ابن انشا اک بار کہو تم میری ہو ۔ ابن انشاء

literature نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 9, 2009

  1. literature

    literature محفلین

    مراسلے:
    25
    ہم گُھوم چکے بَستی بَن میں
    اِک آس کی پھانس لیے مَن میں
    کوئی ساجن ہو، کوئی پیارا ہو
    کوئی دیپک ہو، کوئی تارا ہو
    جب جیون رات اندھیری ہو

    اِک بار کہو تم میری ہو

    جب ساون بادل چھائے ہوں
    جب پھاگن پُول کِھلائے ہوں
    جب چندا رُوپ لُٹا تا ہو
    جب سُورج دُھوپ نہا تا ہو
    یا شام نے بستی گھیری ہو

    اِک بار کہو تم میری ہو

    ہاں دل کا دامن پھیلا ہے
    کیوں گوری کا دل مَیلا ہے
    ہم کب تک پیت کے دھوکے میں
    تم کب تک دُور جھروکے میں
    کب دید سے دل کو سیری ہو

    اک بار کہو تم میری ہو

    کیا جھگڑا سُود خسارے کا
    یہ کاج نہیں بنجارے کا
    سب سونا رُوپ لے جائے
    سب دُنیا، دُنیا لے جائے
    تم ایک مجھے بہتیری ہو

    اک بار کہو تم میری ہو

    ابنِ انشاء
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 1
  2. چھوٹاغالبؔ

    چھوٹاغالبؔ لائبریرین

    مراسلے:
    1,983
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Lonely
    لاجواب انتخاب ہے جناب آپ کا
     

اس صفحے کی تشہیر