عالم تمام شے ہے مگر تجھ سی شے کہاں ٭ راحیلؔ فاروق

محمد عدنان اکبری نقیبی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 24, 2019

  1. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,959
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    عالم تمام شے ہے مگر تجھ سی شے کہاں
    ہے اور کچھ پتا نہیں چلتا کہ ہے کہاں

    پیاسا ہے پارساؤں کی بستی میں ہر کوئی
    کوئی بہشت ڈھونڈیے دوزخ میں مے کہاں

    ہم اٹھ کے اس کی بزم سے جانے کہاں گئے
    ہم سے کسی نے یہ بھی نہ پوچھا کہ اے کہاں

    گرتے ہیں ٹوٹ ٹوٹ کے تارے شبِ فراق
    اونچی ہوئی تو جائے گی نالوں کی لے کہاں

    مٹی پلید ہو گئی پھر مےکدے کی آج
    کوئی بتاؤ شیخ کو کرتے ہیں قے کہاں

    اے میرِ کاروانِ وفا دھیرے دھیرے چل
    ان منزلوں کے راستے ہوتے ہیں طے کہاں

    سب لوگ چل رہے ہیں کوئی پوچھتا نہیں
    جو پہلے ہم سفر تھے گئے پے بہ پے کہاں

    راحیلؔ دل کی آہ کے جو جو مقام ہیں
    وہ قسمتِ رباب و دف و چنگ و نے کہاں

    راحیلؔ فاروق​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
  2. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    8,138
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    واہ کیا خوبصورت نبھایا ہے قافیوں کو۔

    خوبصورت شراکت!!!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,959
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    شکریہ سر ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  4. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    863
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    عدنان بھائی پیشکش کا شکریہ -
    راحیل بھائی آپ بھی لگتا ہے یہیں آس پاس ہوتے ہیں تو کیوں نہ آپ کو مخاطب ہی کر لیا جائے -

    عالم تمام شے ہے مگر تجھ سی شے کہاں
    ہے اور کچھ پتا نہیں چلتا کہ ہے کہاں

    میں اگر یہ شعر کہتا تو یوں کہتا :

    عالم کمال شے ہے مگر دل سی شے کہاں
    ہے ،اور کچھ پتا نہیں چلتا کہ ہے کہاں ؟

    یوں خدا کو شے کہنے کا احتمال باقی نہ رہتااور شعر کا حسن بھی برقرار رہتا -

    پیاسا ہے پارساؤں کی بستی میں ہر کوئی
    کوئی بہشت ڈھونڈیے دوزخ میں مے کہاں

    بلاتبصرہ

    ہم اٹھ کے اس کی بزم سے جانے کہاں گئے
    ہم سے کسی نے یہ بھی نہ پوچھا کہ اے کہاں

    پھڑکتا ہوا شعر-جان غزل -<جانے کہاں گئے> اور< اے کہاں؟ > نے وہ برجستگی اور بیساختگی پیدا کر دی ہے شعر میں کہ جواب نہیں -

    گرتے ہیں ٹوٹ ٹوٹ کے تارے شبِ فراق
    اونچی ہوئی تو جائے گی نالوں کی لے کہاں

    پہلا مصرع حال میں دوسرا مستقبل میں ،یعنی <گرتے ہیں تارے> اور <جائے گی لے کہاں >کچھ بھلا نہیں لگ رہا -میں یوں کہتا :

    گرتے ہیں ٹوٹ ٹوٹ کے تارے شبِ فراق
    نالے بلند ہوگئے تھے ، جاتی لے کہاں

    مٹی پلید ہو گئی پھر مےکدے کی آج
    کوئی بتاؤ شیخ کو کرتے ہیں قے کہاں

    واہ -اسے بھی اگر میں کہتا تو یوں کہتا :

    مٹی پلید ہو گئی پھر مے کدے کی آج
    سمجھاؤ کوئی شیخ کو کرتے ہیں قے کہاں

    اے میرِ کاروانِ وفا دھیرے دھیرے چل
    ان منزلوں کے راستے ہوتے ہیں طے کہاں

    واہ-کیا خوب

    سب لوگ چل رہے ہیں کوئی پوچھتا نہیں
    جو پہلے ہم سفر تھے گئے پے بہ پے کہاں

    کیا کہنے -

    راحیلؔ دل کی آہ کے جو جو مقام ہیں
    وہ قسمتِ رباب و دف و چنگ و نے کہاں

    خوب -سبحان الله -
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. سحر کائنات

    سحر کائنات محفلین

    مراسلے:
    61
    ہم اٹھ کے اس کی بزم سے جانے کہاں گئے
    ہم سے کسی نے یہ بھی نہ پوچھا کہ اے کہاں



    یوں دیکھیے

    ہم اٹھ کے ان کی بزم سے اس بھرم میں گئے
    ہم سے بھی کوئی پوچھے گا ,چلے کہاں
    معزرت کے ساتھ
    اصلاح نہیں ہے
    صرف رائے
     
  6. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,830
    خدا کو شے کہنے میں کوئی مضائقہ نہیں (حدیث کی کتاب اصول کافی دیکھیے)
    یہاں یہ کہا گیا ہے کہ شیخ اتنا ٹن ہے کہ اسے سمجھ نہیں آرہا کہ کہاں قے کی جاتی ہے لہٰذا کوئی اسے بتاؤ. شیخ کو ٹن حالت میں سمجھایا نہیں جائے گا بلکہ بتایا جائے گا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    863
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    جناب یہ اصلاحی تجاویز نہ تھیں محض خواہش کا اظہار تھا کہ میں اگر کہتا تو یوں کہتا -
    حوالہ آپ پہ ادھار رہا -حدیث پیش کیجیے جس میں خدا کو شے کہا گیا ہے -

    <کوئی بتاؤ...>پہ میں نے داد دے کر ہی خواہش کا اظہار کیا ہے کہ میں یوں کہتا -ویسے ٹنکی میں سمجھانا اور بتانا دونوں بیکار ہیں -ہاں ایک کیفیت ہوتی ہے ابتدائے شراب نوشی میں کہ جسم حرام کو قبول نہیں کرتا اور ٹن ہونے سے پہلے ہی قے آجاتی ہے ،تب ہر طور کا سمجھانا مفید ہے -
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. ربیع م

    ربیع م محفلین

    مراسلے:
    3,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Lonely
    ویسے سوال تو یہ فاخر رضا صاحب سے کیا گیا ہے لیکن میں بھی اس میں کچھ حصہ ڈال دیتا ہوں.
    اللہ رب العزت قرآن مجید میں ارشاد فرماتے ہیں :
    القرآن - سورۃ نمبر 6 الأنعام
    آیت نمبر 19

    أَعوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْطانِ الرَّجيم
    بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

    قُلۡ اَىُّ شَىۡءٍ اَكۡبَرُ شَهَادَةً ؕ قُلِ اللّٰهُ ‌ۙ شَهِيۡدٌ ۢ بَيۡنِىۡ وَبَيۡنَكُمۡ‌ ۚ وَاُوۡحِىَ اِلَىَّ هٰذَا الۡقُرۡاٰنُ لِاُنۡذِرَكُمۡ بِهٖ وَمَنۡۢ بَلَغَ‌ ؕ اَئِنَّكُمۡ لَتَشۡهَدُوۡنَ اَنَّ مَعَ اللّٰهِ اٰلِهَةً اُخۡرٰى‌ؕ قُلْ لَّاۤ اَشۡهَدُ‌ ۚ قُلۡ اِنَّمَا هُوَ اِلٰهٌ وَّاحِدٌ وَّاِنَّنِىۡ بَرِىۡٓءٌ مِّمَّا تُشۡرِكُوۡنَ‌ۘ ۞

    ترجمہ:
    کہہ کون سی چیز گواہی میں سب سے بڑی ہے ؟ کہہ اللہ میرے درمیان اور تمہارے درمیان گواہ ہے اور میری طرف یہ قرآن وحی کیا گیا ہے، تاکہ میں تمہیں اس کے ساتھ ڈراؤں اور اسے بھی جس تک یہ پہنچے، کیا بیشک تم واقعی گواہی دیتے ہو کہ بیشک اللہ کے ساتھ کچھ اور معبود بھی ہیں ؟ کہہ دے میں (یہ) گواہی نہیں دیتا، کہہ دے وہ تو صرف ایک ہی معبود ہے اور بیشک میں اس سے بری ہوں جو تم شریک ٹھہراتے ہو۔

    اور اسی پر امام بخاری رحمہ اللہ نے اپنی "صحیح" میں کتاب التوحید میں باب باندھا ہے
    (باب : قُلْ أَيُّ شَيْءٍ أَكْبَرُ شَهَادَةً قُلْ اللهُ ، فسمى الله تعالى نفسه شيئاً )
    تو یہاں اللہ نے اپنے آپ کو شیء قرار دیا ہے.
    اس سلسلے میں اور بھی بہت سے علماء کے فتاوی دیکھے جا سکتے ہیں.

    خلق قرآن کے موضوع پر یہ امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ کی معتزلہ کے خلاف مناظرے میں ایک دلیل بھی تھی
    واللہ اعلم بالصواب
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • زبردست زبردست × 1
  9. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,830
    شراب نوشی کے تدریجی مراحل پر آپ کا مراسلہ مجھ ناچیز کے لئے انتہائی معلوماتی ہے
     
  10. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,830
    جزاک اللہ
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  11. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,830
    اصول کافی
    جلد اول
    کتاب توحید
    باب 2
    صفحہ 162
    Usool e Kafi - Volume I.pdf - Box
    ڈاؤنلوڈ کرنے کا پتہ
     
  12. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    863
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    ربیع میم صاحب -آپ کی بات میرے لیے ایک نیا انکشاف ہے کہ خدا کو شے کہا جا سکتا ہے -آپ نے ایک آیت بھی پیش کی ہے جو آپ کے نزدیک سند ہے -لیکن انٹرنیٹ کی معلومات پر بھروسہ نہیں کیا جا سکتا -آپ کو ایسا مواد بھی مل جائے گا :
    God is no thing, but he is in charge of things

    نیٹ کی محافل پہ آپ کو ایک سے ایک فنکار ملے گا، مصنوعی اخلاق کا سرخی پاوڈر اور مسکارہ لگائے جو آپ کو اپنی طرف کھینچتا ہو گا یعنی اپنے مسلک اور اپنی جماعت کی طرف -جہاں آپ نے ایسی بات کی جو داعی کی جماعت کے منشور کے مطابق ہے تو خوب بغلیں بجائی جائیں گی اور جہاں ایسی بات کی جو اس کی جماعت کے منشور سے ہٹ کر ہے تو منھ چڑایا جائے گا-لا حول ولا قوة -

    بہر حال کل میں نے خدا کو شے کہنے کی بابت نقطۂ نظر جاننے کے لیے ایک عالم و مفتی ،جو میرے دوست بھی ہیں، کو فون کیا- ان کی بھی اس موضوع پر تحقیق نہیں تھی ،یہی فرما رہے تھے کہ تحقیق کے بعد بتاؤں گا -بہر حال ان کا ذوق و وجدان بھی خدا کو شے کہنے کے متعلق میرے موافق تھا کہ یہ نامناسب سا لگتا ہے-حافظ بھی تھے آیت کے متعلق یہی فرما رہے تھے کہ یہ اس باب میں صریح نہیں -ممکنہ مراد یہ ہو سکتی ہے کہ پیچھے شہادت کا ذکر ہے سو آگے الله ﷻ کا بطور شاہد ذکر آیا ہو -

    بہرحال شرعی فیصلہ تو بعد تحقیق وہ کر ہی لیں گے ،فی الحال شعر کے نقطۂ نظر سے یہی کہوں گا کہ بالفرض مان لیا جائے امام احمد بن حنبل نے معتزلہ کے خلاف مذکورہ نقطۂ نظر اپنایا تھا ، ممکن ہے وہ نقطۂ نظر موجود و غیر موجود کی بحث کے حل کے طور پہ ہو -شعر کے چسکے کے طور پہ خدا کو شے کہنا کیا ضروری ہے -اکثر شعراء نے خدا کو ہستی،ذات اور احساس لکھا ہے-بشیر بدر کا شعر یاد آیا :

    خدا ایسے احساس کا نام
    رہے سامنے اور دکھائی نہ دے
     
  13. ربیع م

    ربیع م محفلین

    مراسلے:
    3,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Lonely
    آپ کے حسن ظن کا شکریہ کہ میں نے محض نیٹ کی معلومات ہی آپ کی خدمت میں پیش کی ہیں
    آپ کو قرآن کی آیت بھی پیش کی اور اس پر امام بخاری رحمہ اللہ کا فہم کیا تھا وہ بھی پیش کیا اور بھی کئی علماء کا اس پر فتویٰ موجود ہے
    جو طوالت کے پیش نظر ذکر نہیں کیا
    بہرحال اسے آپ تسلیم کریں یا نا کریں یہ آپ کی مرضی ہے
    اور نہ ہی یہ کوئی ایمان و کفر کا معرکۃ الآراء مسئلہ ہے
    البتہ نیٹ سے کاپی پیسٹ کا تمغہ وصول کر کے خوشی ہوئی :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  14. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    863
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    محترمی آپ کی معلومات کو میں نے کاپی پیسٹ نہیں کہا -لیکن آپ کا مجھ سے واسطہ انٹرنیٹ کے ذریعے ہے-سو میرے لیے آپ کی معلومات کا ذریعہ بہرحال انٹر نیٹ ہے -بس اتنی سی بات عرض کی تھی -
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    2,830
    کیسا گھمایا
     

اس صفحے کی تشہیر