اشتیاق احمد خالق انسپکٹر جمشید سیریز

محب علوی نے 'جہان نثر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 21, 2013

  1. نوشاب

    نوشاب محفلین

    مراسلے:
    669
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Ornery
    کمال ہے آپ نکتہ کہہ رہے ہیں جبکہ میں نے ۔بڑی یے ۔تک الف بے سنا دی ہے۔
     
  2. عبد الرحمن

    عبد الرحمن لائبریرین

    مراسلے:
    1,917
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    یہ نکتہ پہلے والے سے بھی زیادہ خوب ہے۔
     
  3. loneliness4ever

    loneliness4ever محفلین

    مراسلے:
    639
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover

    غالبا آپ نے خاص نمبر جیکان کی واپسی نہیں پڑھا
    جہاں تک میری یادداشت کام کر رہی ہے
    ان کا ایک کردار پروفیسر غوری اس ہی ناول میں بھانپ بنا دئیے جاتے ہیں
    اور شہادت پا لیتے ہیں
    یعنی کامران مرزا کی جانب والے سائنس دان پروفیسر غوری کا تو بال بیکا ہو چکا تھا
    اب مزید کسی کا بال بیکا ہوا ہو یا بال بچے ہوئے ہوں تو وہ نئے ناول پڑھنے والے
    بیان کر سکتے ہیں.....کیوں جی ان کرداروں کی بچیاں اب تک شادی کی عمر تک نہیں
    پہنچیں؟؟؟ اب بھی کیا وہ دشمن کی گردن پکڑ کے لٹکا جاتی ہیں .... ہا ہا ہا
    امید ہے انسپکٹر جمشید اب بھی پرسرار مسکراہٹ اپنے چہرے پر لے آتے ہونگے
    اور آنکھوں ہی آنکھوں میں کامران مرزا سے بات کر لیتے ہونگے
    اور ہاں اب بھی سو دوسو کی فوج پتھروں سے مار لی جاتی ہوگی....
    اور ہاں جوتی تو فرزانہ کی آج تک جلتی ہوگی اور جلنے سے یاد آیا
    بیگم جمشید آج تک کھانے گرم گرم پکا کر ہاٹ پوٹ میں رکھتی ہونگی
    اور نیشنل پارک سے اب بھی کوئی جاسوسی کا چکر گلے پڑ جاتا ہوگا
    ہاں کبھی کبھی کوئی ربڑ کا آدمی آج بھی ٹکرا جاتا ہوگا
    اور آج تک شوکی ہکلاتا ہوگا....محمود کی ران آج بھی محمود کے ہاتھ سے
    پناہ مانگتی ہوگی اور کبھی کبھی اسکی سرکاری ٹانگ بھی چل جاتی ہوگی
    اور فاروق آج بھی ایسے کام کر جاتا ہوگا کہ حیرت ہوتی ہوگی کہ یہ کام
    فاروق نے کیا ہے...اور اب تک پائپ پر اسکو چڑھنا پڑتا ہوگا .....
    اور اب بھی کسی کیس میں جمشید اپنے بچوں سے مجرم کا نام پرچی پر لکھوا لیتے
    ہونگے .....
    میرے خیال سے اب بس کرتا ہوں باقی پھر کبھی..
     
    • زبردست زبردست × 2
  4. نوشاب

    نوشاب محفلین

    مراسلے:
    669
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Ornery
    زبردست آپ نے تو ساری جمشید کامران سریز کو ایک کوزے میں بند کردیا
    صحیح تجزیہ ہے آپ کا اور
     
  5. دلاور خان

    دلاور خان لائبریرین

    مراسلے:
    883
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    میں نے بھی ایک عمر تک اشتیاق احمد کے ناول بہت شوق سے پڑھے ہیں۔
    پھر عمران سیریز کی وجہ سے ان کا شوق ختم ہوگیا:)
     
  6. x boy

    x boy محفلین

    مراسلے:
    6,208
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    موڈ:
    Breezy
    بہت شکریہ
    سبھی کے بچپن میں مقبول ترین تھا
     
  7. Ali mujtaba 7

    Ali mujtaba 7 لائبریرین

    مراسلے:
    204
    جی ہاں
    اشتیاق احمد صاحب کا آخری ناولٹ آخری امید بھی نونہال میں ہی چھپا تھا
     
  8. Ali mujtaba 7

    Ali mujtaba 7 لائبریرین

    مراسلے:
    204
    پرمود مظہر کلیم صاحب کا نہیں بلکہ ایچ اقبال صاحب کا ہے
     
    • متفق متفق × 1
  9. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی مدیر

    مراسلے:
    11,467
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    یہاں تک بات مشترک ہے کہ میں بھی اشتیاق احمد مرحوم کا پرستار ہوں، اور کئی ناول امتحان کی تیاریوں میں بھی ختم کیے۔ عمران سیریز سے دور ہی رہا، بھائی لاتا تھا، مگر میرا فوکس اشتیاق احمد مرحوم کے ناولز پر ہی رہا۔ مظہر کلیم کا تو کبھی مزا نہ آیا۔
    البتہ ابنِ صفی کو بہت بعد میں انٹرنیٹ کے دور میں آ کر کمپیوٹر پر پڑھا تو مزا آیا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  10. جاسمن

    جاسمن لائبریرین

    مراسلے:
    5,392
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    میں بھی اشتیاق احمد کے ناولوں کی دیوانی رہی ۔بہت مزہ آتا تھا۔تجسس سے بھرپور ناول اور ضخیم۔
    ناول وہی اچھا لگتا تھا جس میں یہ عناصر ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  11. جاسمن

    جاسمن لائبریرین

    مراسلے:
    5,392
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    مجھے
    مجھے بھی چاہییں۔۔۔۔
     

اس صفحے کی تشہیر