تبسم افسانہ ہائے درد سناتے چلے گئے ۔ صوفی تبسم

فرخ منظور نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 22, 2017

  1. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,826
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    افسانہ ہائے درد سناتے چلے گئے
    خود روئے دوسروں کو رلاتے چلے گئے

    بھرتے رہے الم میں فسونِ طرب کا رنگ
    ان تلخیوں میں زہر ملاتےچلے گئے

    اپنے نیازِ شوق پہ تھا زندگی کو ناز
    ہم زندگی کے ناز اٹھاتےچلے گئے

    ہر اپنی داستاں کو کہا داستانِ غیر
    یوں بھی کسی کا راز چھپاتےچلے گئے

    میں جتنا ان کی یاد بھلاتا چلا گیا
    وہ اور بھی قریب تر آتےچلے گئے

    (صوفی تبسّم)
     
    آخری تدوین: ‏مئی 22, 2017
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر