داغؔ کی روح سے معذرت: سبب کھلا یہ ہمیں ان کے منہ لگانے کا

عاطف ملک نے 'مزاحیہ شاعری' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 8, 2019

  1. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,092
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    سبب کھلا یہ ہمیں ان کے منہ لگانے کا
    ہے ان کا موڈ کسی کام میں پھنسانے کا

    اسے رقیب نے بھیجا ہے حل شدہ پرچہ
    وہ پاس ہو گیا تو ہاتھ پھر نہ آنے کا

    کیا ہے عشق تو چپ چاپ کاٹو ہجر کی رات
    نہیں ہے فائدہ اب کوئی ٹرٹرانے کا

    پکڑ لیا ہمیں ابا نے کش لگاتے ہوئے
    "کوئی محل نہ رہا اب قسم کے کھانے کا"

    کہاں چھُپی ہے؟ ذرا اپنے بھائیوں کو تو روک
    یہ مار ڈالیں گے ہیرو ترے فسانے کا

    وہ جو ہے جیسا بھی ہے عینؔ خوبصورت ہے
    مذاق اڑاؤ نہ قدرت کے کارخانے کا

    عینؔ میم
    اگست ۲۰۱۹​
     
    آخری تدوین: ‏اگست 8, 2019
    • پر مزاح پر مزاح × 10
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,975
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    مزے دار مزیدار

     
    • متفق متفق × 3
  3. مریم افتخار

    مریم افتخار مدیر

    مراسلے:
    4,531
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    آہا!
    بہت خوب.
     
    • متفق متفق × 1
  4. عاطف ملک

    عاطف ملک محفلین

    مراسلے:
    1,092
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    بہت شکریہ :)
    نوازش:)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,898
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بہت پرمزاح ،
    لاجواب غزل ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر