اصلاح فرمائیں۔۔۔

کلیمی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 10, 2019

  1. کلیمی

    کلیمی محفلین

    مراسلے:
    4
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Relaxed
    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

    یہ فقیر کا لکھا ہوا نعتیہ کلام ہے۔۔۔تمام احباب اور بالخصوص شاکر القادری صاحب سے اصلاح کا متمنی ہوں۔

    یہ زبان آپ کی تعریف کے قابل ہی نہیں
    جز خداوند کوئی مادحِ کامل ہی نہیں


    یاد فرمائی جو ہو شاہِ مدینہ اک دن
    روح کو آپ پہ کردوں گا فدا دل ہی نہیں


    حبِ سرکار ہے توحید کی پہلی منزل
    ترک ہو یہ تو کوئی اور منازل ہی نہیں


    اُن کی رحمت سے مجھے آس لگی رہتی ہے
    یہ وہ دریا ہے کہ جس کا کوئی ساحل ہی نہیں


    یہ صدا آتی ہے ہر آن بقولِ اقبال
    ہم تو مائل بہ کرم ہیں کوئی سائل ہی نہیں


    مشکلوں میں جو لیا نامِ محمد میں نے
    میری تقدیر میں اب کوئی مشاکل ہی نہیں


    جس کے دل میں نہیں توقیرِ شہنشاہِ امم
    ہے شقی، صرف وہ سرکار سے جاہل ہی نہیں


    حسن میں آپ ہیں آقا بخدا فردِ فرید
    مثل ہی کوئی نہیں اور مقابل ہی نہیں


    حق جدا اُن سے نہیں اور وہ جدا حق سےنہیں
    درمیاں عبد و خدا کے کوئی حائل ہی نہیں


    وہ تو بگڑی کو بناتے ہی ہیں ہر اک کی مگر
    اشک آنکھوں سے ابھی تک ترے سائل ہی نہیں


    اُن کی یادوں سے ہے سرشار مرے قلب و نظر
    ہاں سوا اِس کے مجھے اور مشاغل ہی نہیں


    مثلِ سگ آپ کے در پہ میں پڑا رہتا ہوں
    ماسوا آپ کے آقا کوئی کافل ہی نہیں


    قربِ مولا ہو نصیب اُس کو تو کیونکر ہو بھلا
    جانبِ طاعتِ سرکار جو مائل ہی نہیں


    نغمۂ عشق سنائے تو سنائے اب کون
    خوش نوا کوئی گلستاں میں عنادل ہی نہیں


    وصلِ حق ہو تو لطیف اب، ہو بھلا کس صورت
    برزخِ عبد و خدا سے جو تو واصل ہی نہیں

    محمد لطیف الحسن لطیف
    انڈیا
     
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,762
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    شاکر الفادری صاحب کو ٹیگ کرنا تھا! کسی کو علم ہے کہ شاکر صاحب کہاں ہیں اج کل، رہا ہوئے یا نہیں؟
    ایک بنیادی غلطی قافیہ میں جمع لفظ کا استعمال ہے، بطور خاص 'کوئی' کے ساتھ واحد لفظ ہی استعمال کیا جانا چاہیے۔

    یہ زبان آپ کی تعریف کے قابل ہی نہیں
    جز خداوند کوئی مادحِ کامل ہی نہیں
    .. درست، اگرچہ مادح اردو میں عام طور پر استعمال نہیں کیا جاتا، مدح سرا کہا جاتا ہے

    یاد فرمائی جو ہو شاہِ مدینہ اک دن
    روح کو آپ پہ کردوں گا فدا دل ہی نہیں
    ... ٹھیک

    حبِ سرکار ہے توحید کی پہلی منزل
    ترک ہو یہ تو کوئی اور منازل ہی نہیں
    ... جمع قافیہ، محض منزل لانے کی کوشش کریں جیسے
    ترک ہو جائے جو یہ، پھر کوئی منزل.....

    اُن کی رحمت سے مجھے آس لگی رہتی ہے
    یہ وہ دریا ہے کہ جس کا کوئی ساحل ہی نہیں
    ... درست، اچھا شعر ہے

    یہ صدا آتی ہے ہر آن بقولِ اقبال
    ہم تو مائل بہ کرم ہیں کوئی سائل ہی نہیں
    .. درست

    مشکلوں میں جو لیا نامِ محمد میں نے
    میری تقدیر میں اب کوئی مشاکل ہی نہیں
    ..... مشاکل غلط جمع ہے، کوئی کے ساتھ واحد مشکل لانے کی کوشش کریں

    جس کے دل میں نہیں توقیرِ شہنشاہِ امم
    ہے شقی، صرف وہ سرکار سے جاہل ہی نہیں
    .. دوسرا مصرع سمجھ میں نہیں آ سکا

    حسن میں آپ ہیں آقا بخدا فردِ فرید
    مثل ہی کوئی نہیں اور مقابل ہی نہیں
    ... تکنیکی طور پر درست

    حق جدا اُن سے نہیں اور وہ جدا حق سےنہیں
    درمیاں عبد و خدا کے کوئی حائل ہی نہیں
    .. تکنیکی طور پر درست البتہ غلو ہے

    وہ تو بگڑی کو بناتے ہی ہیں ہر اک کی مگر
    اشک آنکھوں سے ابھی تک ترے سائل ہی نہیں
    ... دوسرا مصرع مکمل نہیں، اولی میں 'ہی ہیں' ناگوار لگتا ہے

    اُن کی یادوں سے ہے سرشار مرے قلب و نظر
    ہاں سوا اِس کے مجھے اور مشاغل ہی نہیں
    ... مشغلہ بہتر ہوتا مگر قافیہ کی مجبوری ہے، اس لیے قبول کیا جا سکتا ہے

    مثلِ سگ آپ کے در پہ میں پڑا رہتا ہوں
    ماسوا آپ کے آقا کوئی کافل ہی نہیں
    ... کافل اردو میں استعمال نہیں ہوتا

    قربِ مولا ہو نصیب اُس کو تو کیونکر ہو بھلا
    جانبِ طاعتِ سرکار جو مائل ہی نہیں
    .. ٹھیک اگرچہ روانی بہتر ہو سکتی ہے

    نغمۂ عشق سنائے تو سنائے اب کون
    خوش نوا کوئی گلستاں میں عنادل ہی نہیں
    .... کوئی کے ساتھ واحد عندلیب کا محل ہے

    وصلِ حق ہو تو لطیف اب، ہو بھلا کس صورت
    برزخِ عبد و خدا سے جو تو واصل ہی نہیں
    سمجھ نہیں سکا اس لیے کچھ کہنے سے قاصر ہوں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,853
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    ان کے بارے میں شاید حسن محمود جماعتی بھائی کچھ بتا سکیں!
     
  4. حسن محمود جماعتی

    حسن محمود جماعتی محفلین

    مراسلے:
    2,492
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    دیر کے لیے معذرت میں سفر میں تھا پچھلے ایک ماہ سے۔ شاکر القادری صاحب تا حال رہا نہیں ہوئے۔ دوستوں سے دعا کی درخواست ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر