سقوطِ ڈھاکہ اور "قومی ترانہ"

محمد وارث نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 16, 2020

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    29,937
    اصغر خان مرحوم نے تو ۱۹۹۰ کے الیکشن کو بھی عدالت میں چیلنج کیا تھا جس کا کئی دہائیوں بعد عدالت عظمی نے فیصلہ سنایا کہ یہ الیکشن بھی دھاندلی زدہ تھے۔
    1990 election was rigged, rules SC - Pakistan - DAWN.COM

    باقی ماندہ پاکستان میں اگر الیکشن ہو جاتے تو عین ممکن تھا کہ اس وقت کی اپوزیشن جماعتیں الیکشن کمپین میں سقوط ڈھاکہ کے ذمہ داران کو نمایاں کرتی اور یوں بھٹو الیکشن ہار جاتے۔ بہرحال سقوط ڈھاکہ جیسے قومی سانحہ کے بعد ایک ایسے قومی لیڈر کی اشد ضرورت تھی جو باقی ماندہ پاکستان کو متحد رکھ سکے اور ملک کو مزید توڑ پھوڑ سے بچائے۔ بھٹو نے اقتدار سنبھالتے ہی فی الفور نیا آئین منظور کر وایا اور بلوچستان و صوبہ سرحد میں جاری باغیوں کی کاروائیوں کو ختم کیا۔
    البتہ حمود الرحمان کمیشن کی رپورٹ ملنے کے باوجود انہوں نے سقوط ڈھاکہ کے ذمہ داروں کا احتساب نہیں کیا کیونکہ اس میں وہ خود بھی ملوث تھے۔ یوں ملک میں اجتماعی این آر او دینے کی بنیاد بھی جمہوری انقلابی بھٹو نے ہی ڈالی۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. بابا-جی

    بابا-جی محفلین

    مراسلے:
    1,404
    اور وُہ رُک گئے۔

    ہائے بے چارہ مجبُور جنرل!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    29,937
    تالی دونوں ہاتھوں سے بجتی ہے۔ قانون کی نظر میں رشوت دینے والا اور لینے والا دونوں مجرم ہیں۔
    اگر بھٹو ووٹ کو عزت دینے والے جمہوری انقلابی لیڈر ہوتے تو ۱۹۷۰ کے الیکشن نتائج کو تسلیم کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر کا عہدہ بخوشی سنبھالتے۔ ادھر تم ادھر ہم، اگر کوئی اسمبلی اجلاس میں گیا تو اس کی ٹانگیں توڑ دوں گا کے نعرے نہ مارتے پھرتے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  4. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ہم کہ ٹھہرے اجنبی اتنی مداراتوں کے بعد
    پھر بنیں گے آشنا کتنی ملاقاتوں کے بعد

    کب نظر میں آئے گی بے داغ سبزے کی بہار
    خون کے دھبے دھلیں گے کتنی برساتوں کے بعد
     
    • زبردست زبردست × 1
  5. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    تو نواسا کتنے کورے کھائے لاہوریوں نے نہ کہہ رہے ہوتے:):):):) پہلے بھٹو صاحب کے جوائی قوم کی ایسی تیسری کرتے رہے اور اب کورے (کوڑے) نواسے صاحب دکھا رہے ہیں :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    29,937
    بھٹو خاندان میں شاید خود بھٹو کے علاوہ اور کسی کی اردو ٹھیک نہیں تھی۔ مجھے یاد ہے ۹۰ کی دہائی میں بینظیر کہا کرتی تھی کہ میں اپنی تقریر ختم کر رہی ہوں کیونکہ آذان بج رہا ہے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • غمناک غمناک × 1
  7. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    15,310
    جھنڈا:
    Pakistan
    :eek::eek::eek:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  8. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool

    دسمبر کے مہینہ میں عجیب غم کا احساس ہوتا ہے، موسم کی شدت اپنی جگہ پر، لیکن ہم پر تو اس مہینہ دو ایسے سانحہ گزرے ہیں کہ دل خون کے آنسو روتا ہے، پہلے سقوط ڈھاکہ 1971 ء اور پھر سانحہ اے پی ایس جو 2014 ء میں رونما ہوا۔

    فیض احمد فیض، نصیر ترابی اور حبیب جالب کا شکریہ انھوں نے شاعری لکھی، جس میں وہ سقوط ڈھاکہ کے سانحہ کو بیان کرتے رہے اور قوم فیض اور نصیر کی شاعری کو عاشق اور محبوب کا کلام سمجھتی رہی اس سے ہماری ذہنی پسماندگی کا اندازہ کیا جا سکتا ہے۔ جالب کیونکہ عوامی شاعر تھے اس لئے انھوں نے اجنبی اور ہمسفر والی بات نہیں کی کھل کے بات کی اور فرمایا کہ راستہ کٹ رہا ہے اور منزل کھوئی جا رہی ہے۔۔۔۔۔۔۔

    سقوط ڈھاکہ اور ہم - ہم سب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    29,937
    جب جمہوری انقلابی ووٹ کو عزت دینے والے بھٹو سقوط ڈھاکہ کی بنیاد رکھ رہے تھے :(
    [​IMG]
     
    • متفق متفق × 1
  10. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    اور بھی پتہ نہیں کیا کیا بولتی تھیں عرفان حیدر عابدی صاحب بات کررہے تھے تو فرمانے لگیں ۔ کہ مریسآ کیوں پڑھ رہے ہیں یہ؟؟؟ ۔۔۔(مرثیہ) ۔۔۔۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    پروفیسر غفور صاحب مرحوم ہمارے والدکے بہت دیرینہ دوستوں میں سے تھے ۔۔۔جو سلوک ان حضرت نے اُنکے ساتھ اور اُنکے خاندان سے روا رکھا وہ انتہائی اُفسوسناک تھا ۔۔تاریخ گواہ ہے کہ جماعت کے انتہائی شریف النفس لوگوں میں شمار ہوتا تھا اُنکا۔۔یہ ووٹ کو عزت دیں گے انسان کو تو عزت دے دیں۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    29,937
    یہاں جمہوری انقلابی بھٹو ایک جلسہ عام میں خطاب کے دوران ملک کی اکثریت یعنی بنگالیوں کو کہہ رہے ہیں کہ وہ جہنم میں جائیں، سور کے بچے ہیں :(

    یہ وہی گھٹیا زبان ہے جو آجکل اپنے جلسوں میں جمہوری انقلابی پی ڈی ایم استعمال کر رہی ہے
     
    • متفق متفق × 1
  13. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    17,835
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    پیپلز پارٹی کے جیالے آج تک وہی زبان بول رہے ہیں جنکی کاشت چالیس سے پچاس سال پہلے شروع کی گئی تھی پتہ نہیں یہ آپکے علم میں ہے کہ نہیں کہ ان صاحب نے سول سرونٹ کی فائل پر Extension یہ لکھ کے کی تھی
    Let the Bastard die on chair
    یہ ان لوگوں کی زبان ہے باتیں کرتے عزت کی۔۔۔۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,127
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    پاکستانی تاریخ کا سب سے تکلیف دہ واقعہ ہے یہ۔

    بہت شکریہ وارث بھائی کے آپ نے اپنے مطالعے میں ہمیں شریک کیا۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 2
  15. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,980
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    اس اقتدار کے کھیل میں "تین ہاتھوں" سے تالیاں بجائی جا رہی تھیں۔ جنرل یحییٰ کسی طور اقتدار چھوڑنے کو تیار نہیں تھا، حتیٰ کہ سقوطِ ڈھاکہ کے بعد بھی وہ کہتا رہا کہ مجھے کیوں نکالا جا رہا ہے، میں نے کیا کیا ہے؟

    دوسری طرف شیخ مجیب اور بھٹو کے متعلق ایک ستم ظریف گورے مبصر نے یہ تبصرہ کر رکھا ہے کہ مجیب اور بھٹو دونوں ہی وزیرِ اعظم بننا چاہتے تھے، اب ایک ملک میں دو وزیرِ اعظم تو ہو نہیں سکتے سو انہوں نے دو الگ ملک بنا لیے اور دونوں ہی وزیرِ اعظم بن گئے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
    • غمناک غمناک × 1
  16. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    15,310
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہاتھیوں کی لڑائی میں جنرل پس گیا۔ بے چارہ!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 6
  17. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,127
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    لیکن شیخ مجیب کو اکثریت حاصل تھی سو وہ حق پر ہوئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 2
  18. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,980
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    جی نظریاتی طور پر آپ درست کہتے ہیں۔ لیکن شیخ جی کے چھ نکات بھی بس یوں سمجھیے کہ مشترکہ پاکستان کا خاتمہ ہی تھا، شاید کچھ بعد میں ہوجاتا۔ اور ہاں شاید اس صورت میں فوج کی وہ جگ ہنسائی نہ ہوتی جو کہ ہوئی۔ لیکن یہ بھی ایک "سازشی نظریہ" اب تک گردش میں ہے کہ اس سارے کھیل کا مقصد ہی فوجی شکست اور اس کی جگ ہنسائی تھا اور اسی لیے 16 دسمبر سے پہلے کئی بار سیز فائر کی کوشش ناکام بنائی گئی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • متفق متفق × 2
  19. بابا-جی

    بابا-جی محفلین

    مراسلے:
    1,404
    بنگالی ہم سے بوجوہ بددِل ہو چُکے تھے مگر وُہ ہندوستان کا حِصہ نہیں بنے جو ثابت کرتا ہے کِہ یِہ جنگ اپنے حقوق حاصل کرنے کی تھی جِس میں وُہ کامیاب ہو گئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
  20. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,127
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    ویسے مشرقی اور مغربی پاکستان میں لسانی اور ثقافتی دوری اپنی جگہ ایک حقیقت تھی اور ان دو باتوں کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ اس کا بہترین حل یہی ہوتا کہ دونوں بطورِ ریاست انتظام ِ مملکت سنبھالتی اور وفاقی کے درجے پر ایک دوسرے سے جُڑی رہتیں۔ اور آپس میں باہمی اتفاق سے معاملات طے کر لیے جاتے۔

    لیکن پاکستان کا المیہ یہ ہے کہ اسے مخلص لوگ (بالخصوص لیڈر) بہت ہی کم ملے۔ اور جو مخلص نہ ہو اُ س سے کسی بھلائی کی توقع کیونکر کی جا سکتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • متفق متفق × 2

اس صفحے کی تشہیر