لاہور ہائیکورٹ نے پی ٹی آئی، پی اے ٹی کو مارچ سے روک دیا

زرقا مفتی نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 13, 2014

  1. سید زبیر

    سید زبیر محفلین

    مراسلے:
    4,362
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    برادر عزیز ! قومی اسمبلی اور سینیٹ میں خاصی کثیر تعدا د ہے مگر کیا وہ اپنی پارٹی کے قائد کی مرضی کے خلاف اظہار رائے کے لئے آزاد ہیں ۔ یا صرف اپنے قائد کے بھونپو ہیں۔ پارٹی کی رائے کے خلاف آواز بلند کرنے سے اُن کی ممبر شپ ختم ہو جائے گی ۔ ممبران اجلاس میں شرکت اور قانون سازی میں وہ کتنے سنجیدہ ہیں آپ بخوبی جانتے ہیں قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران یہ صرف اپنی اور اپنے حواریوں کے لئے مراعات لینے کے لئے سرگرم عمل ہوتے ہیں ۔
     
    • متفق متفق × 2
  2. حسیب

    حسیب محفلین

    مراسلے:
    1,656
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    سر! آپ زندگی کے کسی بھی شعبہ کو لے لیں اپنے افسران کے خلاف بات کرنے کی جرات چند لوگوں کے پاس ہی ہوتی ہے اور اکثر اوقات اُن لوگوں کو اس کا خمیازہ بھی بھگتنا پڑتا ہے
    یہی حال اسمبلی میں بھی ہوتا ہے ممبران پارٹی کے قائد کے خلاف بات کر سکتے ہیں لیکن اکثر اتنی جرات نہیں رکھتے اس بات پہ اُن کی پارٹی سے ممبر شپ تو ختم ہو سکتی ہے لیکن اسمبلی سے ممبرشپ ختم نہیں ہو سکتی
    ممبران یقینا قانون سازی کے لیے سنجیدہ نہیں ہوتے لیکن اس میں قصور ممبران کا ہے یا کچھ حد تک ہم لوگوں کا بھی ہے جن کی وجہ سے وہ اسمبلی میں پہنچے ہیں اس میں آئین یا قانون کا کوئی قصور نہیں
     
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر