ ﻣﻦ ﺷﺪﺓ ﺍﻟﻔﺮﺡ .” ﺍﻭﮐﻤﺎ ﻗﺎﻝ ﺍﻟﻨﺒﯽ ﷺ ﺍﺏ ﺍﺱ ﺣﺪﯾﺚ ﻣﯿﮟ ﺍﺱ ﺁﺩﻣﯽ ﮐﺎ ﻗﻮﻝ ﺍﮮ ﺍﻟﻠﻪ ﺗﻮ ﻣﯿﺮﺍﺑﻨﺪﻩ ﻣﯿﮟ ﺗﯿﺮﺍ ﺭﺏ ﮐﯿﺎ ﺍﻥ ﻇﺎﮨﺮﯼ ﺍﻟﻔﺎﻅ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮫ ﮐﺮ ﻧﺎﻡ ﻧﮩﺎﺩ ﺍﮨﻞ ﺣﺪﯾﺚ ﻭﮨﯽ ﺣﮑﻢ ﻟﮕﺎ ﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﺟﻮ ﺩﯾﮕﺮ ﺍﻭﻟﯿﺎﺀ ﻭﻋﻠﻤﺎﺀ ﮐﮯ ﻇﺎﮨﺮﯼ ﺍﻟﻔﺎﻅ ﮐﻮ ﻟﮯ ﮐﺮ ﺍﭘﻨﯽ ﻃﺮﻑ ﺳﮯ ﻣﻌﻨﯽ ﮐﺮﮐﮯ ﺣﮑﻢ ﻟﮕﺎﺗﮯ ﮨﯿﮟ ؟ ﯾﺎ ﺣﺪﯾﺚ ﮐﮯ ﺍﻥ ﻇﺎﮨﺮﯼ ﺍﻟﻔﺎﻅ ﮐﯽ ﺗﺎﻭﯾﻞ ﮐﺮﯾﮟ ﮔﮯ ؟ﺧﻮﺏ ﯾﺎﺩ ﺭﮐﮭﯿﮟ ﮐﮧ ” ﻭﺣﺪﺕُ ﺍﻟﻮﺟﻮﺩ “ ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﻧﮧ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﻋﻘﺎﺋﺪ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮨﮯ ﻧﮧ ﺿﺮﻭﺭﯾﺎﺕ ﺩﯾﻦ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﮨﮯ، ﻧﮧ ﺿﺮﻭﺭﯾﺎﺕ ﺍﮨﻞ ﺳﻨﺖ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ، ﻧﮧ ﺍﺣﮑﺎﻡ ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮨﮯ ﮐﮧ ﻓﺮﺽ ﻭﺍﺟﺐ ﺳﻨﺖ ﻣﺴﺘﺤﺐ ﻣﺒﺎﺡ ﮐﮩﺎ ﺟﺎﺋﮯ ﺑﻠﮑﮧ ﺻﻮﻓﯿﮧ ﮐﺮﺍﻡ ﮐﮯ ﯾﮩﺎﮞ ﯾﮧ ﺍﯾﮏ ﺍﺻﻄﻼﺣﯽ ﻟﻔﻆ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﯾﮧ ﺻﻮﻓﯿﮧ ﮐﺮﺍﻡ ﮐﮯ ﯾﮩﺎﮞ ﻣﺤﺾ ﺍﺣﻮﺍﻝ ﮐﺎ ﻣﺴﺌﻠﮧ ﮨﮯ ﻓﻘﻂ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﺳﮯ ﻭﻩ ﺻﺤﯿﺢ ﻣﻌﻨﯽ ﻭﻣﻔﮩﻮﻡ ﻣﺮﺍﺩ ﻟﯿﺘﮯ ﮨﯿﮟ ۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. اسد

    اسد محفلین

    مراسلے:
    1,029
    موڈ:
    Busy
    یہ تحریر اس طرح ٹائپ (یا محفوظ) کی گئی ہے (ہر حرف کے بعد سپیس میں نے شامل کی ہے، سرخ حروف درست طور پر ٹائپ کیے گئے ہیں):

    ﻋ ﻠ ﻤ ﺎ ﺀ ﺩ ﯾ ﻮ ﺑ ﻨ ﺪ ﻭ ﺣ ﺪ ﺕ ُ ﺍ ﻟ ﻮ ﺟ ﻮ ﺩ ﮐ ﺎ ﻋ ﻘ ﯿ ﺪ ﻩ ﺭ ﮐ ﻬ ﺘ ﮯ ﮨ ﯿ ﮟ ﺟ ﻮ ﮐ ﮧ ﺍ ﯾ ﮏ ﮐ ﻔ ﺮ ﯾ ﮧ ﺷ ﺮ ﮐ ﯿ ﮧ ﻋ ﻘ ﯿ ﺪ ﻩ ﮨ ﮯ ۰ ی ہ ب ھ ت ا ن ﻓ ﺮ ﻗ ﮧ ﺟ ﺪ ﯾ ﺪ ﺍ ﮨ ﻞ ﺣ ﺪ ﯾ ﺚ ﻣ ﯿ ﮟ ﺷ ﺎ ﻣ ﻞ ﭼ ﻨ ﺪ ﺟ ﮩ ﻼ ﺀ ﻧ ﮯ ﭘ ﮭ ﯿ ﻼ ﯾ ﺎ ﮨ ﻮ ﺍ ﮨ ﮯ ﺍ ﻭ ﺭ ﺍ ﭘ ﻨ ﯽ ﻃ ﺮ ﻑ ﺳ ﮯ ﻋ ﻮ ﺍ ﻡ ﮐ ﻮ ﺍ ﺱ ﻣ ﻄ ﻠ ﺐ ﺑ ﺘ ﻼ ﺗ ﮯ ﮨ ﯿ ﮟ ﭘ ﮭ ﺮ ﺍ ﻥ ﺳ ﮯ ﮐ ﮩ ﺘ ﮯ ﮨ ﯿ ﮟ ﯾ ﮧ ﻋ ﻠ ﻤ ﺎ ﺀ ﺩ ﯾ ﻮ ﺑ ﻨ ﺪ ﮐ ﺎ ﻋ ﻘ ﯿ ﺪ ﻩ ﮨ ﮯ ، ﺍ ﺱ ﺑ ﺎ ﺏ ﻣ ﯿ ﮟ ﺍ ﯾ ﮏ ﻣ ﺨ ﺘ ﺼ ﺮ ﻣ ﮕ ﺮ ﺟ ﺎ ﻣ ﻊ ﻣ ﻀ ﻤ ﻮ ﻥ ﻟ ﮑ ﮫ ن ا چ ا ہ ت ا ہ و ں . 1 ﻋ ﻠ ﻤ ﺎ ﺀ ﺣ ﻖ ﻋ ﻠ ﻤ ﺎ ﺀ ﺩ ﯾ ﻮ ﺑ ﻨ ﺪ ﭘ ﺮ ﺍ ﯾ ﮏ ﺑ ﮩ ﺘ ﺎ ﻥ ﭼ ﻨ ﺪ ﺟ ﮩ ﻼ ﺀ ﻭ ﻧ ﺎ ﻡ ﻧ ﮩ ﺎ ﺩ ﺍ ﮨ ﻞ ﺣ ﺪ ﯾ ﺚ ﮐ ﯽ ﻃ ﺮ ﻑ ﺳ ﮯ ﯾ ﮧ ﺑ ﮭ ﯽ ﻟ ﮕ ﺎ ﯾ ﺎ ﺟ ﺎ ﺗ ﺎ ﮨ ﮯ ﮐ ﮧ ﯾ ﮧ ﻟ ﻮ ﮒ ﺍ ﻟ ﻠ ﻪ ﺗ ﻌ ﺎ ﻟ ﯽ ﮐ ﮯ ﻟ ﺌ ﮯ ﺣ ُ ﻠ ﻮ ﻝ ﻭ ﺍ ﺗ ﺤ ﺎ ﺩ ﮐ ﺎ ﻋ ﻘ ﯿ ﺪ ﻩ ﺭ ﮐ ﻬ ﺘ ﮯ ﮨ ﯿ ﮟ

    یعنی حروف کی سادہ ٹائپنگ کے بجائے اردو حروف کی چار (یا دو) حالتوں کو ٹائپ (یا محفوظ) کیا گیا ہے۔ حل یہی ہے کہ دوبارہ درست طور پر ٹائپ کریں یا درست طور پر محفوظ کریں۔
     
    • متفق متفق × 2
  3. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    یہ سمجھ نہیں آئی۔
    ایسا ظلم نہ کرو یار۔:(
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  4. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    میں نے فانٹس چیک کیے تو اس پر عربی کے فانٹس اور دیوانی فانٹ اپلائی ہورہا ہے۔۔۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    درست فرمایا۔ یہی مسئلہ ہے، جس کی وجہ سے کیریکٹر کوڈ مختلف ہو گئے ہیں۔
    مثال کے طور پر
    ﻋﻠﻤﺎﺀ
    ﻋﻠﻤﺎﺀ
    علماء
    علماء
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  6. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اس کا حل وہی ہے جو اسد بھائی نے بتایا۔
    یا پھر کوئی کوڈ لکھا جائے یا مل جائے جو دیے گئے کیریکٹر کوڈز کو متبادل سے تبدیل کر دے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  7. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
  9. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    30,033
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    sunshine
    اس میں جو کیرکٹر سیٹ استعمال ہوا ہے، وہ کیرکٹر سیٹ کسی نستعلیق فانٹ میں نہیں۔میں نے تو ورڈ میں ہی فائنڈ رپلیس کر کے ایسی تحریر کو استعمال کیا تھا۔ مثلاً ’ب‘ کی ابتدائی شکل، درمیانی شکل اور آخری شکل کو اسی تحریر سے کاپی کریں (کہ یہ کیرکٹرس کسی کی بورڈ میں بھی نہیں جو آپ کجھ سکیں) تو ان ساری شکلوں کو ایک ایک کر کے ’’ب‘ سے رپلیس کر دیں۔
    اس طرح کسی کا لکھنا تو ممکن نہیں ہے، میرا خیال ہے کہ کسی نے ان پیج کی تحریر کو اس طرح کنورٹ کیا ہو گا۔ اگر کئی تحریریں ایسی ہوں تو میکرو بنایا جا سکتا ہے، جسے اس قسم کی دوسری تحریروں پر استعمال کیا جا سکے گا۔
     
    • متفق متفق × 1
  10. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اگر تو تحریر صرف اتنی ہی ہے تو پھر دوبارہ لکھنا اتنا مشکل کام نہ ہو گا، لیکن اگر پیجز زیادہ ہیں تو کوئی ایسا پروگرام لکھنا/تلاش کرنا پڑے گا جو کنورژن کر سکے۔
    مسئلہ یہ ہے:
    ب arabic letter beh 03050 1576 0x628 ب
    ﺏ arabic letter beh isolated form 0177217 65167 0xFE8F ﺏ
    ﺐ arabic letter beh final form 0177220 65168 0xFE90 ﺐ
    ﺑ arabic letter beh initial form 0177221 65169 0xFE91 ﺑ
    ﺒ arabic letter beh medial form 0177222 65170 0xFE92 ﺒ

    ان میں سے اگر پہلا حرف استعمال ہوا ہوتا تو آپ کو یہ مسئلہ نہیں آنا تھا۔
    محترم الف عین صاحب نے جیسا کہ بتایا ہے کہ آخری چار فارمز کو پہلے حرف سے تبدیل کرنے سے مسئلہ حل ہو گا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,839
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    ان پیج استعمال کیا کریں :dancing:
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  12. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    فی الحال تو میں نے جیسا کہ بتایا تھا، اس پر نستعلیق فانٹس کسی بھی قسم کے اپلائی نہیں ہوپارہے تھے، البتہ اپلائی ہوسکنے والے فانٹس میں ایڈوبی کا ایک فانٹ تھا، اسے بادلِ ناخواستہ استعمال کرلیا ہے۔ پھر بھی سوچنے کی بات ہے کہ ایڈوبی اور دیوانی وغیرہ فانٹس اپلائی ہورہے تھے، تو نستعلیق وغیرہ میں بھی ایسی کوئی تبدیلی فانٹ میں کی جاسکتی ہو۔۔۔!
    دراصل جنہوں نے وہ مضمون لکھا تھا وہ موبائیل پر لکھا تھا، واللہ اعلم کون سی اینکوڈنگ تھی۔
    الف عین چچا میکرو میں نے آج تک استعمال نہیں کیے۔۔۔ اس کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں۔ کچھ بنیادی معلومات کے ساتھ کچھ کام کے میکرو جو ساتھیوں نے بنا رکھے ہوں، اگر مل سکیں تو۔۔۔۔!
    املا کی درستگی اور پروف ریڈنگ میں معاون ٹپس بھی شاید آپ نے کہیں لکھی ہیں؟
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  13. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    ان پیج پرانے زمانے کی بات ہے۔ میں نہیں سمجھ سکتا کہ ایم ایس ورڈ میں یونیکوڈ سپورٹ کے بعد اس کی ضرورت کیا ہے سوائے کرننگ کے۔ (بہر حال یہ میری رائے ہے، اس سے اختلاف کی مکمل اجازت ہے:))
    اور یہ تو بتا ہی چکا ہوں کہ یہ تحریر میری لکھی ہوئی نہیں ہے، بلکہ کسی کی بھیجی ہوئی ہے جس پر فانٹ اپلائی نہیں ہوپارہا تھا۔:)
     
  14. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اس کی وجہ یہ ہے کہ تمام نستعلیق فونٹس میں صرف بنیادی حرف کو ہی ٹرانسلیٹ کر دیا گیا ہے۔ اور الگ الگ شکل کو الگ نہیں رکھا گیا، غالباً وجہ فونٹ کا سائز ہو۔ فونٹ ماہرین بہتر بتا سکتے ہیں۔ لہٰذا اگر کسی فونٹ میں تمام اشکال کو الگ الگ کیریکٹر سے بھی میپ کیا گیا ہو گا تو اس میں یہ تحریر درست نظر آئے گی۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  15. حسیب

    حسیب محفلین

    مراسلے:
    1,462
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    فیس بک پہ ایسی تحاریر اکثر دیکھنے کو مل جاتی ہیں
     
  16. افضل حسین

    افضل حسین محفلین

    مراسلے:
    1,176
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Amused
    عجیب و غریب طریقے سے کمپوزکیا گیا ہے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  17. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    30,033
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    sunshine
    ہاں یاد آیا یہاں محفل میں بھی اسی جناتی اردو میں پوسٹ کیا جاتا ہے کبھی کبھی۔ ور میرے استفسار پر یہ جواب ملا ہے کہ موبائل پر ٹائپ کیا ہے۔ معلوم نہیں کون سا کی بورڈ ہے؟
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  18. شکیب

    شکیب محفلین

    مراسلے:
    880
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    چچا میکرو بنادیجے پلیز۔
     
  19. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,469
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
  20. اسد

    اسد محفلین

    مراسلے:
    1,029
    موڈ:
    Busy
    اس صفحے پر جاواسکرپٹ کنورٹر اپلوڈ کیا ہے، اسے استعمال کر کے دیکھیں۔ کچھ عربی حروف کو بھی اردو میں تبدیل کر دیتا ہے اس لیے صرف اردو تحریریں کنورٹ کریں۔ اگر عربی حروف استعمال ہوئے ہوں تو ہ اور ھ میں مسئلہ ہو سکتا ہے۔

    ایڈٹ: اس ٹول کے لیے یہاں ایک نئی لڑی شروع کی ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 22, 2015
    • زبردست زبردست × 6

اس صفحے کی تشہیر