حکیم سعید شہید کو ہم سے بچھڑے 14 برس بیت گئے

محمد بلال اعظم نے 'متفرقات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 17, 2012

  1. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    حکیم سعید شہید کو ہم سے بچھڑے آج 14 برس بیت گئے۔

    حکیم حافظ محمد سعید (شہید) نے اللہ کے بندوں کی بے لوث خدمت کی ہے جو باری تعالیٰ کے نزدیک انتہائی پسندیدہ اور بہت زیادہ باعث ثواب ہے بلکہ خدمت خلق کی اعلیٰ روایات ہماری تاریخ کا حکیم حافظ محمد سعید (شہید) باب ہیں۔ اگر ہم شہید پاکستان حکیم محمد سعید کی زندگی کے معمولات پر نظر ڈالیں تو ہمیں ان کا ہر لمحہ حیات خدمت خلق میں مصروف نظر آتا ہے۔ حکیم حافظ محمد سعید (شہید) فرمایا کرتے تھے کہ بلند مرتبہ اپنی ذاتی خواہشات کی قربانی کے بغیر حاصل نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے زندگی کے ہر گوشے میں سادگی اختیار کی، سادہ لباس چھوٹا گھر، چھوٹی کار استعمال کی اور اپنے تمام وسائل قوم کی فلاح و بہبود کے لئے وقف کر دئیے اور خدمت خلق کی روشن اور قابل تقلید روایات میں اضافہ کیا۔
    شام ہمدرد
    علم و عقل کی گہرائیوں تک رسائی کے لئے حکیم محمد سعید نے شام ہمدرد کا اجرا غالباً 1962ءمیں کیا تاکہ معاشرہ کی دیگر برائیوں کا احاطہ کیا جائے اور صلاحیت پیدا کی جائے جس سے راہ راست حاصل ہو اور ملک کے مفاد میں ہو، سوچ و فکر سے معاملات کی تسخیر ہو سکے۔ یہ ایک ایسی کٹھن راہ تھی مگر راہ مستقیم تھی کہ جو گذشتہ تقریباً نصف صدی سے باقاعدگی کے ساتھ صاحبان کی فکر و دانش کی رائے سے اچھے اسلوب میسر آتے ہیں۔ یہ ہر ماہ کا بہترین شغل تھا۔
    الحاج حافظ حکیم محمد سعید حکیم، سائنسدان تین چیزوں کی آمیزش اور ترکیب سے حکمائ، ڈاکٹر، سائنسدان اکٹھے کر دئیے اور تینوں میدانوں میں دانشور اپنے پیغام، علم، منزل، تجربہ سے کردار ادا کرتے رہے۔ مقصد یہ تھا کہ ہر طریقہ علاج، زندگی کی صدا لوگوں تک پہنچ جائے۔ یہ حکیم محمد سعید صاحب کی بلند ہمت بھی اور ان کے جوش عمل نے تینوں طبقوں کو اکٹھا کر دیا اور ہر ماہ ایک ”فکر“ سامنے ہوتی۔ اس موضوع کو بلند نظری سے کامرانی ہوتی۔ ہر شخص اپنی سپیشلسٹی کا پابند رہا۔ مگر دوستی رواداری کا نیا باب تھا۔ حکیم صاحب کے ہر کام میں ایک پیغام ہوتا تھا۔
    حافظ حکیم محمد سعید بات چیت میں بڑے میٹھے انسان تھے۔ ان کے مزاج میں غصہ نہ تھا۔ حاضر جوابی میں وہ لاثانی تھے۔پیارے نبی سے محبت تھی اور ان کے پیروکار تھے۔ بدگمانی کسی کے لئے نہیں رکھتے تھے۔ سوجھ بوجھ میں یکتا تھے۔ یہ ان کی اندرونی بصارت vision تھی کہ جوانی میں جائے پیدائش کوچہ کاشغر دہلی (انڈیا) سے جدائی کا فیصلہ کر لیا جہاں انہوں نے زندگی کا سانس پہلی بار 9 جنوری 1920ء(16 ربیع الثانی 1338ھ) میں لیا تھا۔ ان کے محترم والد بھی حکیم تھے اور وہ بھی حافظ قرآن تھے۔ والدہ ربیعہ بیگم بہن بھائیوں حمیدہ بیگم، حکیم عبدالحمید، محمود بیگم اور عبدالوحید کو چھوڑ کر اپنی شریک حیات نعمت بیگم کو لے کر پاکستان کی طرف کوچ کر لیا اور نئے پاکستان کراچی ملک میں قسمت آزمانے آ گئے۔ ایسا زندگی میں فیصلہ کرنا بڑا مشکل کام ہے۔
    حافظ حکیم محمد سعید کی بڑی نایاب کوشش ہمدرد یونیورسٹی کراچی کا قیام 28 اگست 1991ءہے جس میں بے شمار ادارے، کالج آف میڈیسن و ڈینٹسٹری 1994ءاور حکمت کالج 1995ءہمدرد ویلج سکول 1997ءکے آغاز کا ہے۔ مزے کی بات یہ ہے کہ حکیم محمد سعید جب گورنر سندھ جولائی 1993ءجنوری 1994ءتک رہے۔ ان دنوں میں آپ نے صوبہ سندھ میں تعلیم کے فروغ کے لئے بڑے کام کئے۔ ہمدرد یونیورسٹی کے علاوہ چار مزید جامعات یونیورسٹیوں کو چارٹر عطا کئے۔ آپ نے اپنے مشن کو قائداعظم محمد علی جناح کے خیالات کے مطابق رکھا۔



    حکیم محمد سعید شہیدِ پاکستان .... خدمت خلق کا روشن چراغ
    [​IMG]
     
    • زبردست زبردست × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    جزاک اللہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. انیس الرحمن

    انیس الرحمن محفلین

    مراسلے:
    8,248
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    کہیں تو "جاگو جگاؤ" کے اسکین پیجز بھیج دوں۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  4. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    بھیج دیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. انیس الرحمن

    انیس الرحمن محفلین

    مراسلے:
    8,248
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ای میل کردوں گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. Muhammad Qader Ali

    Muhammad Qader Ali محفلین

    مراسلے:
    1,014
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بہت زبردست انسان تھے
    اللہ ان کو اپنی رحمت سے جنت الفردوس عطا فرمائے۔
    آمین
    ان کے قاتل قوم کے قاتل ہے تعلیم کے قاتل ہیں حکمت کے قاتل ہیں
    کتنی ہی بری جگہہ ہوگی جہنم کی ان جہننینوں کے لیے۔
    قوم سے ایک نوبل فرد کو چھین لیا، بے شک نوبل انعام نہیں ملی لیکن ہمارے نزدیگ ان کی حیثتیت لاکھ گنا زیادہ ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  7. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,069
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    جزاک اللہ بلال

    اس میں کوئی شک نہیں کہ شہید بے لوث انسان تھے۔ اللہ تعالٰی سے دعا ہے کہ ان پر اپنی بے شمار رحمتیں نازل فرمائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  8. پپو

    پپو محفلین

    مراسلے:
    6,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    کیا شخص تھا کیا یاد دلایا دیا
    اللہ تعالی اسے غریق رحمت کرے آمین
     
    • زبردست زبردست × 2
  9. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    لیکن یہ ہے کیا اور مجھے بھیجنے کیوں ہیں؟
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  10. حسیب نذیر گِل

    حسیب نذیر گِل محفلین

    مراسلے:
    7,241
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    کیا بات ہے حکیم محمد سعید صاحب کی۔
     
  11. حسیب نذیر گِل

    حسیب نذیر گِل محفلین

    مراسلے:
    7,241
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Innocent
    اگر آپ نے نونہال پڑھا ہوتا تو یہ بات نہ پوچھتے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    میں نو نہال ریگولر نہیں پڑھا۔
    البتہ "پھول" ضرور پڑھتا ہوں۔
     

اس صفحے کی تشہیر