1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

جنرل باجوہ کی صحافیوں سے ملاقات؛ باجوہ ڈاکٹرائن کا تسلسل

جاسم محمد نے 'صحافت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 4, 2021

  1. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,814
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    تصحیح: ۴ نہیں ۳ اسٹار رینک تک گئے ہیں قادیانی جرنیل
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  3. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    پاکستان میں فوج ہی کُل کاروبار کر لے اور کُل حکومت چلا لے۔ اب وزارت خارجہ پر ہی قبضہ دیکھیں۔

    [​IMG]

    ٣٨ سال فوج میں رہنے کرنے کے بعد میجر جنرل ر عبد العزیز طارق اب برونائی میں ہمارے سفیر ہیں۔ کوئی سویلین اتنا کولیفائڈ نہیں؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    پاکستان میں جج، جرنیل اور سیاست دان کبھی ریٹائرڈ نہیں ہوتا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    [​IMG]

    کیپٹن شہاب زادہ احمد خان صاحب کیوبا کے سفیر بنے ہوئے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  6. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    [​IMG]

    میجر جنرل ر جنید رحمت جارڈن میں مزے کر رہے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  7. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed


    لیفٹنیٹ جنرل ر مزمل حسین واپڈا کے چیرمین قریباً ۵ سال سے لگے ہیں تو لگے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    کسی سرکاری ادارہ یا محکمہ میں بھرتیاں میرٹ پر نہیں ہوتی۔ سفارش، سیاسی وابستگی یا ڈھول سپاہیہ کے دباؤ پر اپنے اپنے مفاد میں لوگ جگہ جگہ بٹھا دیے گئے ہیں۔ پھر لوگ سوال کرتے ہیں کہ ملک کا نظام کیوں نہیں چل رہا۔ دنیا میں ہر جگہ نظام میرٹ سے چلتا ہے۔ جو پاکستان میں موجود نہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  9. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed

    چیرمین PTA بنے ہیں میجر جنرل عامر عظیم باجوہ۔

    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    وہ جو کروڑوں نوکریوں کا وعدہ تھا صرف جرنیلوں کیلئے تھا :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. علی وقار

    علی وقار محفلین

    مراسلے:
    1,980
    جو سوال پورے قد سے اٹھ کھڑے ہوتے ہیں، جیسا کہ نواز شریف کو کیوں جانے دیا گیا (اب یہ نیا بیانیہ تیار کر لیا گیا ہے کہ وہ محب وطن ہیں کیونکہ جانے کی اجازت جو دے دی تھی)، کلبھوشن کو پھانسی کیوں نہیں لگائی جاتی ہے (حیرت انگیز طور پر اس کا انتہائی بھونڈا جواز تلاش کر لیا گیا ہے، ھاھا) تو، ان جوابات کے حوالے سے بعض 'چنیدہ' صحافیوں کو بلوا کر سبکی مٹانے کی غرض سے اور اپنے نام نہاد بیانیے کو تقویت دینے کے لیے جوابات سامنے رکھ دیے جاتے ہیں اور یوں باجوہ ڈاکٹرائن کے تسلسل کے ڈھنڈورے پیٹے جاتے ہیں حالانکہ ملک کے مجموعی حالات پہلے سے زیادہ دگرگوں ہو چکے اور فوج میں بھی کرپشن کے الزامات اور حتیٰ کہ واضح شواہد کے بعد اب اس ڈاکٹرائن میں جان نہیں رہی مگر جب تک جاوید چوہدری، صالح ظافر، صابر شاکر اور اس قبیل کے دیگر صحافی موجود ہیں، میڈیا پر یہ منجن بیچا جاتا رہے گا۔ جرنیل مبینہ طور پر پاپا جانز ریستوران چینز اور جزیرے خریدتے رہیں گے، من پسند سیاست دان نیب زادے بن کر رہیں گے اور عوام باجوہ ڈاکٹرائن کی مالا جپتی رہے گی۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  12. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اور نیشنل ہائے وے اتھارٹی کے چیرمین بنے ہیں کیپٹن ر محمد خرم آغا۔


    [​IMG]

    کیپٹن خرم سے قبل اس عہدے پر تھے کیپٹن ر سکندر قیوم۔

    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  13. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    یہ ادارے تمہارے ہیں ہم ہیں خوامخواہ اس میں
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  14. علی وقار

    علی وقار محفلین

    مراسلے:
    1,980
    یہ ہیرے، خاکستر میں چنگاریاں اور شعلہ بدن اور ہنر مند سب فوج میں ہی پائے جاتے ہیں۔ سویلینز کا کیا ہے، اللہ ہی اللہ۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    اتنے بڑے ٹڈ بھی صرف فوج میں ہی دیکھنے کو ملتے ہیں
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  16. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,164
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    ان میں فور سٹار جنرل کون تھا؟ دو احمدی جنرلز بھائی مشہور ہیں، لیفٹننٹ جنرل اختر حسین ملک اور لیفٹننٹ جنرل عبدالعلی ملک۔ ظاہر ہے دونوں ہی تھری سٹار جنرلز تھے۔ ہاں اول الذکر کے "کریڈٹ" پر 1965ء کے بدنامِ زمانہ آپریشن جبرالٹر اور آپریشن گرینڈ سلام ہیں، جو کہ دونوں ہی بری طرح ناکام ہوئے تھے!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  17. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    بغض قادیانیت۔ اسٹریٹیجک اخنور فتح ہونے کے قریب تھا کہ جنرل ایوب نے عین حملہ کے دوران جنرل ملک کو تبدیل کر دیا۔ یوں بھارت کو کمان کی تبدیلی میں ضائع ہونے والے وقت سے سنبھلنے کا موقع مل گیا۔ یہ حقائق تو دونوں اطراف کے تاریخ دان مانتے ہیں۔ پھر بھی جنگ میں ناکامی کا سارا ملبہ جنرل اختر ملک پر ڈال دیا جاتا ہے۔
     
  18. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,164
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بغض نہیں ہے بلکہ آپ کا مطالعہ انتہائی ناقص ہے۔ جنرل ملک کی تبدیلی تو بہت بعد کی بات ہے، مذکورہ دونوں آپریشنز ہی انتہائی ناکارہ تھے، اور چند فوجی جرنیلوں کے ساتھ ساتھ کچھ سیاسی شعبدہ باز بھی اس میں شامل تھے، نہ صرف یہ آپریشنز غلط طور پر تیار کیے گئے بلکہ ان میں جتنے بھی مفروضات تھے (یعنی جتنی باتیں فرض کی گئی تھیں کہ ایسے ہوگا، ویسے ہوگا) وہ بھی سارے کا سارا غلط ثابت ہوا، اور دونوں آپریشنز تاش کے پتوں کی طرح بکھر گئے تھے۔ جنرل ملک ان دونوں آپریشنز کی منصوبہ بندی میں شامل تھا!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,987
    ویسے اگر جنرل اختر ملک کو تبدیل نہ کیا جاتا اور اخنور فتح ہوجاتا تو کیا پھر بھی بھارت لاہور پر حملہ کرتا؟ اس وقت کے وزیر خارجہ بھٹو نے جو بھی اندازہ لگائے وہ سب غلط ثابت ہوئے۔ اور لاہور حملہ کے وقت تو لینے کے دینے پڑ گئے تھے۔
     
  20. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,164
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    اکھنور کی فتح سے زیادہ سے زیادہ یہ ہونا تھا کہ کشمیر میں بھارتی فوج کی گزرگاہ پاکستان کے قبضے میں آ جاتی اور انڈین فوج کو کچھ عرصہ کے لیے وہاں مشکلات پیش آتیں اور بس، لیکن اکھنور فتح کرنے کے لیے سیالکوٹ کے پاس انٹرنیشنل بارڈر کراس کرنا ضروری تھا جو کہ پاکستانی فوج نے کیا (اور یہی آپریشن گرنیڈ سلام تھا) اور اس سے پہلے کشمیر میں تو آپریش جبرالٹر تو کر ہی رہے تھے (جو اتنا ناکام تھا کہ چوتھے دن سارے کا سارا آپریشن جبرالٹر آل انڈیا ریڈیو پر نشر ہو رہا تھا، گرفتار شدہ پاکستانی افسروں کی زبانی)۔ ان دونوں آپریشنز اور انٹرنیشنل بارڈر کراس کرنے کے باوجود یہاں عقل کے اندھے سمجھتے تھے کہ انڈیا مغربی پاکستان پر حملہ کرنے کی جرات نہیں کرے گا اور اگر کچھ کیا بھی تو مشرقی پاکستان میں کرے گا۔ ان کی آنکھیں تب کھلیں جب انڈین فوج لاہور اور سیالکوٹ چونڈہ کے دروازوں پر اپنے ٹینکوں سے دستک دے رہی تھی!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر