اقبال عظیم غزل: غم تو ہے لیکن غمِ پیہم نہیں ہے، کم سے کم

محمد تابش صدیقی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 31, 2020

  1. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,098
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    غم تو ہے لیکن غمِ پیہم نہیں ہے، کم سے کم
    آنکھ شاید نم ہو، دامن نم نہیں ہے، کم سے کم

    زخمِ دل اپنی جگہ باقی ہے، یہ سچ ہے مگر
    زخمِ دل کو حاجتِ مرہم نہیں ہے، کم سے کم

    یہ نہیں کہتا کہ میں ہر رنج سے محفوظ ہوں
    لیکن اب مافات کا ماتم نہیں ہے، کم سے کم

    دل کا عالم آج بھی بے شک بہت مشکوک ہے
    جو کبھی پہلے تھا وہ عالم نہیں ہے، کم سے کم

    آپ نے کوشش نہ فرمائی سمجھنے کی کبھی
    ورنہ میری داستاں مبہم نہیں ہے، کم سے کم

    وہ سرِ راہے سہی، رسماً سہی، پرسش تو کی
    یہ بھی کیا کم ہے کہ وہ برہم نہیں ہے، کم سے کم

    اور کوئی فائدہ محرومیوں کا ہو نہ ہو
    اب مجھے احساسِ بیش و کم نہیں ہے، کم سے کم

    یوں بظاہر زندگی سے مطمئن کوئی نہیں
    آرزو جینے کی پھر بھی کم نہیں ہے، کم سے کم

    مختلف ہوتا ہے سب سے کج کلاہوں کا مزاج
    زخم خوردہ ہوں، مگر سر خم نہیں ہے، کم سے کم

    مثلِ گل دل خون ہے اقبالؔ لیکن شکر ہے
    مثلِ شبنم گریۂ کم کم نہیں ہے، کم سے کم

    ٭٭٭
    اقبالؔ عظیم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,827
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    واہ کیا خوبصورت غزل ہے۔ شکریہ جناب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,896
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    بہت خوبصورت! کیا اچھے اشعار ہیں ! کیا بات ہے اقبال عظیم کی!

    وہ سرِ راہے سہی ، رسماً سہی ، پرسش تو کی
    یہ بھی کیا کم ہے کہ وہ برہم نہیں ہے،کم سے کم

    تابش بھائی یہ شعر میں نے یوں پڑھا ہوا یا سنا ہوا ہے ۔ وقت ملے تو دیکھئے گا ۔

    ہاں سرِ راہے سہی ، رسماً سہی ، پرسش تو کی
    یہ بھی کیا کم ہے کہ وہ برہم نہیں ہے، کم سے کم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,098
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    ریختہ پر موجود ان کی کتاب مضراب و رباب میں اسی طرح ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. ظہیراحمدظہیر

    ظہیراحمدظہیر محفلین

    مراسلے:
    2,896
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    میں اپنے "ذخائر" میں چیک کرتا ہوں تابش بھائی ۔ شاید میں نے یہ غزل اقبال عظیم ہی کی آواز میں سنی ہو ۔
    ویسے "وہ" کے ساتھ تو مصرع کی کوئی تک نہیں بنتی۔ بعض اوقات کتاب میں بھی غلطی رہ جاتی ہے پروف ریڈنگ سے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر