غزل براہ اصلاح : عمران میں تو پیڑ تھا ،

عمران سرگانی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 22, 2020

  1. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    569
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    سر الف عین و دیگر اساتذہ ازراہ کرم اصلاح فرمائیں۔۔۔

    عمران میں تو پیڑ تھا دنیا سے کٹ گیا
    گو تیرے راستے کی رکاوٹ تھا ہٹ گیا

    ٹوٹا بدن جو سیپ کا ، موتی بکھر گئے
    دل میں کئی برس کا جو لاوا تھا پھٹ گیا

    پورا جہاں سچائی چھپانے لگا تو پھر
    حق کا علم بنا کے قلم کو میں ڈٹ گیا

    جب میرے گھر کو آگ لگی تو میں نا سمجھ
    بادل سمجھ رہا تھا دھویں کو جو چھٹ گیا

    ہر ایک شخص بند ہے گھونگے سے خول میں
    باہر نہ آ سکا کبھی اندر سمٹ گیا

    مجھ سے کئی دنوں کا جو بچھڑا ہوا تھا وہ
    روتے ہوئے خوشی میں گلے سے لپٹ گیا

    شکریہ
     
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,534
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    درست ہے، بس
    پورا جہاں سچائی چھپانے لگا تو پھر
    سچائی اردو میں چ پر تشدید کے ساتھ بولا جاتا ہے، مفعولن کے وزن پر، محض فتحہ کے ساتھ بر وزن فعولن ہندی میں بولا جاتا ہے، ممکن ہے پنجابی میں بھی یوں ہی بولا جاتا ہو۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. عمران سرگانی

    عمران سرگانی محفلین

    مراسلے:
    569
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    بہت شکریہ محترم ، یہ مصرعہ یوں کر دیا

    پورا جہان سچ کو چھپانے لگا تو پھر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر