احمدی اقلیت اور ہمارے علما کا رویہ

جاسم محمد نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 16, 2020

  1. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    یہ دلیل آپ اپنی عقل کی بنیاد پر دے رہے ہیں یا قرآن و حدیث کی روشنی میں؟
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    اسلامی تعلیمات کی رو سے ختم نبوت کے منکر کافر ہی ہوتے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,581
    ان واقعات کی روشنی میں جب نبوت کے دعوے داروں کو مسلمانوں کے خلاف بغاوت پر قتل کیا گیا۔ اگر محض دعویٰ نبوت جواز ہوتا تو مسیلمہ کو اکیلے قتل کرنا کافی تھا۔ لیکن چونکہ وہ اور اس کے حواری بغاوت کے مرتکب تھے یوں اس کے ساتھ ساتھ اس کے ماننے والوں کو بھی قتل کیا گیا۔
     
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  4. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    6,703
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Mellow
    اس کے مطابق کیا یہودی اور عیسائی بھی کافر قرار پائیں گے؟
     
    • متفق متفق × 1
  5. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ختم نبوت ایک خالص دینی مسئلہ ہے۔ اگر آپ یہ دعویٰ کرتے ہیں کہ ختم نبوت کے منکر مسلمان ہوتے ہیں تو اس حوالے سے قرآن و حدیث کی رو سے دلیل پیش کیجیے۔ آپ کے بیان کیے گئے تاریخی واقعات اگر درست یا غلط ثابت بھی ہو جائیں تب بھی ختم نبوت کے عقیدے کی سند قرآن و حدیث کی رو سے ہی تسلیم کی جائے گی۔
     
    • غمناک غمناک × 1
  6. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    جی۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,581
    ایک ہی دین و مذہب میں مختلف اور مخالف عقائد ہو سکتے ہیں۔ سنی ، شیعوں کے عقائد ایک دوسرے سے کافی مختلف ہیں لیکن اس اختلاف کو کفر سے نہیں جوڑا جا سکتا۔
    دراصل قادیانیوں نے مرزا قادیانی کو نہ ماننے والوں کو کافر کہا تھا جس کا شدید ترین رد عمل یہی ہو سکتا تھا کہ آئین و قانون میں انہی کو کافر قرار دے دیا جائے۔
     
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,581
    یہود و نصاریٰ تو حضرت محمد ﷺ کو نہ ماننے کی وجہ سے کافر قرار دئے گئے تھے۔ اس کا عقیدہ ختم نبوت سے کیا تعلق ہے؟
     
  9. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    کون کیا عقیدے رکھے تو کافر کہلائے گا، اور کون کیا عقیدہ رکھے گا تو دائرہ اسلام میں برقرار رہے گا، اس کا فیصلہ رب تعالیٰ نے بذریعہ وحی کر دیا ہے۔ جاسم محمد یا عدنان عمر اختلاف کریں یا اتفاق، اسلامی تعلیمات اٹل ہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
    • غمناک غمناک × 1
  10. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    6,703
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Mellow
    میرا مطلب تھا کہ وہ حضرت محمد ﷺ کو بطور آخری نبی نہیں مان رہے تو کیا کافر قرار پائیں گے؟
     
    • متفق متفق × 1
  11. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    نہ ماننے والا، اور مان کر بھی آخری نہ ماننے والا، دونوں ہی کافر ہیں۔
     
    آخری تدوین: ‏فروری 19, 2020
    • غمناک غمناک × 1
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,581
    اگر ہر داعی نبوت کا انجام مسیلمہ کذاب جیسا ہو اسلامی تعلیمات ہیں، تو پھر مرزا قادیانی ہی نہیں اس کے تمام ماننے والے بھی واجب القتل ہوتے۔
     
  13. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    جی بالکل۔ آپ ﷺ کی نبوت و رسالت پر ایمان نہ لانے والا یا آپ ﷺ کو آخری نبی و رسول نہ سمجھنے والا، دونوں ہی کافر ہیں۔
     
    • متفق متفق × 2
    • غمناک غمناک × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    20,581
    آخری تو بہت بعد کی بات ہے۔ یہود و نصاریٰ تو رسول کریم ﷺ کو شروع ہی سے نبی و رسول نہیں مانتے۔ یوں اس انکار کی وجہ سے کافر ٹھہرے۔
     
  15. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ہر مدعی نبوت واجب القتل ہے یا نہیں، مرزا قادیانی کو ماننے والے واجب القتل ہیں نہیں، اس کا جواب دینا علمائے کرام کا منصب ہے۔ وہی بہتر رہنمائی فراہم کرسکتے ہیں۔ بہرصورت، ختم نبوت کے منکر کافر ہیں، ان کے کفر میں کوئی شک نہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  16. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    درست فرمایا۔
     
    • متفق متفق × 1
  17. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    12,358
    جھنڈا:
    Pakistan
    اس میں کوئی شک نہیں ہونا چاہیے!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  18. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    1,305
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    عقیدہ ختم نبوت کے منکر کو اپ کیا کہیں گے ؟؟؟؟
     
  19. عرفان سعید

    عرفان سعید محفلین

    مراسلے:
    6,703
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Mellow
    طالب علمانہ سوال کرنے میں کوئی مضائقہ نہیں ہونا چاہیے!

    یہ سوال کچھ اس وجہ سے ذہن میں گردش کرتا ہے کہ اگر ہم اتمامِ دین کی آیات دیکھیں تو یہاں اہلِ کتاب کا کھانا اور ان کی خواتین سے نکاح کی مسلمانوں کو اجازت دی گئی ہے۔

    اَلْیَوْمَ اُحِلَّ لَکُمُ الطَّیِّبٰتُ وَطَعَامُ الَّذِیْنَ اُوْتُوا الْکِتٰبَ حِلٌّ لَّکُمْ وَطَعَامُکُمْ حِلُّ لَّہُمْ وَالْمُحْصَنٰتُ مِنَ الْمُؤْمِنٰتِ وَالْمُحْصَنٰتُ مِنَ الَّذِیْنَ اُوْتُوا الْکِتٰبَ مِنْ قَبْلِکُمْ اِذَآ اٰتَیْتُمُوْہُنَّ اُجُوْرَہُنَّ مُحْصِنِیْنَ غَیْرَ مُسٰفِحِیْنَ وَلاَ مُتَّخِذِیْٓ اَخْدَانٍ. (المائدہ ۵: ۵)

    ''آج تمھارے لیے تمام پاکیزہ چیزوں کو جائز کیا گیا ہے اور اہل کتاب کا کھانا تمھارے لیے حلال کیا گیا ہے اور تمھاراکھانا ان کے لیے حلال کیا گیا ہے۔مومنات میں سے پاک دامن عورتیں تمھارے لیے جائز ہیں اور تم سے پہلے جن کوکتاب دی گئی، ان کی پاک دامن عورتیں بھی تمھارے لیے جائز قرار دی گئی ہیں، جبکہ تم ان کو ان کے مہر ادا کردو۔ وہ پاک دامن ہوں، زنا کرنے والی نہ ہوں اور نہ ہی یاری آشنائی کرنے والی ہوں۔ ''

    دین کی تکمیل ہو رہی ہے اور یہاں واضح طور پر اہلِ کتاب کا ذکر مشرکین سے الگ کر کے کیا گیا ہے۔ یعنی مشرکین کا ذبیحہ اور ان میں نکاح کی اجازت نہیں دی گئی۔
    قرآن کے اسلوب کو دیکھیں تو مدنی سورتوں میں اکثر مشرکین اور اہلِ کتاب کو اکٹھے ہی خطاب کیا گیا ہے۔
    مَا يَوَدُّ الَّذِيْنَ كَفَرُوْا مِنْ اَھْلِ الْكِتٰبِ وَلَا الْمُشْرِكِيْنَ اَنْ يُّنَزَّلَ عَلَيْكُمْ مِّنْ خَيْرٍ مِّنْ رَّبِّكُمْ ۭ وَاللّٰهُ يَخْتَصُّ بِرَحْمَتِهٖ مَنْ يَّشَاۗءُ ۭوَاللّٰهُ ذُو الْفَضْلِ الْعَظِيْمِ
    یہ لوگ جنہوں نے دعوتِ حق کو قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے ، خواہ اہل کتاب میں سے ہوں یا مشرک ہوں ، ہرگز یہ پسند نہیں کرتے کہ تمہارے رب کی طرف سے تم پر کوئی بھلائی نازل ہو ، مگر اللہ جس کو چاہتا ہے ، اپنی رحمت کے لیے چن لیتا ہے اور وہ بڑا فضل فرمانے والا ہے ۔ (البقرۃ 105)

    اس کی ایک عمدہ مثال سورۃ البینہ ہے جہاں دو ایسے مقامات ہیں۔
    لَمْ يَكُنِ الَّذِيْنَ كَفَرُوْا مِنْ اَهْلِ الْكِتٰبِ وَالْمُشْرِكِيْنَ مُنْفَكِّيْنَ حَتّٰى تَاْتِيَهُمُ الْبَيِّنَةُ
    اہلِ کتاب اور مشرکین میں سے جو لوگ کافر تھے (اپنے کفر سے ) باز آنے والے نہ تھے جب تک کہ ان کے پاس البینۃ (دلیلِ روشن ، کھلی نشانی) نہ آ جائے۔(1)

    اِنَّ الَّذِيْنَ كَفَرُوْا مِنْ اَهْلِ الْكِتٰبِ وَالْمُشْرِكِيْنَ فِيْ نَارِ جَهَنَّمَ خٰلِدِيْنَ فِيْهَا ۭ اُولٰۗىِٕكَ هُمْ شَرُّ الْبَرِيَّةِ
    اہلِ کتاب اور مشرکین میں سے جن لوگوں نے کفر کیا ہے وہ یقینا جہنّم کی آگ میں جائیں گے اور ہمیشہ اس میں رہیں گے ،یہ لوگ بد ترین خلائق ہیں۔(6)

    پھر سورۃ ال عمران میں اللہ تعالی اہلِ کتاب کے راست لوگوں کی خود تعریف کرتے ہیں۔

    لَيْسُوْا سَوَاۗءً ۭ مِنْ اَھْلِ الْكِتٰبِ اُمَّةٌ قَاۗىِٕمَةٌ يَّتْلُوْنَ اٰيٰتِ اللّٰهِ اٰنَاۗءَ الَّيْلِ وَھُمْ يَسْجُدُوْنَ۔ يُؤْمِنُوْنَ بِاللّٰهِ وَالْيَوْمِ الْاٰخِرِ وَيَاْمُرُوْنَ بِالْمَعْرُوْفِ وَيَنْهَوْنَ عَنِ الْمُنْكَرِ وَيُسَارِعُوْنَ فِي الْخَيْرٰتِ ۭوَاُولٰۗىِٕكَ مِنَ الصّٰلِحِيْنَ۔ وَمَا يَفْعَلُوْا مِنْ خَيْرٍ فَلَنْ يُّكْفَرُوْهُ ۭوَاللّٰهُ عَلِيْمٌۢ بِالْمُتَّقِيْن۔
    مگر سارے اہلِ کتاب یکساں نہیں ہیں۔ ان میں کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو راہ راست پر قائم ہیں ، راتوں کو اللہ کی آیات پڑھتے ہیں اور اس کے آگے سجدہ ریز ہوتے ہیں۔ اللہ اور روزِ آخرت پر ایمان رکھتے ہیں، نیکی کا حکم دیتے ہیں ، برائیوں سے روکتے ہیں اور بھلائی کے کاموں میں سرگرم رہتے ہیں ۔یہ صالح لوگ ہیں۔ اور جو نیکی بھی یہ کریں گے اس کی ناقدری نہ کی جائے گی ، اللہ پرہیز گار لوگوں کو خوب جانتا ہے۔(115۔113)

    ان محدود ملاحظات کے بعد اہلِ کتاب کو مشرکین جیسا کافر قرار دیا جائے تو ذہن میں سوال ضرور پیدا ہوتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  20. عدنان عمر

    عدنان عمر محفلین

    مراسلے:
    1,303
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    کفار میں ایک تو غیر کتابی کافر ہیں، یعنی مشرکین، بت پرست، آتش پرست، دہریے وغیرہ۔
    دوسرے، کتابی کافر ہیں، یعنی یہودو نصاریٰ۔ یہودی اور عیسائی عورتوں سے نکاح کی مشروط اجازت ہے۔
    اب اہلِ کتاب کے معاملے میں یہ چھوٹ کیوں دی گئی ہے، اس کی کیا حکمت ہے، یہ علمائے کرام ہی بہتر بتاسکتے ہیں۔
    میں اس سوال کا جواب دینے سے قاصر ہوں۔
     
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر