1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

رئیس امروہوی غزل : آؤ کچھ شغل کریں آج سحر ہونے تک - رئیس امروہوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 4, 2018

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    غزل
    آؤ کچھ شغل کریں آج سحر ہونے تک !
    توبہ کر لیں گے فرشتوں کو خبر ہونے تک

    دیکھ اے رتبۂ انسانیتِ خاص مجھے
    کتنے ادوار سے گزرا ہوں بشر ہونے تک

    اور ہو جائے گا کچھ شمس و قمر کا مفہوم
    ذرۂ خاک ! ترے شمس و قمر ہونے تک

    موت کے گتنے مراحل سے گزرنا ہے ہمیں
    آخری مرحلۂ زیست کے سر ہونے تک

    فائدہ قافلے والوں کے حدی خوانی سے ؟
    شوقِ منزل نہ رہا حُکم سفر ہونے تک

    ہم بھی تھے پیش روِ لشکرِ شاہین و عقاب
    برطرف قائدۂ جنبشِ پر ہونے تک

    کوئی بھی محرمِ آدابِ تماشا نہ رہا
    جلوۂ دوست کے شایان نظر ہونے تک

    کون بتلائے کہ کہسار پہ کیا کیا گزری
    سینۂ سنگ میں ہیجانِ شرر ہونے تک

    کیا گزر جائے گی ، الفاظ و معانی پہ رئیسؔ
    عیبِ تخلیق کے تخلیق ہنر ہونے تک
    رئیس امروہوی
    1965ء
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 4, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. سفیر آفریدی

    سفیر آفریدی محفلین

    مراسلے:
    403
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    موت کے گتنے مراحل غلط ہوگا موت کے کتنے مراحل

    شرر سینے کی اس میں امروہی صاحب نے بہت خوب ڈالا ہے جیسے
    توبہ کر لیں گے فرشتوں کو خبر ہونے تک
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,371
    خوب جناب!
     
  4. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    بری بات :shameonyou:
     
  5. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    شکریہ بھائی
    شکریہ
    ہم جب انھیں خبر سے بچا رہے ہیں تو اچھی بات ہوئی بری کیسے؟
     
  6. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    ازراہ تفنن کہا ہے بھائی جی۔
    پہلے مصرعے میں دعوت گناہ ہے جبکہ دوسرے میں توبہ کا ذکر یعنی گناہ اس امید پر کہ فرشتوں کو خبر ہونے سے پہلے توبہ کر لی جائے گی۔ اس لیے کہا بری بات :shameonyou:
     

اس صفحے کی تشہیر