1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

غزل برائے اصلاح

محمد فائق نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 22, 2019

  1. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    نہیں کر پائے میلا نفرت و کینہ مرے من کو
    یہی تو بات کرتی ہے پریشاں میرے دشمن کو

    نئے اک زاویے سے یاد کرتا ہوں تجھے ہر دن
    رکھا ہے اس طرح تازہ تری یادوں کے گلشن کو

    حقیقت نے اچانک بیچ میں آکر جگا ڈالا
    میں سپنے میں سنورتا دیکھ نے والا تھا جیون کو

    ہماری گمرہی کا کیا سب تھا تب سمجھ آیا
    جو دیکھا ایک پیمانے سےرہبر اور رہزن کو

    کہیں کا بھی نہیں چھوڑا ہمیں آشفتہ حالی نے
    مکاں ہوتے ہوئے بھی ہم ترستے ہیں نشیمن کو

    ہےدنیا ترجمانِ بے وفائی، وقت پڑنے پر
    یہ دو گز کی جگہ تک بھی نہیں دیتی ہے مدفن کو

    جوانی بوجھ سی محسوس ہونے لگتی ہے اس دم
    کبھی جب یاد کرتا ہوں میں فائق اپنے بچپن کو
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
  3. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,536
    نہیں کر پائے میلا نفرت و کینہ مرے من کو
    یہی تو بات کرتی ہے پریشاں میرے دشمن کو
    ۔۔۔من اوردشمن میں 'من' کی وجہ سے ایطا ہے۔ اس کو تبدیل کر لیں
    دوسرے مصرع میں 'تو: کی جگہ 'اک ' استعمال کریں کہ روانی بہتر ہو جائے گی

    نئے اک زاویے سے یاد کرتا ہوں تجھے ہر دن
    رکھا ہے اس طرح تازہ تری یادوں کے گلشن کو
    ۔۔۔۔یہ شعر درست اور اچھا لگا

    حقیقت نے اچانک بیچ میں آکر جگا ڈالا
    میں سپنے میں سنورتا دیکھ نے والا تھا جیون کو
    ۔۔۔یہ بھی ٹھیک ہے

    ہماری گمرہی کا کیا سب تھا تب سمجھ آیا
    جو دیکھا ایک پیمانے سےرہبر اور رہزن کو
    ۔۔۔پیمانے سے دیکھنا کچھ عجیب لگ رہا ہے،

    کہیں کا بھی نہیں چھوڑا ہمیں آشفتہ حالی نے
    مکاں ہوتے ہوئے بھی ہم ترستے ہیں نشیمن کو
    ۔۔۔۔یہ شعر بھی درست اور اچھا ہے

    ہےدنیا ترجمانِ بے وفائی، وقت پڑنے پر
    یہ دو گز کی جگہ تک بھی نہیں دیتی ہے مدفن کو
    ۔۔۔دوسرے میں اگر 'یہ' کی جگہ 'کہ' استعمال کریں تو زیادہ بہتر نہیں ہو جائے گا؟

    جوانی بوجھ سی محسوس ہونے لگتی ہے اس دم
    کبھی جب یاد کرتا ہوں میں فائق اپنے بچپن کو
    ......جوانی کی جگہ اگر کسی طرح شباب لے آئین تو بہت خوب ہو جائے۔ اور لگتی میں ی کا گرنا اچھا نہیں لگ رہا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  4. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    رہنمائی کے لیے بہت شکریہ محترم
    انشااللہ غلطیوں کو درست کرتا ہوں
     
  5. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    محترم الف عین سر
    محترم عظیم صاحب
    غلطیوں کو درست کرنے کی کوشش کی ہے دیکھیے غزل اب درست ہے یا نہیں
    نہ کینہ کرسکا تاریک میرے دل کے آنگن کو
    یہی اک بات کھلتی ہے مرے نادان دشمن کو
    یا
    یہی اک بات کرتی ہے پریشاں میرے دشمن کو

    ہماری گمرہی کا کیا سبب تھا تب سمجھ آیا
    جو دیکھا اک نظر سے راہبر کو اور رہزن کو

    ہے دنیا ترجمانِ بے وفائی، وقت پڑنے پر
    کہ دو گز کی جگہ تک بھی نہیں دیتی ہے مدفن کو

    شباب اس ددم مجھے بار گراں معلوم ہوتا ہے
    کبھی جب یاد کرتا ہوں میں فائق اپنے بچپن کو

    شکریہ
     
  6. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,536
    'نہ کینہ' نہ جانے کیوں اچھا نہیں لگ رہا۔ کسی طرح عداوت نفرت وغیرہ لایا جا سکتا ہے تو بہت بہتر ہو جائے گا۔ اور دوسرا مصرع 'یہی اک بات کرتی...' بہتر ہے
    گمرہی والے شعر میں 'اور رہزن' میں ر کی وجہ سے تنافر ہے، اس کو بھی کسی طرح اگر تبدیل کر لیں تو یہ خامی بھی دور ہو جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
     
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,518
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    نہ نفرت میں بھی تنافر ہے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  9. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    سیاہ کر سکی نفرت نہ میرے دل کے آنگن کو
    یہی اک بات کرتی ہے پریشاں میرے دشمن کو
    کیا اب مطلع درست ہے؟
     
  10. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,536
    سیاہ کے ساتھ مصرع وزن میں نہیں رہے گا

    نہیں کر پائے ویراں نفرت و کینہ مرے بن کو
    کیسا رہے گا؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    بہت بہت شکریہ
     

اس صفحے کی تشہیر