آپ کی تنقیدی نظر کا منتظر۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

توصیف یوسف مغل نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 12, 2014

  1. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    غزل برائے اصلاح

    نگاہیں ملا کر نگاہیں چرانا
    ہے سیکھا کہاں سے ہمیں بھول جانا

    کہاں چل دیے ہو ہمیں چھوڑ کر تم
    ادا خوب پائی ہمیں یوں جلانا

    جو فرست ملے تو کبھی یاد کرنا
    ترا روٹھ جانا ہمارا منانا

    عجب تھا وہ لمحہ عجب داستاں ہے
    کبھی گیت گانا، وہ سننا، سنانا

    میں کیسے کہوں اور کس کو بتاؤں
    وہ چھپ چھپ کے ملنا بہانے بنانا

    وہ دن آج ہم کو بہت یاد آیا
    وہ پردے کے پیچھے ترا مسکرانا

    سرِ بزم دیکھا تمہارا اشارہ
    ہاں دانتوں کے نیچے وہ انگلی دبانا

    کبھی ہاتھ رکھ کر مرے جسم و جاں پر
    وہ بل کھاتی زلفوں کا سایہ دکھانا

    بہت مضطرب ہے مرا دل پیارے
    وہ گیسو سجانا، وہ سرمہ لگانا

    وہ لمحے نہ جانے کہاں کھو گئے ہیں
    تری راہ میں اپنی پلکیں بچھانا

    اے یوسفٌ سنو تم اسے جا بتانا
    جو ہم یاد آئیں تو پھر لوٹ آنا

    توصیف یوسف​
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏اکتوبر 14, 2014
  2. ابن رضا

    ابن رضا لائبریرین

    مراسلے:
    4,255
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    پہلا مصرع تو مشہور گانے کا ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  3. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    [QUOTEجناب ="ابن رضا, post: 1618710, member: 7789"]پہلا مصرع تو مشہور گانے کا ہے۔[/QUOTE]
    محترم جناب ابن رضا صاحب،
    ہو گا لیکن میں نے نہیں سنا چلیں میں وہ مصرع بدل دوں گا اور باقی آپ میری اصلاح کریں۔۔۔
     
  4. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اور بہت شکریہ جناب ابن رضا صاحب اور باقی غزل کے بارے میں کیا رائے ہے۔۔۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  5. ابن رضا

    ابن رضا لائبریرین

    مراسلے:
    4,255
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    میری رائے محفوظ ہے کہ میں تو خود ایک طفلِ مکتب ہوں بہتر ہے کہ اساتذہ کرام سے رجوع کیجیے
     
  6. جنید عطاری

    جنید عطاری محفلین

    مراسلے:
    33
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    کبھی ہاتھ رکھ کر مرے جسم و جاں پر
    ہاتھ سینے پر رکھنا تو سُنا ہے، جسم و جاں پر رکھنا عجیب ترین ہے۔ اچھی ایجاد ہے،
     
    • زبردست زبردست × 1
  7. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    چلیں جی دیکھتے ہیں اگر کسی استاذ محترم کی نظر پڑی تو...
     
  8. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اچھا آپ کے خیال میں جسم و جاں پر ہاتھ رکھنا ممنوع ہے کیا...........؟
     
  9. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    [QUOTEجناب ="ابن رضا, post: 1618710, member: 7789"]پہلا مصرع تو مشہور گانے کا ہے۔[/QUOTE]
    محترم جناب ابن رضا صاحب کیا میں یہی مصرع استعمال کر سکتا ہوں جو ایک گانے کا ہے کیونکہ کہ الفاظ تو کسی کی ملکیت نہیں ہوتے...
     
  10. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    10,195
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    الفاظ یقیناً کسی کی ملکیت نہیں ہوتے لیکن جب کوئی ان الفاظ کو ملا کر ایک جملہ بنالے تو وہ جملہ اس کی قانونی اور اخلاقی طور پر ملکیت ہوجاتا ہے اور ہم اس کے حوالےہی سے اس جملے کو استعمال کرنے کے پابند ہوجاتے ہیں۔

    اگر آپ اس مصرع کو استعمال کرنا ہی چاہتے ہیں تو انہیں کاماز کے اندر لکھیے تاکہ یہ اعلان ہوجائے کہ یہ مصرع آپ کا نہیں۔
    ’’نگاہیں ملاکر نگاہیں چرانا‘‘​
     
  11. توصیف یوسف مغل

    توصیف یوسف مغل محفلین

    مراسلے:
    413
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    جی بہت بہتر۔۔۔۔
     

اس صفحے کی تشہیر