اصل فاتح اعظم حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ یا الکزنڈر ؟

نیلم نے 'تاریخ کا مطالعہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 18, 2013

  1. امجد میانداد

    امجد میانداد محفلین

    مراسلے:
    5,054
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dead
    حضرت ذوالقرنین کو کئی جگہوں پہ پیغمبروں میں لکھا گیا ہے، اور باقی خصوصیات کے علاوہ جو ان کے معجزات پڑھے ہیں کہ ان کے جسم میں ریکور ہونے کا معجزہ تھا، ان کے ٹکڑے کر کے پھینکے گئے تھے لیکن وہ اللہ کے کرم سے دوبارہ یکجا ہو گئے۔ اس کے علاوہ ان کو بے پناہ طاقت کا مالک بتایا گیا ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
  2. امجد میانداد

    امجد میانداد محفلین

    مراسلے:
    5,054
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dead
    نیلم
    کمال دی شئیرنگ، خوش رہ بچہ
     
    • زبردست زبردست × 1
  3. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,733
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where
    عمر فاروق رضی اللہ عنہ میری بھی پسندیدہ شخصیت ہیں۔ شئیر کرنے کا شکریہ نیلم۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    بہت شکریہ بابا جی بس آپ کا شفقت بھرا دعاؤں والا ہاتھ سر پہ رہنا چایئے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    آپ کا بھی بہت شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,421
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    محترم بھائی ۔ اس بارے مزید کچھ آگہی سے نوازیں ۔ بہت شکریہ
     
  7. فہیم

    فہیم لائبریرین

    مراسلے:
    33,457
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Sleepy
    یہ مضمون جاوید چوہدری لکھا ہوا ہے۔
    جو اس نے کوئی 3-4 سال قبل حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالٰی عنہ کے شہادت کے دن کے موقع پر لکھا تھا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 4
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  8. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    کوشش تو کی تھی لیکن کہیں سے لنک نہیں مل سکا کہ یہ حدیث نہیں ہے

    ویسے آپ احباب نے دیکھا ہوگا کہ اس ترجمہ میں ایک جگہ محدث، ایک جگہ نبی اور ایک جگہ نبی جیسی ہستی بیان کیا گیا ہے اور ایک جگہ یہ بھی کہ بعض افراد کے نبی نہ ہونے کے باوجود بھی اللہ پاک ان سے کلام کرتے ہیں۔ کیا اس کو صحیح حدیث مان لینا چاہیئے؟
     
  9. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    احادیث کی تعداد کا اندازہ تو ہوگا ہی آپ کو، ہر ایک کو فالو اپ کرنا اتنا آسان نہیں ہوتا َ)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    آن لائن صحیح بخاری میں مجھے یہ دو احادیث ملی ہیں


     
    • معلوماتی معلوماتی × 4
  11. مزمل شیخ بسمل

    مزمل شیخ بسمل محفلین

    مراسلے:
    3,530
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت خوب مضمون نیلم صاحبہ۔ لکھتے رہیں۔ :)

    اسکا تو مل گیا نا۔ :)


    قَدْ کَانَ یَکُوْنُ فِی الأُمَمِ قَبْلَکُمْ، مَحَدَّثُوْنَ، فَاِنْ یَکُنْ فِیْ اُمَّتِیْ مِنْہُمْ اَحَدٌ فَاِنَّ عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ مِنْہُمْ، قَالَ: ابْنُ وَہْبٍ: تَفْسِیْرُ مُحَدَّثُوْنَ، مُلْہَمُوْنَ.

    تم سے پہلے پچھلی اُمتوں میں محدث تھے۔ اگر اس امت میں کوئی محدث ہوگا تو وہ عمر بن الخطاب ہیں۔ ابن وہب نے کہا محدث اس شخص کو کہتے ہیں جس پر الہام کیا جاتا ہو۔ (صحیح مسلم، کتاب فضائل الصحابة۔ باب من فضائل عمر رضى الله تعالى عنه، حدیث:۶۲۰۴)

    حضرت عقبہ بن عامر رضى الله تعالى عنه سے روایت ہے کہ رسول اکرم صلى الله عليه وسلم نے فرمایا:
    لَوْ کَانَ نَبِیٌّ بَعْدِیْ لَکَانَ عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ.
    اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو وہ عمر بن خطاب ہوتے۔ (جامع ترمذی، ابواب المناقب، باب قولہ صلى الله عليه وسلم: ”لو کان نبی بعدی لکان عمر“ حدیث:۳۸۸۶)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
  12. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    جی یہی بات ہو رہی ہے کہ کیا لفظ نبی استعمال ہوا ہے یا نہیں۔ میں نے جو تلاش کی ہے، اس کے مطابق محدثوں کا لفظ آیا ہے، یا نبی جیسا۔ نبی کا لفظ کہیں نہیں۔ آپ کا شکریہ کہ آپ نے حوالہ مہیا کیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 2
  13. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    212,256
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالٰی عنہ ایک عظیم ہستی تھے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ جس راستے پر عمر فاروق رضی اللہ تعالٰی عنہ جا رہے ہوں، شیطان بھی اس راستے سے ہٹ جاتا ہے۔

    غیر مسلموں نے بھی حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالٰی عنہ کی عظمت کو تسلیم کیا ہے۔

    جواہر لعل نہرو نے کہا تھا "مجھے حیرت ہے کہ مسلمان سکندر اعظم کا حوالہ دیتے ہیں جبکہ انہیں عمر فاروق کا حوالہ دینا چاہیے۔

    حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالٰی عنہ کی حیات پر مولانا شبلی نعمانی رحمۃ اللہ کی لکھی ہوئی معرکۃ آرا کتاب "الفاروق" موجود ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • متفق متفق × 1
  14. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,733
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where
    یہ احادیث صحیح بخاری کی ہیں۔ جو ربط میں نے شئیر کیا تھا وہ احادیث صحیح مسلم اور جامع ترمذی کی تھیں۔
    عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ قَالَ : قَالَ رَسُوْلُ اﷲِ صلی الله عليه وآله وسلم : لَوْکَانَ نَبِيٌّ بَعْدِيْ لَکَانَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ. رَوَاهُ التِّرْمِذِيُّ
    وَ قَالَ هَذَا حَدِيْثٌ حَسَنٌ.
    ’’حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا : اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو عمر بن الخطاب ہوتا۔ اس حدیث کو امام ترمذی نے روایت کیا ہے اورکہا : یہ حدیث حسن ہے۔‘‘
    الحديث رقم 27 : أخرجه الترمذی فی الجامع الصحيح، کتاب المناقب، باب فی مناقب عمر، 5 / 619، الحديث رقم : 3686، و أحمد بن حنبل في المسند، 4 / 154، و الحاکم في المستدرک، 3 / 92، الحديث رقم : 4495، و الطبرانی فی المعجم الکبير، 17 / 298، الحديث رقم : 822، و الرویاني في المسند، 1 / 174، الحديث رقم : 223، و أحمد بن حنبل في فضائل الصحابة، 1 / 356، الحديث رقم : 519.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,733
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where
    عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ قَالَ : قَالَ رَسُوْلُ اﷲِ صلی الله عليه وآله وسلم : لَوْکَانَ نَبِيٌّ بَعْدِيْ لَکَانَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ. رَوَاهُ التِّرْمِذِيُّ
    وَ قَالَ هَذَا حَدِيْثٌ حَسَنٌ.
    ’’حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا : اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو عمر بن الخطاب ہوتا۔ اس حدیث کو امام ترمذی نے روایت کیا ہے اورکہا : یہ حدیث حسن ہے۔‘‘
    الحديث رقم 27 : أخرجه الترمذی فی الجامع الصحيح، کتاب المناقب، باب فی مناقب عمر، 5 / 619، الحديث رقم : 3686، و أحمد بن حنبل في المسند، 4 / 154، و الحاکم في المستدرک، 3 / 92، الحديث رقم : 4495، و الطبرانی فی المعجم الکبير، 17 / 298، الحديث رقم : 822، و الرویاني في المسند، 1 / 174، الحديث رقم : 223، و أحمد بن حنبل في فضائل الصحابة، 1 / 356، الحديث رقم : 519.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  16. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    دنیا جن کو الیگزینڈر دی گریٹ کہتی ہے، کسی کو معلوم بھی تو ہو کہ اس کے مقابلے پر کون ہے ۔۔۔
    آپ کا ہمارا جذبہ عقیدت اپنی جگہ، عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کوئی عام انسان ہرگز نہ تھے لیکن یہ بات صرف مسلمان پر صادق آسکتی ہے۔۔۔ جب آپ کسی غیر مسلم کو ان کا تعارف پیش کریں گے تو یہ مت سمجھئے کہ آپ کے ان کو اکابر صحابہ میں شمار کرنے سے ہی وہ عزت و عقیدت کی تصویر بن کر رہ جائے گا اور منہ سے کچھ نہ کہہ سکے گا۔۔۔ وہ تو آپ کی ایک ایک بات پر اعتراض اور سوال جواب کرے گا۔۔۔ آپ کے پاس بھی تو وہ دلائل ہوں جن کے تحت آپ ان کا کردار دوسرے کو بیان کرسکیں۔
    تاریخ جب ان کا تذکرہ کرتی ہے تو وہ نہ مسلمان ہوتی ہے نہ کافر ۔۔۔
    اگر کوئی مسلمان سچا تاریخ دان ہے تو بلا شبہ اسے حقائق کو غیر جانبدار ہو کر لکھنا پڑے گا چاہے اس کا جذبہ عقیدت کچھ بھی کہے۔
    لہٰذا یہاں تقابل بھی کیاجائے گا اور اگر ہم کہتے ہیں عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ سپہ سالار اور فاتح اعظم تھے تو ہمیں دنیا کے مانے ہوئے فاتح اعظم الیگزینڈر دی گریٹ کا بھی دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی کرنا ہی پڑے گا اور بتانا پڑے گا کہ عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ اس سے کہیں زیادہ عظیم، قابل تعریف اور دانش مند تھے تو کیسے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  17. شاہد شاہنواز

    شاہد شاہنواز لائبریرین

    مراسلے:
    1,836
    جھنڈا:
    Pakistan
    جو حدیث فضائل کو ثابت کرتی ہو اسے صحیح ماننے میں زیادہ تامل نہیں کرنا چاہئے ۔۔ ہر اس حدیث کو صحیح مان لیجئے جس کو آپ غلط ثابت نہ کرسکیں۔ غلط ثابت کرنے کے طریقے بہت سے ہیں، جیسے قرآن و حدیث سے مقابلہ، عام اسلامی رویے سے تقابل، منطق، دلیل اور اجتہاد ۔۔۔ لیکن یہ سب کام آپ ہم نہیں کرسکتے۔۔۔ اس کے لیے مفتی کا ہونا ضروری ہے کیونکہ جو جانتا ہے اور جو نہیں جانتا، دونوں برابر نہیں ہوسکتے ۔۔۔ ترجمے میں محدث، نبی اور نبی جیسی ہستی لکھا جانا مترجم کی غلطی ہوسکتا ہے۔۔ آپ یہ غور فرمائیے کہ اصل متن حدیث کیا ہے۔۔ اگر حدیث کا متن مختلف ہے تو حدیث کا حوالہ دیکھئے ۔۔ حوالہ ایک ہی ، اور متن مختلف، یہ ناممکن ہے۔۔۔ حوالے اور متن مختلف تو صحیح ماننا اور بھی ضروری ہوجاتا ہے کیونکہ الفاظ کے ہیر پھیر کے ساتھ ایک ہی بات مختلف راویوں نے بیان کی ہو تو ثابت ہوتا ہے کہ بات ہوئی ضرورہے۔ ہاں سننے والے نے اپنے قیاس سے اس کو معانی کچھ اور دے دئیے۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  18. سید اسد محمود

    سید اسد محمود محفلین

    مراسلے:
    981
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant

    حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضورر نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا : تم سے پہلی امتوں میں محدَّث ہوا کرتے تھے اگر میری امت میں کوئی محدَّث ہے تو وہ عمر رضی اللہ عنہ ہے۔ زکریا بن ابی زائدہ نے سعد سے اور انہوں نے ابی سلمہ سے انہوں نے حضرت ابوہریرۃ رضی اللہ عنہ سے یہ الفاظ زیادہ روایت کئے ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا : تم سے پہلے لوگوں یعنی بنی اسرائیل میں ایسے لوگ بھی ہوا کرتے تھے جن کے ساتھ اﷲ تعالیٰ کلام فرماتا تھا حالانکہ وہ نبی نہ تھے۔ اگر ان جیسا میری امت کے اندر کوئی ہوتا تو وہ عمر ہوتا۔ اس حدیث کو امام بخاری نے روایت کیا ہے۔‘‘

    الحديث رقم 25 : أخرجه البخاری فی الصحيح، کتاب فضائل الصحابة باب مناقب عمر بن الخطابص، 3 / 1349، الحديث رقم : 3486، و في کتاب الأنبياء، باب أم حسبت أن أصحاب الکهف و الرقيم، 3 / 1279، الحديث رقم : 2382، و ابن أبي عاصم في السنة، 2 / 583، الحديث رقم : 1261.
    ربط
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 1
  19. سید اسد محمود

    سید اسد محمود محفلین

    مراسلے:
    981
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant
    سیدنا عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا :
    لو کان نبی بعدی لکان عمر بن الخطاب
    ” اگر میرے بعد کوئی نبی ہوتا ، تو عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ ہوتے ۔ “
    ( ترمذی : 3886 ، مسند الامام احمد : 154/4 ، المعجم الکبیر للطبرانی : 180/17 ، 298 ، مستدرک حاکم : 85/3 ح 4495 ، وسندہ حسن )
    اس حدیث کو امام ترمذی رحمہ اللہ نے ” حسن غریب “ ، امام حاکم نے ” صحیح الاسناد “ اور حافظ ذہبی رحمہ اللہ نے ” صحیح “ کہا ہے ۔
    اس حدیث سے ثابت ہوا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے بعد کوئی نبی تشریعی یا غیر تشریعی
    نہیں آئے گا ، اگر سیدنا عمر رضی اللہ عنہ نبی نہ ہوئے ، تو اور کون ہو سکتا ہے ؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 3
  20. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,421
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    میرے محترم بھائی ۔ غیر مسلموں سے بحث تو دور کی بات اکثر مسلمانوں کے درمیان ہی جناب عمر فاروق رضی اللہ تعالی عنہ کے بارے برپا بحث دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی الگ کر دیتی ہے ۔ اور ہر اک اپنی من پسند کسی حدیث کو اپنی دلیل بنائے ہوئے ہوتا ہے اور دوسرے کی حدیثی دلیل " موضوع ضعیف من گھڑت قرار دے رہا ہوتا ہے ۔۔۔۔۔۔۔
    غیر مسلم سے بحث کرتے اسے راہ حق پر لے آنا بہت آسان ہے ۔ کیونکہ وہ احادیث کی گنجلوں سے آزاد ہوتا ہے ۔
    جناب عمر فاروق رضی اللہ تعالی عنہ بارے مزید گفتگو دلوں میں نفرتیں پیدا کرے گی ۔ اس لیئے آپ سے مزید گفتگو سے معذرت ۔۔
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر