امریکا سے امداد نہیں برابری کی بنیاد پر تعلقات چاہتے ہیں، عمران خان

جاسم محمد نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 23, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    امریکا سے امداد نہیں برابری کی بنیاد پر تعلقات چاہتے ہیں، عمران خان
    ویب ڈیسک 3 گھنٹے پہلے
    [​IMG]
    یہ پہلا موقع ہے کہ پاکستانی حکومت، فوج اور امریکی حکام ایک پیج پر ہیں، عمران خان، فوٹو: این این آئی

    واشنگٹن: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ امریکا سے امداد حاصل کرنے کے خواہش مند نہیں بلکہ باہمی اعتماد، برابری اور دوستی کی بنیاد پر تعلقات استوار کرنا چاہتے ہیں۔

    امریکی تھنک ٹینک سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کا بڑا مسئلہ غربت ہے ہم تجارت بڑھا کر غربت کا خاتمہ کرسکتے ہیں، ہماری حکومت بھارت سمیت تمام ہمسایہ ممالک سے اچھے تعلقات قائم کرنے کی خواہاں ہیں لیکن مسئلہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے تعلقات میں رکاوٹ ہے جب بھی ہم سنجیدگی سے بات چیت کے لیے آگے بڑھتے ہیں تو بدقسمتی سے کشمیر میں کوئی نہ کوئی افسوسناک واقعہ ہو جاتا ہے، بھارت بات چیت کے لیے ایک قدم آگے بڑھائے گا تو ہم دو قدم آگے بڑھائیں گے۔

    وزیراعظم نے کہا کہ نائن الیون میں کوئی پاکستان ملوث نہیں تھا ،دہشتگردی کے خلاف پاکستان نے 70ہزار جانوں کی قربانی دی ، افغانستان میں امن کے لیے پاکستان نے بھاری قیمت ادا کی، پہلے بھی کہا تھا کہ افغان مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں لیکن اس وقت لوگوں کو یہ سمجھ نہیں آرہی تھی اب لوگوں کو آئیڈیا ہوا ہے کہ افغان مسئلے کا حل صرف اور صرف بات چیت میں ہے،افغانستان میں امن کے لیے یہ بہترین وقت ہے ،یہ پہلا موقع ہے کہ پاکستانی حکومت، فوج اور امریکی حکام ایک پیج پر ہیں ، افغان طالبان اور امریکا کےساتھ مذاکرات کررہےہیں، بہت جلد امن معاہدہ کاامکان ہے یہ کام آسان نہیں تاہم سب کو اس مقصد کے لیے اپنا کردار ادا کرنا پڑے گا۔

    عمران خان نے کہا کہ 23 سالہ جدوجہد کے بعد اقتدار میں آیا تو مجھے لگاکہ میں سیاسی جماعتوں سےنہیں بلکہ مافیاسےنبردآزماہوں، پچھلی دو حکومتوں نے ریکارڈ قرضے حاصل کیے، گزشتہ 10سالوں میں قرضہ 6ٹریلین سے 30ٹریلین پرپہنچ گیا ، جب ہم احتساب کی بات کرتے ہیں تو یہ دونوں پارٹی کہتی ہیں سیاسی انتقام لیا جارہا ہے۔

    پاکستانی میڈیا کو برطانوی میڈیا سے زیادہ آزاد قرار دیتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں میڈیا کو پوری آزادی حاصل ہے یہاں تک کے میڈیا بے قابو بھی ہوجاتا ہے، پاکستانا جیسا میڈیا دنیا میں کہیں نہیں،میں خودآزاد میڈیا کا سب سے بڑا بینی فشری ہوں، ہم حکومت کے طور پر میڈیا کو کنٹرول نہیں کرنا چاہتے بلکہ واچ ڈوگ کے ذریعے اسے قابو کرنا چاہتے ہیں، پاکستان میں 70 سے 80 ٹی وی چینلز ہیں جس میں سے 3 چینلز کہتے ہیں انہیں مسائل کا سامنا ہے۔میڈیا کا کام ذاتی حملے کرنا نہیں ہے، میڈیا اپوزیشن کرے لیکن بلیک میلنگ نہ کرے، میڈیا کا بھی احتساب ہونا چاہیے، جب میڈیا مالکان سے ان کی آمدنی اور ٹیکس کا سوال کریں تو وہ کہتے ہیں یہ آزادی اظہار رائے کے خلاف ہے۔ ہم میڈیا پر نظر رکھیں گے لیکن سنسر شپ نہیں کریں گے۔
     
  2. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    ہم پاکستان میں رہتے ہیں اور ہمیں سب خبر ہے کہ کیا چل رہا ہے۔ صحافیوں کے ٹویٹس تک حکومتِ وقت سے برداشت نہیں ہو پا رہے ہیں۔ حق بات کہنا جرم بن گیا ہے، اس نئے پاکستان میں۔ دوسری جانب ٹی وی چینلز پر اسٹیبلشیائی صحافی فاشزم کا پرچار کرنے میں مصروف ہیں۔ ڈاکٹر شاہد مسعود اس کی واضح مثال ہیں جنہوں نے ایک ٹی وی پروگرام میں یہاں تک کہا کہ ان سیاست دانوں پر چھپکلیاں اور حشرات چھوڑے جائیں۔ ایسے افراد کی جگہ ذہنی امراض کا ہسپتال ہے۔
     
    • متفق متفق × 1
    • غمناک غمناک × 1
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    حسن نثار نے بھی ایک مشہور پروگرام میں ان کو کیکر سے باندھ کر شہد لگا کر کیڑے چھوڑنے کی تجویز پیش کی ہے۔
    وفاقی وزیر فیصل واڈا نے ایک اور پروگرام میں کہا کہ 5000 لوگ الٹا لٹکانے پڑیں گے۔
    یہ فسطائیت کی نشانیاں ہیں۔
     
  4. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    ہم نے فاشزم کہا؛ آپ نے فسطائیت کہا۔ فرق تو صرف ترجمہ کا ہے۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    اصل میں حکومت میں آنے سے قبل عمران خان کا خیال تھا کہ جلدی جلدی ان قومی چوروں کو پکڑیں گے۔ اور ملک کا لوٹا ہوا پیسا نکال کر آئی ایم ایف کے منہ پر ماریں گے۔
    جب حکومت میں آئے تو حقیقت آشکار ہوئی کہ یہ اقتدار کے باوجود جگہ جگہ قانونی شکنجوں میں جکڑے ہوئے ہیں۔ پیسا لوٹا تو ایک سیکنڈ میں جاتا ہے۔ لیکن واپس ریکور کرنےکیلئے کئی سال کا عرصہ درکار ہے۔ اس لئے دس ماہ گزرنے کے بعد نظام عدل سے مایوسی ہو کر ان فسطائی ہتھکنڈوں کو اپنانے کی کوشش کی جاری ہی ہے۔
    میرے خیال میں حکومت کو پہلے نظام عدل بہتر کرنا چاہئے تھا۔ تب تک قومی چوروں کو ڈھیل دیتے۔ جب عدل کا نظام ٹھیک ہوجاتا۔ تب ان پر ہاتھ ڈالنا شروع کرتے۔ مگر جلد بازی میں سارا کام خراب کر بیٹھے ہیں :)
     
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    آپ جنہیں چور کہہ رہے ہیں، وہ آپ کی وزیراعظم کی ہمشیرہ ، اور بالواسطہ طور پر خان صاحب کو چور کہہ رہے ہیں؛ فیصلہ کون کرے گا؟ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    عمران خان اپنے تمام اثاثوں کا حساب (منی ٹریل) سپریم کورٹ میں جمع کروا کر با عزت بری ہو چکے ہیں۔ یہ حساب ان کی اپنی پارٹی کے جہانگیر ترین نہیں دے سکے ۔ اس لئے تاحیات نااہل ہیں۔ اور کوئی سرکاری عہدہ نہیں رکھ سکتے۔
    ہمشیرہ بھی آج تک کسی سرکاری عہدہ پر نہیں رہیں۔ اور ان کے پاس جو اثاثے ہیں وہ عمران خان کے وزیر اعظم بننے سے پہلے کے ہیں۔
    اگر حالیہ حکومت کے بعد ان کے یا اہل و عیال کے اثاثوں میں بھرپور اضافہ ہوتا ہے تو عمران خان بھی آمدن سے زائد اثاثہ بنانے کے کیس میں دھر لیے جائیں گے۔ آپ کو پریشانی کیوں لاحق ہے؟ :)
     
  8. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    آپ نے سوال پر غور نہیں کیا؟ :) ایسا نہیں ہے کہ چور وہی ہے جو لیگی یا جیالا ہے۔ مثبت خبریں سامنے لائی جاتی ہیں وگرنہ چور ہر طرف موجود ہوں گے شاید۔ بہتر ہو گا کہ بلیم گیم میں پڑنے کی بجائے احتسابی اداروں کو آزادی کے ساتھ کام کرنے دیا جائے۔ :) دراصل، قومی چور کہیں پر بھی موجود ہو سکتے ہیں؛ ممکن ہے، جنہیں آپ قومی چور کہہ رہے ہوں، کل وہ اقتدار میں ہوں، اور آج کے مسیحا کل یہی خطابات وصول کر رہے ہوں۔ ہم تو تب بھی ان بچگانہ رویوں کی مذمت کر یں گے۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    یہ ممکن نہیں ہے۔ کیونکہ اس بار "کوئی این آر او نہیں ملے گا"۔ :)
     
  10. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    این آر او دینے کی پوزیشن میں اب فوج بھی نہیں رہی ہے۔ :) یہ ہے، اندر کی خبر! :) معاملات اب کسی اور طرف چلے گئے ہیں۔ :)
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    لگتا ہے نجم سیٹھی کی چڑیا آج کل آپ کے پاس ہے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  12. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    کامن سینس کی بات ہے! :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. عبداللہ محمد

    عبداللہ محمد مدیر

    مراسلے:
    9,875
    جھنڈا:
    Pakistan
    ایک سینئیر کا پرو لیگی ویڈیو پر کمنٹ، یہ معاملہ اب گھمبیر صورت اختیار کرتا جا رہا ہے۔۔


    [​IMG]


     
    آخری تدوین: ‏جولائی 23, 2019
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غمناک غمناک × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    بہت افسوس ناک صورتحال ہے۔ ن لیگ نے بڑے تحمل کے ساتھ تحریک انصاف کے پراپگنڈہ کو 5 سال برداشت کیا ہے۔
    اب حکومت میں آ گئے ہیں تو مرنے مارنے کی بات کرنے لگ گئے ہیں۔ ایسے کیبورڈ جہادیوں کو لگام دینا پڑے گا۔
     
  15. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    واہ! لیڈر ایسا ہو تو لگام کون دے گا! :) معیشت کی ڈوبتی کشتی کا ملاح فسطائیت کا مظاہرہ کر سکے گا اور نہ ہی این آر او دینے کی پوزیشن میں رہے گا۔ شانت رہیں! :)
     
    • زبردست زبردست × 1
  16. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    37,410
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Amused
    برابری؟ یہ کیسا لطیفہ ہے؟

    امریکہ کا جی ڈی پی فی کس 62000 ڈالر پی پی پی
    نسبتاً غریب ہمسائے میکسیکو کا 20000
    میکسیکو کے غریب ہمسائے گواٹمالا کا 8400
    پاکستان کا 5800

    اب کل نامینل جی ڈی پی دیکھتے ہیں
    امریکہ 20000 ارب ڈالر
    میکسیکو 1200 ارب
    پاکستان 278 ارب ڈالر

    کیسی برابری؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  17. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    مراد یہ تھی کہ اب امداد کی بجائے پاکستان کے ساتھ تجارت کو فروغ دیں۔ سرمایہ کاری وغیرہ کریں۔
    بہت امریکہ چاکری کر لی۔
     
  18. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    امداد مل جاتی تو یہ بیان نہ آتا۔ امداد نہ ملنے پر، یہ بیان ہی بنتا تھا۔ :) ان ہی بیانات کے گرد ہم زمانوں سے پھیرے لگا رہے ہیں۔ :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,446
    امداد مل رہی تھی اس شرط پہ کہ ایران کے خلاف امریکی مفادات کا تحفظ کرو۔
    اب وطن واپس آکر معلوم ہوگا کہ کیا فیصلہ کرنا ہے :)
     
  20. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,928
    اتنے ہی ہم پھنے خاں ہیں تو امریکا پھیرے لگانے کی ضرورت ہی کیا ہے! :) دعوت تو آئے روز کہیں نہ کہیں سے آتی رہتی ہو گی! :)
     

اس صفحے کی تشہیر