غزل: کسی کا وعدۂ فردا اگرچہ مبہم ہے ٭ نصر اللہ خان عزیزؔ

محمد تابش صدیقی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 17, 2020

  1. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    24,458
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    کسی کا وعدۂ فردا اگرچہ مبہم ہے
    مگر نشاطِ تمنا کو یہ بھی کیا کم ہے

    وہ مجھ کو دیکھ کے بیگانہ وار ہو جانا
    خدا کے فضل سے اتنا تو ربطِ باہم ہے

    عجیب چیز ہے تکمیلِ آرزو لیکن
    رضائے دوست نہ یہ ہو تو مجھ کو کیا غم ہے

    الجھ گیا ہے زمانے کا مسئلہ یا رب
    مزاجِ یار بہ اندازِ زلف برہم ہے

    عزیزؔ کس سے کہیں ماجرائے شوق و نیاز
    ہمارے رازِ محبت کا کون محرم ہے

    ٭٭٭
    ملک نصر اللہ خان عزیزؔ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر