ابن انشا اس حسن پہ یاد آئے سب منظر فیض کی نظموں کے

فہد اشرف نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 28, 2017

  1. فہد اشرف

    فہد اشرف محفلین

    مراسلے:
    6,832
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Relaxed
    اس حسن کے نام پہ یاد آئے سب منظر فیض کی نظموں کے
    وہی رنگِ حنا، وہی بندِ قبا، وہی پھول کُھلے پیراہن میں

    کچھ وہ جنہیں ہم سے نسبت تھی ان کوچوں میں آن آباد ہوئے
    کچھ عرش پہ تارے کہلائے،کچھ پھول بنے جا گلشن میں

    ہم لوگوں کے آنے سے پہلے بھی تم لوگ ادھر سے گزرتے تھے
    کبھی پھول بھی دیکھے غرفوں میں، کبھی قوسِ قزح کسی چلمن میں؟

    یوں کرنے کو عشق پہ قید نہیں سب کرتے ہیں اچھا کرتے ہیں
    پر ہم سے بہت بھی نہیں گزرے کچھ لوگ تھے مصر و مدین میں

    ہم ان سے جو مل کر دور ہوئے، کچھ خوش ہوئے، کچھ رنجور ہوئے
    اب دل کا ٹھکانہ مشکل ہے، ہاں جان رہے گی ایمن میں

    (ابن انشا)​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. مزمل اختر

    مزمل اختر محفلین

    مراسلے:
    109
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Pensive
    بہت اعلی
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر