رُکا ہوں کس کے وہم میں، مرے گمان میں نہیں --- (غلام حسین ساجد)

فرقان احمد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 10, 2020

  1. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    9,982
    --------------------------------------------------------

    رُکا ہوں کس کے وہم میں، مرے گمان میں نہیں
    چراغ جل رہا ہے اور کوئی مکان میں نہیں

    وہ طائرِ نگاہ بھی سفر میں ساتھ ہے مرے
    کہ جس کا ذکر تک ابھی کسی اڑان میں نہیں

    مری طلب مرے لیے ملال چھوڑ کر گئی!
    جو شے مجھے پسند ہے، وہی دکان میں نہیں

    کوئی عجیب خواب تھا اگر میں یاد کر سکوں
    کوئی عجیب بات تھی مگر وہ دھیان میں نہیں

    وہ دشمنی کی شان سے ملے تو دل میں رہ گئے
    مگر یہ بات دوستی کی آن بان میں نہیں

    میں رزقِ خواب ہو کے بھی اسی خیال میں رہا
    وہ کون ہے جو زندگی کے امتحان میں نہیں

    وہ خواب شامِ ہجر میں سحر کی آس تھا مجھے
    مگر وہ تیرے وصل کی کھلی امان میں نہیں

    --------------------------------------------------------
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 10, 2020
    • زبردست زبردست × 2
  2. میم الف

    میم الف محفلین

    مراسلے:
    291
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    حضرت!
    آپ کے مراسلے دیکھے، تبصرے پڑھے، باتیں سنیں، سب کو لطیف پایا۔
    لیکن جو باریکی آپ کے فانٹ استعمال کرنے میں ہے، اُس کا جواب نہیں۔
    دعا ہے کہ آپ ہمیں یونہی عینک پہنواتے رہیں، آمین :nerd2:
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. میم الف

    میم الف محفلین

    مراسلے:
    291
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    دوسرے الفاظ میں ہم یہ کہنا چاہتے ہیں کہ اگر آپ فانٹ بڑی استعمال کر لیں تو ہمیں پڑھنے میں آسانی رہے۔۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  4. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    17,922
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    کیا کہنے۔۔۔ شاندار
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    9,982
    :)
     
  6. محمد اسامہ علی

    محمد اسامہ علی محفلین

    مراسلے:
    47
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Happy

اس صفحے کی تشہیر